BN

اشرف شریف



طالبان کی ہوشیاری اور دوحہ بیٹھک کی ناکامی


دوحہ میں افغان طالبان اور کابل حکومت کے نمائندوں کے درمیان مذاکرات ملتوی ہونے پر امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد بڑے مایوس ہوئے ہیں۔ اس مایوسی کی وجہ مذاکرات کا التوا نہیں بلکہ امریکہ کی ان کوششوں کی ناکامی ہے جو وہ کابل حکومت کو تنازع کا فریق بنانے کے لئے کر رہا ہے۔ افغان طالبان کی طرف سے کابل حکومت کی بجائے صرف امریکہ سے مذاکرات کی ضد امریکہ کے لئے آزمائش ہے۔ امریکی حکام اگر اشرف غنی حکومت کے بغیر طالبان سے انخلا کے معاملات طے کرتے ہیں تو تاریخی دستاویزات میں انہیں براہ راست ایک
پیر 22 اپریل 2019ء

عمران حکومت سے اتحادیوں کی توقعات

پیر 15 اپریل 2019ء
اشرف شریف
سوال اہم تھا‘ جواب اس سے بھی اہم آیاعمران خان اگر ریاستی اسٹیبلشمنٹ کو اتنا ہی عزیز تھے تو انہیں پندرہ سولہ نشستیں جتوا کر اتحادیوں کی بلیک میلنگ سے آزاد نہیں رکھا جا سکتا تھا۔جواب ایک سینئر صحافی کو ملا! ’’آپ اسی سے اندازہ کریں کہ عمران خان کو کامیاب کرانے کا الزام اگر درست ہوتا تو یہ پندرہ نشستیں بھی دلوائی جا سکتی تھیں‘‘۔ اس سوال کا تعلق عمران خان کے اتحادیوں مسلم لیگ ق ‘ایم کیو ایم اور گرینڈ ڈیمو کریٹک الائنس کے ساتھ تعلقات سے ہے۔ آج تک ملک میں کام تو ہوا نہیں۔ بس مسائل
مزید پڑھیے


مذاکرات کا نیا مرحلہ اور طالبان نمائندوں کی فہرست

پیر 08 اپریل 2019ء
اشرف شریف
امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد پاکستان آئے بظاہر انہوں نے طالبان کوسفری سہولیات دینے کے لئے پاکستان سے درخواست کی۔ امریکہ کا خیال ہے کہ پاکستان اگر طالبان کو امریکہ سے مذاکرات پر آمادہ کر سکتا ہے تو پھر طالبان کو افغان حکومت سے بات کرنے پر بھی رضا مند کر سکتا ہے۔ زلمے خلیل زاد پاکستان سے یہی بات کرنے آئے۔ ایک انگریزی معاصر کا کہنا ہے کہ اگلے چند روز میں شروع ہونے والے تازہ مذاکراتی مرحلے میں افغان حکومت کے نمائندے شرکت کریں گے۔ دوسری طرف طالبان ذرائع اس خبر کی تردید کر رہے ہیں۔
مزید پڑھیے


فاٹا اور ہمسائے میں جنگی کباڑخانہ

پیر 01 اپریل 2019ء
اشرف شریف
میں جس علاقے میں تھا وہ کبھی علاقہ غیر کہلاتا تھا۔ اب آئینی ترمیم کے بعد آپ اسے ’’اپنا علاقہ‘‘ کہہ سکتے ہیں۔افغانستان کی سرحد یہاں سے قریب تو نہیں مگر زیادہ دور بھی نہیں۔ یہاں ایسے کاروباری افراد رہتے ہیں جو افغانستان تجارت اور کاروبار کے سلسلے میں آتے جاتے رہتے ہیں۔ بظاہر سادہ سے لوگ‘ اردو بڑی مشکل سے سمجھتے ہیں۔ میں نے ایک نوعمر سے اس کی مصروفیات کا پوچھا تو وہ ہنسنے لگا۔ اس کے ساتھ بیٹھے ایک نوجوان نے ٹوٹے پھوٹے اردو الفاظ میں بتایا کہ یہ اردو نہیں سمجھتا۔ بعد میں دوران گفتگو وہ
مزید پڑھیے


افغانستان کی تازہ صورت حال اور ڈاکٹر عافیہ

پیر 25 مارچ 2019ء
اشرف شریف
امریکہ اور طالبان کے مذاکرات میں نتیجہ برآمد ہونے میں دیر کی کچھ وجوہات ہیں۔ بظاہر یہ مذاکرات کا سلسلہ طالبان اور امریکہ کے درمیان ہے مگر پس پردہ رہنے والے اتحادی بھی سرگرم ہیں۔ پھر یہ دائرہ آگے بڑھتا ہے اور اتحادی قوتیں ایک دوسرے پر سبقت اور بالادستی کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ مثال طور پر پر طالبان زلمے خلیل زاد کی بارہا درخواست کے باوجود اشرف غنی حکومت کے ساتھ بات کرنے پر رضا مند نہیں ہوئے۔ صدر اشرف غنی اور ان کے حامیوں کو یہ خدشہ پیدا ہوا کہ اس طرح نظر انداز کئے جانے
مزید پڑھیے




