BN

اشرف شریف


ٹڈی دل پر بات کیوں نہیں کرتے


ہمارا مسئلہ یہی ہے کہ ہم بہت جلد کسی کی باتوں میں آ جاتے ہیں‘ اپنا وقت بے کار میں ضائع کرتے ہیں۔ یہی دیکھ لیں ان دنوں گندم اور چنے کی فصل پر ٹڈی دل کا حملہ ہوا۔ حرام ہے جو کسی کو توفیق ہوئی ہو کہ اس معاملے پر لکھے!۔ مستنصر حسین تارڑ صاحب کہتے ہیں:’’لکھنے کا حق اسے ہے جسے اپنے اردگرد کے ماحول کا علم ہو‘ جسے یہاں تک معلوم ہو کہ اس کے علاقے میں پانی کے جوہڑ میں مینڈک کی کون کون سی قسم پائی جاتی ہے‘‘۔ افسوس ہم لکھنے والوں کو یہ علم
پیر 09 مارچ 2020ء

خواتین حقوق۔صنفی نہیں طبقاتی معاملہ

هفته 07 مارچ 2020ء
اشرف شریف
سادہ زمانوں میں ایسے لوگ مل جاتے جنہیں لڑکے بالے چھیڑتے اور جواب میں گالیاں لیتے۔ ایسی عورتیں بھی دکھائی دے جاتیں جنہیں لوگ تنگ کرتے اور جواب میں ننگی گالیاں کھاتے۔ الیکٹرانک میڈیا آج ایسے لوگوں کو ڈھونڈ کر لے آتا ہے۔ ان کو دانشور بنا کر شو میں بٹھاتا ہے اور پھر ان کی دکھتی رگ کو چھیڑ دیتا ہے۔ دیوانے ایک دوسرے کو گالیاں دیتے ہیں۔ پتھر مارتے ہیں۔ ان کے ویڈیو سوشل میڈیا پر مقبولیت پاتے ہیں۔ غیر معروف اینکر راتوں رات معروف ہو جاتا ہے‘ تیسرے درجے کا چینل صف اول میں آ جاتا ہے‘
مزید پڑھیے


اثاثے

پیر 02 مارچ 2020ء
اشرف شریف
افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد ہماری توقعات سے کہیں بڑھ کر معاملہ شناس نکلے۔ برادرم شاہد خان نے مترجم کے فرائض ادا نہ کئے ہوتے تو ہم پشتو میں ان کے جوابات کا مطلب سمجھ نہ پاتے۔ ذبیح اللہ مجاہد امن معاہدے کے سلسلے میں خاصے مصروف تھے بعد میں لیکن ارشاد احمد عارف صاحب اور اسد اللہ کے شو ’’کراس ٹاک ‘‘میں بھی فون پر بات کرتے رہے ان سے جو سوال ہوئے ان کے جواب میں بہت کچھ کہا لیکن دو باتیں خاص طور پر یاد رکھنے کے لائق ہیں۔ پہلی بات یہ کہ اگر امریکہ
مزید پڑھیے


پاکستان‘امن معاہدے کا دلہا

هفته 29 فروری 2020ء
اشرف شریف
بدامنی سے عبارت افغان تاریخ میں آج امن کا باب لکھا جا رہا ہے۔اس معاہدے کی روشنائی میں کئی لاکھ افراد کا خون شامل ہے‘ یہ جس کاغذ پر لکھا جا رہا ہے وہ جانے کتنے بے گناہوں کی کھال سے بنا ہے۔قطر کے دارالحکومت دوحا میں طالبان اور امریکہ کے مابین تاریخی امن معاہدہ اس بات کی دلیل ہے کہ جنگ مسئلے کا حل نہیں ہوتی۔ مسئلے کا حل تلاش کرنے کے لئے جنگ بند کرنا پڑتی ہے۔فریقین نے اپنے اپنے دوستوں کو معاہدے کی تقریب میں مدعو کیا ہے۔پاکستان ‘ترکی‘ سعودی عرب ‘ ایران ‘ متحدہ عرب امارات‘
مزید پڑھیے


آئین کو سماج کا معاہدہ سمجھنے والے

پیر 24 فروری 2020ء
اشرف شریف
ذرائع ابلاغ کے ذریعے بطور قوم ہم دو طرح کے آئینی ماہرین سے مرعوب رہے ہیں۔ ایک وہ جو اے کے بروہی اور شریف الدین پیرزادہ کہلائے، فوجی آمروں کے اقدامات کو تحفظ دینے والے، آئین کی شقوں میں سے آمروں کے ہر فیصلے کی تائید تلاش کرنے کی صلاحیت سے مالا مال جو ثابت کر سکتے ہیں کہ سامنے بیٹھا کوا کالا نہیں سفید رنگ کا ہے۔ ایس ایم ظفر صاحب ان کی زندہ نشانی ہیں۔ دوسرے وہ لوگ جنہوں نے آئین کی جمہوری شناخت بحال رکھنے کیلئے زندگیاں وقف کر دیں۔ حفیظ پیرزادہ، اعتزاز احسن، رضا ربانی اور
مزید پڑھیے



