Common frontend top

اشرف شریف


لاہور کی دشمن داریاں……(2)


دشمن داریوں پر کالم شائع ہوا تو کئی مہربانوں نے نئی معلومات فراہم کیں۔لاہور میں معروف شخصیات کی آخری آرام گاہوں پر تحقیق کرنے والے نوجوان دوست مرزا عثمان بیگ نے بتایا کہ بلا ٹرکاں والا،ٹیپو ٹرکاں والا اور امیر بالاج کی قبریںمیانی صاحب قبرستان میں ہیں۔ طاہر پرنس اورمحمد شریف عرف جگا گجر بھی میانی صاحب میں مدفون ہیں۔میاں اخلاق گڈو اور ان کے والد میاں معراج دین عرف ماجھا سکھ کی قبریں داروغہ والا میں ان کے فیملی احاطے میں ہیں۔روحیل اصغر کے والد شیخ اصغر اور بھائی شکیل اصغر کی قبریں انٹر ووڈ فیکٹری کے سامنے
جمعرات 22 فروری 2024ء مزید پڑھیے

لاہور کی دشمن داریاں

بدھ 21 فروری 2024ء
اشرف شریف
تین روز قبل لاہور کے نوجوان بالاج کو شادی کی تقریب میں قتل کر دیا گیا۔گارڈز کی جوابی فائرنگ سے قاتل شوٹر موقع پر مر گیا۔بالاج ایک خوبصورت لہوریا تھا۔اس کا باپ اور دادا بھی دشمنوں کے ہاتھوں قتل ہوئے۔وارثان نے گوالمنڈی والے گوگی بٹ اور طیفی بٹ کے خلاف مقدمہ درج کرایا ہے۔دونوں خاندانوں میں عشروں سے چلی آ رہی دشمنی درجنوں افراد کی جان لے چکی ہے۔اللہ کرے یہ سلسلہ آگے نہ چلے۔بالاج کا ڈیرہ شاہ عالم چوک سے بانساں والے بازار کی طرف آتے ہوئے شروع والی نکر پر ہے ۔یہ پہلے بلا ٹرکاں والے کا ڈیرہ
مزید پڑھیے


مولانا کا الیکشن پر اعتراض

جمعه 16 فروری 2024ء
اشرف شریف
میرے محبوب مولانا کا غصہ ایک بار پھر زمین گرم کر رہا تھا۔گفتگو حیران کن تھی جس کی توقع تو مولانا سے کی جا سکتی ہے لیکن حالیہ انتخابات کے تناظر میں کچھ تجاوز ہونے کا احساس ہوا۔مولانا ہمیشہ ایسا کرتے آئے ہیں، اپنے مسلز دکھاتے ہیں اور حکومت میں اپنے مینڈیٹ سے زیادہ حصہ بٹور لیتے ہیں۔یہ درست ہے وہ گالی نہیں دیتے لیکن جلال دکھاتے ہیں ۔ایک ہوشیار سیاست دان اس بار عوام کی نبض نہ پڑھ سکا ،مولانا نے اسٹیبلشمنٹ کی زمین گرم کرنے کی کوشش کی ہے۔دیکھیں مولانا کو جواب کیا ملتا ہے؟ مولانا فضل الرحمٰن
مزید پڑھیے


آزاد ارکان اگلے صدر کا انتخاب کریں گے

اتوار 11 فروری 2024ء
اشرف شریف
بچپن سے دیکھتے ہیں‘ کسی رسی کو طویل عرصہ دونوں طرف سے کھینچے رکھیں تو وہ ٹوٹ جاتی ہے۔مشرقی و مغربی پاکستان کے عوام ایک دوسرے سے محبت کرتے تھے لیکن جن کے ہاتھ میں رسی تھی وہ تنائو کم کرنے پر آمادہ نہ ہوئے۔ نتیجہ یہ کہ رسی دو حصوں میں بٹ گئی۔ ہم ایسے ہی عاقل ہیں۔ چھوٹی چھوٹی اغراض اور چند انچ کی انا کو قومی مفاد سے بڑا بنا بیٹھتے ہیں۔ یوں مذہبی مباحث ہوں‘ سماجی ترقی کا تصور ہو‘ معاشی بحالی کی خواہش ہو جمہوریت و سیاسی استحکام کی آرزو ہو یا پھر انتخابات کا
مزید پڑھیے


بنگلہ دیش میں بھارت مخالف تحریک

بدھ 24 جنوری 2024ء
اشرف شریف
بنگلہ دیش پر کالم عام طور پر دسمبر میں لکھے جاتے ہیں، یہ کالم نگاروں کا اس موضوع پر لکھنے کا سیزن ہوتا ہے۔ہم اس سانحہ کے ذمہ داروں کی نشاندہی کرتے اور انہیں برا بھلا کہتے ہیں۔سیاسی تعصبات ہوں تو اپنی پسندیدہ شخصیات کو ہر الزام سے بچا لیتے ہیں۔کل پنجاب یونیورسٹی سکول آف کمیونیکیشن سٹڈیز میں معمول کا لیکچر تھا۔ایک طالب علم نے قائد اعظم اور قیام پاکستان کے متعلق ان شکوک کا سوال اٹھایا جو کچھ لوگ جستجو کے شائق طلبا کے دماغ میں انڈیل دیتے ہیں۔قائد کی تعلیمی ڈگریوں ، مالی کامیابی اور برق رفتار
مزید پڑھیے