طالبان سے زچ امریکہ

پیر 18 مارچ 2019ء
اشرف شریف
امریکی وفد میں اس بار زلمے خلیل زاد جیسے گھاگ افغانی کے علاوہ جن تین نئے ارکان کو شامل کیا گیا ان کی شناخت بین الاقوامی میڈیا میں زیادہ نمایاں نہ ہو، اس بات کویقینی بنایا گیا۔ یہ لوگ جنگی تنازعات کے اختتامی مذاکرات سے متعلق کئی طرح کے کورسز کر چکے ہیں۔ امریکہ کی کئی یونیورسٹیاں اور دفاع سے متعلق ادارے ایسے کورسز کرواتے ہیں۔ امریکی ابھی تک یہی سمجھتے ہیں کہ ان کے مذاکرات کار دنیا میں سب سے بہتر ہیں اور قومی مفادات کا تحفظ کرنے میں کوئی ان سے برتر نہیں۔ دوحہ میں طالبان سے امریکی
مزید پڑھیے


حقوق یا بے لباسی

پیر 11 مارچ 2019ء
اشرف شریف
پڑھی لکھی خواتین ایسے نعرے لکھ کر سڑکوں پر آ جائیں تو معاشرے میں بحث شروع ہونا لازم ہے شاید ان مظاہروں کے فنانسرز کا مقصد یہی تھا کہ کالم لکھے جائیں، ٹاک شوز ہوں،خبریں شائع ہوں اور وہ مزید پیسے بنائیں۔ کتبے کیا تھے ناقابل تحریر اور ناقابل نقل مغلظات تھے۔ یہ خواتین آزادی مانگ رہی تھیں۔ لباس پہننے نہ پہننے کی آزادی، شوہر کے حقوق قبول نہ کرنے کی آزادی‘ رشتوں کی جگہ صرف مرد عورت کے تعلق پر زور۔پاکستان میں ایسے مظاہرے اور جلوس پہلے بھی نکلتے رہے ہیں مگر اس بار جس نے کتبے تحریر کئے
مزید پڑھیے


من کی آنکھیں رکھنے والے

اتوار 24 فروری 2019ء
اشرف شریف
تن کی آنکھیں رکھنے ولے حیران تھے کہ من کی آنکھیں اتنی اجلی‘ اتنی شفاف اور اتنے حوصلوں کی مالک بھی ہو سکتی ہیں؟ ہم نے تو نابینا افراد کو بس‘ ٹرین ‘ گلی کی نکڑ پر یا بازار میں ایک دوسرے کے کندھے پر ہاتھ رکھ کر بھیک مانگتے ہی دیکھا تھا۔ چند سکے ان کی جھولی میں ڈال کر اپنے انسان ہونے کا سرٹیفکیٹ لیتے رہے۔ ہمیں حضرت عبداللہ بن مختومؓ جیسے نابینا مگر صاحب علم صحابی رسولؐ کا حال معلوم ہے۔ ہم نصابی سطح پر ہیلن کیلر جیسی ادیبہ سے بھی واقف ہیں‘ ہم ہومر جیسے باکمال
مزید پڑھیے


پتنگ بازی جان کی بازی

منگل 12 فروری 2019ء
اشرف شریف
ہمیں نہیں معلوم کہ صاف و شفاف گھروں میں رہنے والے پتنگ باز جب بجلی کی تاروں کے ساتھ لٹکتی ہوئی ڈور کے بد رنگ ٹکڑے اور پتنگوں کی باقیات کو دیکھتے ہیں تو اپنے شوق کے متعلق وہ کچھ سوچنے پر مجبور ہوتے ہیں یا نہیں۔ ہمیں ان کیفیات کا ادراک بھی نہیں جو ٹرپنگ سے جلنے والی برقی اشیاء کے مالکوں پر گزرتی ہیں۔ میرا خیال نہیں بلکہ یہ حقیقت ہے کہ ہم پر گھر سے رزق کی تلاش میں نکلنے والے جوانوں کی گردنیں کٹی دیکھ کر بھی کوئی اثر نہیں ہوتا۔ اس بے حسی کو اہل
مزید پڑھیے


مُنا بیمار

پیر 04 فروری 2019ء
اشرف شریف
یہ بات بہت افسوسناک ہے کہ وہ بڑا سیاست دان نہیں بن سکا۔ معلوم ہوتا ہے کہ جس طرح افیون کھانے کی عادت نے کولرج کی قوت تحریر کو تیس برس کی عمر میں تباہ کرڈالا تھا اسی طرح ہمارے ممدوح جناب منا بیمار محلے میں چند شرپسندوں کے خلاف تین سال تک اتنا لڑے کہ اب بدن میں سکت نہیں۔ ہو سکتا ہے کسی دن موصوف اسمبلی نگر کے کوڑے دان پر پڑے دکھائی دیں۔ منا بنیادی طور پر ان پڑھ آدمی ہے لیکن جو کوئی اسے جاہل کہنے کی جسارت کرتا ہے وہ پھر اس کا بیری ہو
مزید پڑھیے