مہنگائی ہم پر عاشق کیوں ہے؟

هفته 22 فروری 2020ء
اشرف شریف
جیسے چندہفتے قبل ہمارے ہاں آٹے کی کمی دیکھنے میں آئی‘قدیم روم میں اچانک روٹی کی قلت ہو گئی۔ شہنشاہ ڈائیکلیٹان نے پرائس سیلنگ جاری کر دی‘ اعلان کیا گیا کہ جس کسی نے روٹی کی مقررہ زیادہ سے زیادہ قیمت سے بڑھ کر نرخ وصول کئے اسے موت کی سزا دی جائے گی۔ درمیان کے عہد سے گزر کر ہم بیسیویں صدی میں آ جاتے ہیں۔1941ء میں پرل ہاربر پر حملہ ہوا‘ امریکہ نے جرمنی اورجاپان کے خلاف جنگ کا اعلان کر دیا۔ روز ویلٹ انتظامیہ نے زراعت‘ سٹیل اور تیل جیسی صنعتوں پر پرائس کنٹرول لگا دیا‘ اس
مزید پڑھیے


تائیوان نے اہداف سے زیادہ ٹیکس کیسے جمع کیا

پیر 17 فروری 2020ء
اشرف شریف
کام کی بات کی کوئی ایکسپائری ڈیٹ نہیں ہوتی۔1951ء میں تائیوان کی حکومت نے ٹیکس چوری روکنے کے لئے بعض اقدامات کئے۔ یہ تدابیر اس قدر موثر ثابت ہوئیں کہ اس بار گزشتہ سال کی نسبت تین گنا زیادہ ٹیکس جمع ہوا۔ اس سے پہلے کہ میں ٹیکس چوری کے انسداد کا تائیوانی طریقہ بتائوں چند ایسے طریقوں کی بات کر لیتے ہیں جو ٹیکس چور استعمال کرتے ہیں۔ ٹیکس چوری کا ایک معروف طریقہ کار یہ ہے کہ اپنی آمدنی کم بتائی جائے اور پھر منی لانڈرنگ یا آف شور اکائونٹس کے ذریعے رقم چھپا لی جائے۔ حکومت اگر اس
مزید پڑھیے


گالیاں پلٹ کر آتی ہیں!

هفته 15 فروری 2020ء
اشرف شریف
گالی کیا ہے‘ ایک لفظِ سخت یا الفاظ کا وہ مرکب جو مخاطب کی قوت برداشت کو توڑتا ہے‘ اگر ہم اپنے بارے میں کسی کے لفظ سن کر تکلیف محسوس کریں‘ہمیں برا لگے‘ غصہ آئے‘ غلط لگے یا دکھ پہنچے تو یہ گالی ہو سکتی ہے۔ دنیا کے ہر ملک اور معاشرے میں برے رویے گالیوں کی شکل میں موجود ہیں۔ گالیاں کسی سماج کی منفی سوچ کا تجزیہ ہوتی ہیں۔ مغربی معاشروں میں عموماً ایسی گالیاں مقبول ہیں جو براہ راست مخاطب کی ذات یا کردار کو ہدف بناتی ہیں۔ مشرقی معاشروں خاص طور پر برصغیر میں گالیاں
مزید پڑھیے


مریم نواز پر والد کے قرضوں کا بوجھ

پیر 10 فروری 2020ء
اشرف شریف
علاج کیلئے لندن گئے نواز شریف نے شرط رکھی ہے کہ مریم تیمارداری کیلئے جب تک لندن نہیں آئیں گی وہ آپریشن نہیں کرائیں گے۔ ن لیگ بطور سیاسی جماعت پہلے ہی اخلاقی بحران کا شکار ہے۔ نواز شریف کی بیماری کا معاملہ متنازع ہونے سے یہ تاثر مزید مستحکم ہو رہا ہے کہ وہ کسی جان لیوا مرض کے شکار نہیں ، اس عمر میں معمول کے عوارض ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ مریم نواز کو اسلئے لندن بلایا جانا ضروری ہے کہ ان کے چاچو وطن واپس آ کر مسلم لیگ ن کی قیادت سنبھال سکیں۔ کچھ حلقے
مزید پڑھیے


قحط الرجال

هفته 08 فروری 2020ء
اشرف شریف
اس بار ہفتہ وار چھٹی پر مستنصر حسین تارڑ صاحب سے ملنا تھا۔ دو اور دوستوں سے ملاقات طے تھی مگر سب کی مصروفیات میں ایسی تبدیلی آئی کہ میرے پاس اپنے نرسری فارم پر جانے کے سوا کوئی کام نہ رہا۔ گھر آیا اور کئی برسوں بعد ایک نشست میں دو فلمیں دیکھیں۔ دونوں فلمیں پنجابی ہیں مگر ایک پاکستان اور دوسری بھارت میں نمائش کی گئی۔ چھومنتر 1958ء کو ریلیز ہوئی تھی اور اس میں نورجہاں‘ اسلم پرویز‘ظریف جیسے اداکار تھے۔نامور گلوکارہ زبیدہ خانم نے صرف اس فلم میں کام کیا۔ بعدازاں وہ گلوکاری تک محدود ہو گئیں۔
مزید پڑھیے