Common frontend top

اشرف شریف


آپ ان کا نوالہ ہیں


برادرم سردار مظہر خان لاشاری جانے مجھے کس قدر لائق سمجھ بیٹھے ہیں کہ وطن عزیز کی حالت زار پر تبادلہ خیال کرتے ہیں۔اجڑے باغوں کے پھر سے آباد ہونے کے بارے میں انہیں کیا تسلی دے سکتا ہوں‘ مدت ہوئی خود کو سیاسیات کا طالب علم لکھنا بند کر دیا ہے۔ ہاں ادب‘ کلاسک روایات‘ ماحولیات ‘ موسیقی اور تاریخ کے گوشے میں پناہ لئے ہوئے ہوں۔جو کرسکتا ہوں وہ اب اسی مورچے سے کر رہا ہوں۔ انہوں نے پوچھا سو عرض کئے دیتا ہوں۔ کوئی بیس سال پہلے جب کالم لکھنے کا موقع ملا تو میں نے
پیر 10 جون 2024ء مزید پڑھیے

’’کلیلہ و دمنہ‘‘

منگل 04 جون 2024ء
اشرف شریف
’’کلیلہ و دمنہ‘‘ میرے ہاتھ میں ہے۔پچھلے چار ہفتوں میں تھوڑا تھوڑا کر کے میں نے بڑی تختی کے ڈھائی سو صفحات پڑھے ہیں۔ہندوستان کی ہزاروں برس قدیم کلاسک حکایات میری دلچسپی کا محور ہیں۔مجھے علم ہے کہ انسان کو معصومیت‘ چالاکی ‘ حماقت‘ وفاداری اور دلیری کی تشریح جب کبھی درکار ہوئی حوالہ جانور ہی بنے۔ ڈاکٹر حنا جمشید نے جب ’’کلیلہ و دمنہ‘‘ کو آسان فہم بنانے کا کام شروع کیا تو یقینا ان کے پیش نظر یہ سوال اہم رہا ہو گا کہ آخر انسان اپنی کہانیوں کے کردار جانوروں کی صورت میں کیوں لاتا
مزید پڑھیے


مشعال ملک کی عالمی اداروں سے اپیل

پیر 27 مئی 2024ء
اشرف شریف
ویسے تو فلسطینیوں کی طرح کشمیری بھی ایک بڑی سی جیل میں قید ہیں لیکن کچھ کشمیری بہادر اس سے بھی سنگین حالت میں ہیں۔جن دنوں راولپنڈی میں تھا ،راجہ لطیف طاہر اور ڈاکٹر فاروق حیدر سے یاسین ملک کی بابت خبریں مل جایا کرتیں۔صدر میں ڈاکٹر فاروق حیدر کا ہسپتال کشمیری حریت پسندوں کی بابت خبروں کا اہم مرکز تھا۔یہیں سے مجھے یاسین ملک کو جاننے کا موقع ملا۔یاسین ملک نے اس امید پر مسلح سرگرمیاں ترک کی تھیں کہ بھارت اب مذاکرات پر آمادگی ظاہر کر رہا تھا ۔عالمی سطح پر بھارتی موقف ابھر رہا تھا کہ وہ
مزید پڑھیے


بلوچستان میں امن کا نیا سفر ۔۔۔۔۳

هفته 25 مئی 2024ء
اشرف شریف
بلوچستان میں ترقی و خوشحالی کی کلید صرف امن ہے۔امن کے لئے سکیورٹی فورسز اپنا کردار ادا کر رہی ہیں۔بد امنی پھیلانے والوں کو بہت سے پوشیدہ ہاتھوں کی مدد حاصل ہے۔یہ ہاتھ سادہ لوح بلوچ نوجوانوں کو بہکا رہے ہیں۔یہ چاہتے ہیں کہ بلوچستان میں امن قائم نہ ہو،بلوچستان کے وسائل سے اس کے لوگ فائدہ نہ اٹھا سکیں اور اس صورتحال کا ذمہ دار ریاست پاکستان کو ٹھہرا دیا جائے۔ بلوچستان کے لوگوں کو امن میسر ہو تو وہ بہت سے منصوبوں سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔چین پاکستان اقتصادی راہداری (CPEC) بلوچستان کے لوگوں کے لیے مواقع کی نئی
مزید پڑھیے


بلوچستان میں امن کا نیا سفر ……(2)

جمعرات 23 مئی 2024ء
اشرف شریف
معاشی محرومیوں سے نجات کے مواقع بلوچستان میں موجود ہیں۔تمام وسائل کے باوجود صوبہ ترقی نہیں کر پا رہا ۔سب سے بڑی رکاوٹ خوف اور دہشت پھیلانے والی تنظیمیں ہیں۔یہ تنظیمیں عام بلوچ نوجوانوں کو محرومیوں کی کہانیاں سناتی ہیں، اپنے وسائل لٹنے کے قصے سناتی ہیں، سکیورٹی اداروں کو ولن بنا کر پیش کرتی ہیں اور یوں ایسا ماحول پیدا کرتی ہیں کہ سرمایہ کار نئی ٹیکنالوجی کے ساتھ ان علاقوں کا رخ نہ کرے۔ جو لوگ اس صورتحال کو قومی سطح پر رکھ کر دیکھتے اور بین الاقوامی سیاست کو سمجھ رہے ہیں وہ ان کے جھانسے میں
مزید پڑھیے



