BN

اشرف شریف


اسلامیہ کالج سول لائنز میں دفن تاریخ……(2)


چند کور بڑی دلیر خاتون تھی۔ اس نے شاہی خواتین کی طرح پردہ نہیںکیا اور سکھ سرداروں جیسی پگڑی پہن لی۔ وہ فوجی دستوں کا معائنہ کرتی۔ یہ جملہ اسی نے کہا تھا کہ ’’میں وہ کچھ کیوں نہیں کر سکتی جو ملکہ وکٹوریہ انگلستان میں کر سکتی ہے‘‘۔ چند کور کو امید تھی کہ اس کے مرنے والے انیس سالہ بیٹے نونہال سنگھ کی حاملہ بیوی صاحب کور لاہور کے تخت کو نیا وارث دے گی۔ جولائی 1841ء میں صاحب کور نے مردہ بچے کو جنم دیا ‘اس سے چند کور کی امیدیں دم توڑ گئیں۔ کہا جاتا ہے
پیر 29 مارچ 2021ء

اسلامیہ کالج سول لائنز میں دفن تاریخ

هفته 27 مارچ 2021ء
اشرف شریف
کئی بار زندگی بڑا حیران کردیتی ہے۔ اسلامیہ کالج سول لائنز کی لائبریری کے دائیں ہاتھ ایک خستہ حال عمارت ہوتی تھی۔ اس کی چھت دیکھ کر ہم قیاس کیا کرتے کہ کبھی چھوٹا سا مندر ہو گا۔البتہ عمارت کے تینوں گنبد اور محرابیں پنجاب کے کھلے تعمیراتی ذوق کا عکس ہیں۔ عمارت کے احاطے میں ایک تناور درخت تھا۔ بھری دوپہر میں بھی یہاں چھائوں ہلکی سی شام کئے رکھتی‘گنبد والے ایک ملحقہ کمرے میں مالی اور بیلدار اپنے کھرپے‘ گھاس کاٹنے والی تلواریں‘کسیاں اور بیج وغیرہ رکھتے۔ نسبتاً بڑا کمرہ جو دس ضرب دس فٹ کا ہو گا
مزید پڑھیے


پیپلز پارٹی اور متبادل اپوزیشن اتحاد

بدھ 24 مارچ 2021ء
اشرف شریف
مریم نواز اور ان کے والد بزرگوار نے اگرقومی و بین الاقوامی قانون‘ جمہوری روایات اور آئینی ساخت کو کسی استاد سے پڑھا اور سمجھا ہوتا تو انہیں اندازہ ہوتا کہ سیاست میں شخصیات کو چیلنج کیا جاتا ہے ریاست کو نہیں۔ بدقسمتی سے مریم نواز کا سیاسی ٹیلنٹ ضائع ہونے کا خدشہ پیدا ہو رہا ہے۔ قصور میاں نوازشریف کا ہے جنہوں نے بر وقت اپنے سیاسی جانشین کا فیصلہ نہ کیا۔ وہ پہلے چھوٹے بھائی شہباز شریف کو تیار کرتے رہے۔ بچے بڑے ہوئے تو بیگم کلثوم نواز نے اپنی اولاد کو آگے لانے پر اصرار کیا۔ میاںصاحب
مزید پڑھیے


’’حیات اقبال‘‘

پیر 22 مارچ 2021ء
اشرف شریف
اقبال افغانستان گئے۔ وہاں عبدالمجید اتاشی کے ساتھ مذاق کا سلسلہ رہتا۔ ایک روز عبدالمجید اتاشی نے کہا!ڈاکٹر صاحب کیا اچھا ہو کہ آپ بھی انگلستان آتے ہوئے یادگار کے طور پر بیویاں لانے والوں کی طرح افغانستان سے جاتے وقت افغان خاتون سے شادی کر کے لے جائیں۔ اقبال نے پوچھا کہ یہ خاتون مجھ سے کیا برتائو کرے گی۔ مجید نے کہا کہ اچھا برتائو کرے گی‘ ہاں منہ نہار جگا کر حکم دیا کرے گی’’او ڈاکٹر او ڈاکٹر برخیز برائے من چائے تیار کن‘‘ او ڈاکٹر اٹھو فوراً میرے لئے چائے تیار کرو۔ اقبال نے ہنستے ہوئے
مزید پڑھیے


خاک میں اترا سبزہ

هفته 20 مارچ 2021ء
اشرف شریف
تقریباً سبھی دوست پودوں پھولوں سے میرے عشق کو جانتے ہیں اس لئے شجر کاری کے لئے مشورہ لیتے ہیں‘ملک سلمان اور شہباز کے ساتھ ناشتہ رینالہ خورد میں تعینات سول جج مجیب الرحمن کے ہاں کیا‘نوتعمیر رہائشی کالونی میں شجر کاری کی بہت گنجائش ہے۔میں نے بتایا کہ کس جگہ کون سے پودے لگائے جائیں، مجیب الرحمن ایک جوگنگ ٹریک اور اس کے ساتھ پھول لگانے کی بابت بتا رہے تھے ۔میں نے کہا کہ بجلی کی تاروں کے نیچے آنے والی دھریکوں کو ختم نہ کریں دوسری جگہ لگا دیں۔ واپسی پر گاڑی رائے ونڈ مانگا روڈ پر
مزید پڑھیے