انتہا پسندی، عسکریت پسندی اور ہتھیاروں سے پاک سماج کا خواب

هفته 20 جنوری 2024ء
اشرف شریف
انتہا پسندی، عسکریت پسندی اور لوگوں سے اسلحہ واپس لینا جیسے موضوعات تب سے پیش نظر ہیں جب کوچہء لفظ و حرف میں قدم رکھا۔ ہوش سنبھالنے سے پہلے ضیا الحق کا دور ختم ہو گیا۔ہم نے جس قدر جائزہ لیا یہی پتہ چلا کہ ملک کی تاریخ سے یہ عہد نکالا جا سکتا تو آج پاکستان روشن ہوتااور فسادی نظریات سے پاک ہوتا۔بعد میں آنے والی عسکری و سول قیادت اسی دور کا بوجھ اتارتی رہی۔ پیٹر ٹی کولمین اور اینڈریا بارٹولی کے مطابق انتہا پسندی ایک پیچیدہ رجحان ہے، اس کی پیچیدگی کا جائزہ لینا اکثر مشکل
مزید پڑھیے


گورننس اصلاحات درکار

بدھ 17 جنوری 2024ء
اشرف شریف
پاکستان میں نہروں میں دودھ نہیں بہتا، حیرت یہ کہ ان نہروں میں اب پانی بھی نظر نہیں آتا۔دوسری طرف پچھلے کئی سال سے سیلاب آتا ہے، لاکھوں لوگ بے گھر ہوتے ہیں،فصلیں تباہ اور مویشی ہلاک ہوتے ہیں۔یہ پانی نہروں میں آجاتا تو کھیت سبز ہو جاتے۔ ایسا اس لئے نہیں ہوتا کہ گورننس ٹھیک نہیں۔لوگ کاروبار کرتے ہیں، لاکھوں روپے روز کماتے ہیں لیکن ٹیکس کا ریکارڈ مرتب نہیں کرنا چاہتے کیونکہ انہیں خدشہ ہے ایک بار ٹیکس ریکارڈ میں آ گئے تو سرکاری عمال پریشان کریں گے،پولیس تھانوں کی عمارات شاندار بن رہی ہیں، افسران کے
مزید پڑھیے


پاکستان کی سیاحتی مقبولیت

پیر 15 جنوری 2024ء
اشرف شریف
ورلڈ ٹورازم بیرومیٹر اقوام متحدہ کی عالمی سیاحتی تنظیم (UNWTO) کا ایک باضابطہ اشاعتی فورم ہے جو بین الاقوامی رجحانات، پائیدار صلاحیت اور عالمی سیاحت کے لیے رسائی کا جامع تجزیہ فراہم کرتا ہے۔یہ تنظیم ایک اچھی خبر دے رہی ہے کہ گزشتہ سال پاکستان میں سیاحت کی صنعت پھلی پھولی ہے۔ہم لوگ جو روز خبر سنتے ہیں کہ فلاں مارا گیا، فلاں نے روزگاری کے ہاتھوں خود کشی کر لی، ملک کو فلاں مصیبت نے گھیر لیا وغیرہ وغیرہ۔سیاحت میں فروغ کی خبر چھوٹی نہیں میرے لئے بڑی ہے۔میں جو اپنے غیر ملکی دوستوں کو لاہور کے تاریخی
مزید پڑھیے


سردی سے اک پرندہ دریچے میں مر گیا

جمعرات 04 جنوری 2024ء
اشرف شریف
عامر نصراللہ میرا کالج زمانے کا دوست ہے ،برسوں پہلے خاندان سمیت کینیڈا منتقل ہو گیا۔اب زیادہ تر ویڈیو کی صورت میں ایک دوسرے کو دیکھتے ہیں۔کل اس نے اپنے گھر کے سامنے سے گزرتی سڑک اور ارد گرد کے کھلے علاقے کی ویڈیو بھیجی۔برف نے سڑک کو ڈھانپ لیا تھا،یہ روئی جیسی برف نہیں تھی بلکہ ہوا چلنے سے ٹھوس بن چکی تھی۔عامر بتا رہا تھا کہ اس صورت میں اسے ضروری کام کے لئے گاڑی پر باہر نکلنا ہے،جبکہ ٹائر پھسلنے کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔اس کے بچے اس موسم سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔اس علاقے میں گھر
مزید پڑھیے


’’اورنگزیب خطوط کے آئینے میں‘‘

هفته 30 دسمبر 2023ء
اشرف شریف
بڑی مشکل سے لاہور اور پنجاب کی تاریخ سے دھیان ہٹا کر دوسرے موضوعات پر لکھتا ہوں‘اب موضوعات ہی کیا رہ گئے ہیں۔ کہنے کو کھیل پر بہترین لکھا جا سکتا ہے‘ قلم کے زوال پر بات ہو سکتی ہے۔ دوستوں کی محفلوں کی باتیں ہو سکتی ہیں‘ پودوں‘ پھولوں اور جانوروں پر لکھنا مشکل نہیں‘ ادبی موضوعات پر عرصہ ہوا بوجوہ لکھنا بند کیا تھا۔ اب دوست کہتے ہیں ادبی کالم ڈوب رہا ہے اسے بچائو‘ کیا کروں یہاں تو ہر شعبہ زندگی کی نبض ڈوب رہی ہے۔ خیر ان دنوں چونکہ تاریخی مواد ہر وقت زیر مطالعہ
مزید پڑھیے








اہم خبریں