بلوچستان میں امن کا نیا سفر

بدھ 22 مئی 2024ء
اشرف شریف
بقا بلوچ کی ایک نظم ہے، ماں۔ وہ کون ہے جو اداس راتوں کی چاندنی ہیں کئی دعائیں لبوں پہ لے کر ملول ہو کر بھلا کے ساری تھکان دن کی یہ سوچتی ہے کہ میں نہ جانے ہزار میلوں پرے جو بیٹھا ہوں کس طرح ہوں وہ کون ہے جو اداس راتوں کے رت جگے میں دعاؤں کی مشعلیں جلانے کھڑی ہوئی ہے دعائیں جس کی مرے لئے ہیں میں ان دعاؤں کے زیر سایہ زمین سے آسمان کی جانب یوں محو پرواز ہوں کہ جیسے بشر گزیدہ خدا سے ملنے کو جا رہا ہو ں پھر ایک لمحے کو میرے
مزید پڑھیے


بٹے ہوئے پنجاب کی مشترکات پرمکالمہ

پیر 20 مئی 2024ء
اشرف شریف
روہنی سنگھ نئی دہلی میں رہتی ہیں ‘ بھارت کی نامور صحافی ہیں‘ ان کے بزرگ لالہ موسی اور راولپنڈی سے نقل مکانی کر کے تقسیم کے وقت نئی دہلی جا کر آباد ہوئے۔روہنی سنگھ ڈی ڈبلو جرمنی،دی وائر اردو،ٹی ایف ٹی پاکستان اور انڈین ایکسپریس سمیت متعدد اداروں سے وابستہ رہی ہیں۔کبھی کبھار نائنٹی ٹو نیوز میں بھی ان کا کالم شائع ہوتا ہے۔ ہفتہ کے روز ان سے بات ہو رہی تھی۔ وہ بتا رہی تھیں کہ کئی برس قبل وہ ننکانہ صاحب ‘ حسن ابدال اور دوسرے مقدس مقامات کی یاترا کے لئے پاکستان آئی تھیں‘ وہ
مزید پڑھیے


مقبوضہ کشمیر کے متعلق بھارتی حکمت عملی اور عالمی ادارے

هفته 18 مئی 2024ء
اشرف شریف
بھارت میں الیکشن ہیں اور ان الیکشنوں میں کشمیر کا معاملہ کئی پہلووں سے زیر بحث آ رہا ہے۔ وزیر اعظم مودی اور ان کی جماعت بی جے پی کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا اعزاز لے کر پورے بھارت میں اپنے جنونی ووٹروں سے داد طلب کر رہی ہے۔کشمیر میں اسے اپنی تباہ ہوتی ساکھ کی فکر نہیں یا وہ اس کے بدلے باقی علاقوں میں سیاسی فائدہ اٹھانے کی حکمت عملی پر کام کر رہی ہے۔اس صورتحال میں کشمیریوں کو اپنا مستقبل خطرے میں دکھائی دے رہا ہے۔ کشمیر کی صورتحال گزشتہ آٹھ دہائیوں کے دوران انسانی حقوق
مزید پڑھیے


بھیک رہ گئی ۔۔فقیر اٹھ گئے

منگل 14 مئی 2024ء
اشرف شریف
قدیم ہندوستان خوشحال تھا۔حالات جتنے بھی پریشان کن رہے، یہاں کے باشندے، خاص طور پر پنجاب کے زراعت پیشہ لوگ اپنا رزق زمین سے اگا ہی لیتے۔ ہزاروں برس قبل بھیک کا تصور اس وقت سامنے آیا جب جین، ہندومت اور بدھ مت میں انسان کو داخلی پاکیزگی کی تعلیم کا ایک ذریعہ بھکشا رکھا گیا۔ میں جب پنجاب کے غیر مسلم فقیروں پر کچھ تفصیلات جمع کر رہا تھا تو معلوم ہوا کہ بھیک کی پہلی وجہ ناداری نہیں تھی بلکہ یہ روحانی مقصد سے رواج پائی۔ ایک قدیم پنجابی راجہ کی کہانی ہے، کوئی دو ہزار سال سے زیادہ
مزید پڑھیے


بھارتی کمپنیوں پر پابندیاں

پیر 13 مئی 2024ء
اشرف شریف
امریکہ نے چند روز قبل کو ایک درجن سے زائد کمپنیوں پر پابندیاں عائد کر دی ہیں، ان میں سے تین بھارتی کمپنیاں بھی شامل ہیں۔ امریکی محکمہ خزانہ کے مطابق صحارا تھنڈر اہم فرنٹ کمپنی ہے جو ان سرگرمیوں کو بروئے کار لانے کے لیے کام کرتی ہے۔ صحارا تھنڈر کی مدد کرنے والی تین بھارتی کمپنیاں زین شپنگ، پورٹ انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ اور سی آرٹ شپ مینجمنٹ (OPC) پرائیویٹ لمیٹڈ ہیں۔ امریکہ کے انڈر سکریٹری برائے خزانہ، دہشت گردی اور مالیاتی انٹیلی جنس، برائن ای نیلسن نے کہا ہے کہ امریکہ اپنے برطانوی اور کینیڈین شراکت
مزید پڑھیے








اہم خبریں