آخری میدان کہاں لگے گا

بدھ 17 مارچ 2021ء
اشرف شریف
سامنے کا منظر یہ ہے کہ حکومت الیکشن کمیشن پر عدم اعتماد ظاہر کر رہی ہے۔ الیکشن کمیشن کہہ رہا ہے کہ حکومتی عہدیداروں‘ سکیورٹی اداروں اور سیاسی نمائندوں نے ڈسکہ الیکشن کے دوران ضابطہ اخلاق کی خلاف وزی کی۔ ایک جھگڑا یہ ہے کہ مریم نواز کی دھمکیوں کے زیر اثر لیگی کارکن شہباز گل پر حملہ آور ہوئے اور پھر شہباز گل نے پریس کانفرنس میں مریم نواز کو کھری کھری سنائیں۔ تیسرا منظر یہ ہے کہ چیئرمین سینٹ کے الیکشن پر اپوزیشن کا ردعمل تقسیم ہو چکا ہے۔ پیپلزپارٹی نے یوسف رضا گیلانی کو منتخب کرانے کے لیے
مزید پڑھیے


کچھ خطوط مراد سعید کے نام

پیر 15 مارچ 2021ء
اشرف شریف
ڈاکیا ، وہ کردار جس پر نظمیں لکھی گئیں،ڈاک بنگلہ ،جسے فلموں میں ایک شاعرانہ مزاج بابو کا ٹھکانہ دکھایا جاتا، گانا ، چٹھی ذرا سیاں جی کے نام لکھ دے ۔یہ سب ایک دوستانہ اور ناسٹلجیک احساس دلاتے ہیں ۔اب زمانہ بدل گیا ، ڈاک کا محکمہ اور اس کے بابو بھی۔ایک مدت تک تباہ حالی رہی اب پاکستان پوسٹ کا احیاء ہوا ہے لیکن بگڑے معاملات مزید توجہ چاہتے ہیں۔اس میں نجی کورئیر کے معاملات بھی شامل ہیں جن کی بابت وزارت مواصلات شکایات کا جائزہ لیتی ہے۔ اس سے پہلے کہ میں اپنا قصہ گوش گزار کروں
مزید پڑھیے


ووٹ ضائع کرنے والوں کا انتقام

هفته 13 مارچ 2021ء
اشرف شریف
کسی نے کہا تھا جمہوریت بہترین انتقام ہے‘ دیکھ اب رہے ہیں کہ جمہوریت ہم سے کیسے انتقام لے رہی ہے۔چئیر مین و ڈپٹی چیئرمین سینٹ کا انتخاب ہو چکا ۔صادق سنجرانی کو مبارک، ہارنے والوں کے لئے مشورہ کہ آئندہ اپنے ہی لوگوں کو ووٹ ضائع کرنے کا طریقہ نہ بتائیں ۔ رات شاہد خاقان عباسی مرکزی جمعیت اہلحدیث کے حافظ عبدالکریم کے ساتھ پریس کانفرنس میں فرما رہے تھے کہ کتنی بدنصیبی ہے کہ ووٹ لینے کے لئے دبائو ڈالا جا رہا ہے۔ حافظ صاحب نے اپنی باری آنے پر مختصر طور پر بتایا کہ کسی نے رابطہ
مزید پڑھیے


پنجاب کی جمہوری روایات اور چودھری برادران

بدھ 10 مارچ 2021ء
اشرف شریف
بلاول بھٹو زرداری پنجاب میں اپنی سات نشستوں کے ساتھ حکومت کا تختہ الٹنے آئے ہیں۔ ان کی اتالیق کہا کرتی ہیں جمہوریت ڈیمانڈ کا نام ہے۔ ایک زعم ہے شاید جو حفیظ شیخ کے مقابل یوسف رضا گیلانی کی جیت نے پیدا کر دیا ہے۔ سوچا جارہا ہے کہ تحریک انصاف اپنے کارکنوں کی حمایت کھو بیٹھی‘ اتحادی ناراض ہیں‘ اپنے اراکین اسمبلی ناخوش ہیں‘ اس لیے تبدیلی لائی جا سکتی ہے۔ کوئی چاہے توسینٹ اپ سیٹ کا کریڈٹ آصف زرداری یا مریم نواز کو دے سکتا ہے۔ ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں۔ ہمیں اس سے غرض نہیں
مزید پڑھیے


آبلوں پر بھی حنا باندھتے ہیں

پیر 08 مارچ 2021ء
اشرف شریف
اہل تدبیر کی درماندگیاں آبلوں پر بھی حنا باندھتے ہیں ایک رویہ ہے جو مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے الگ الگ شکل میں اختیار کر رکھا ہے۔ پیپلز پارٹی سب کے لئے قابل قبول ہونے کا تاثر دیتی ہے‘مکالمے‘ آئین کی بالادستی ‘ پارلیمنٹ کے احترام اور جمہوری روایات کی پابندی کی بات کرتی ہے‘ پارٹی میں ابھی ایسے دانشور سیاسی رہنما موجود ہیں جو حالات کا فلسفیانہ تجزیہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ جو پارٹی کبھی دانشوروں سے بھری تھی اب وہاں اعتزاز احسن‘ تاج حیدر‘ واجد شمس الحسن ،شیری رحمان‘ فرحت اللہ بابر ‘ قمر الزمان کائرہ
مزید پڑھیے








اہم خبریں