BN

افتخار گیلانی


کون ہیں بھارت کے نئے وزیر خارجہ جے شنکر


بھارت کے موجودہ وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر سابق وزیر اعظم من موہن سنگھ کے چہیتے آفیسر تھے۔ آخر کیوں نہ ہوتے۔ بھارتی فارن آفس میں امریکہ ڈیسک کے سربراہ کے ہوتے ہوئے انہوں نے بھارت ۔امریکہ جوہری معاہدہ کو حتمی شکل دینے اور اسکو امریکی کانگریس سے منظوری دلوانے میں کلیدی رول ادا کیا تھا۔ انعام کے طور پر 2013ء میں من موہن سنگھ نے ان کا نام خارجہ سیکرٹری کے لئے تجویز کیا، جس کی کانگریس پارٹی کے اندر سے سخت مخالفت ہوئی۔ وزیر اعظم کو بالآخر سرخم کرکے سجاتا سنگھ کو خارجہ سیکرٹری بنانا پڑا۔ ایک طرح
منگل 11 جون 2019ء

امیت شاہ : کشمیر کیلئے امتحان کی گھڑی

بدھ 05 جون 2019ء
افتخار گیلانی
بطور وزیر داخلہ کشمیر کی صورت حال تو امیت شاہ کیلئے چیلنج ہوگی، مگر کشمیریوں کیلئے بھی ان سے نمٹنا ایک بڑے امتحان سے کم نہیں ہوگا۔ پاکستانی حکمرانوں اور افسروں کی کشمیری راہنمائوںکے ساتھ ملاقاتوںپر پابندی لگانے کے بعد مودی حکومت کی اگلی کوشش مسئلہ کشمیر کو دوطرفہ مذاکرات کے عمل سے خارج کروانے کی ہوگی۔ افواہیں گشت کررہی ہیں کہ جس طرح 1973ء کے شملہ سمجھوتہ میں آنجہانی وزیراعظم اندراگاندھی نے اس مسئلے کی بین الا قوامی نوعیت کو بھارت اور پاکستان کے درمیان دوطرفہ معاملے میں تبدیل کرواکے تاریخ میں اپنا نام درج کروایا تھا، اسی طرح
مزید پڑھیے


امیت شاہ : کشمیر کیلئے امتحان کی گھڑی

منگل 04 جون 2019ء
افتخار گیلانی
دہشت گردی کے الزامات میں ملوث پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو جب حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بھوپال سے انتخابی میدان میں اتارا، تو ایک ساتھی نے ازراہ مذاق لقمہ دیا کہ بھارت کیلئے ایک نیا وزیر داخلہ تیار ہو رہا ہے۔ وہ ایسے بھارت کی منظر کشی کر رہے تھے، جس میں اتر پردیش کے حالیہ وزیر اعلیٰ اجے سنگھ بشٹ یعنی یوگی آدتیہ ناتھ وزیر اعظم اور پرگیہ سنگھ ٹھاکر وزارت داخلہ کے تخت پر برا جمان ہونگے۔ مجھے یاد آیا، کہ محض چند برس قبل ہم نیوز رومز میں اسی طرح تفریح کے طور پر
مزید پڑھیے


بھارت کے انتخابی نتا ئج: کیسے مار لی مودی نے بازی

بدھ 29 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
معروف تجزیہ کار سعید نقوی کے مطابق موجودہ انتخابی نتائج نے بھارت کے چہرے سے نقلی سیکولرازم کا نقاب اتار دیا ہے ۔اس سیکولر ازم کی آڑ میں پچھلی سات دہائیوں سے مسلمانوں کے ساتھ جو کچھ کیا گیا، اس کی عکاسی 2005ء میں جسٹس راجندر سچر کمیٹی نے کی تھی۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک ڈیکلیرڈ اور دیانت دار ہندو اسٹیٹ ایک کھوکھلی سیکولر اسٹیٹ سے بدرجہا بہتر ہے۔ ان انتخابات میں تو سیکولر جماعتوں نے بھی مسلمانوں سے ووٹ مانگنے سے پرہیز کیا۔ اسکے باوجود ہندو ووٹروں نے ان کو کوئی پذیرائی نہیں بخشی۔اتر
مزید پڑھیے


بھارت کے انتخابی نتا ئج: کیسے مار لی مودی نے بازی

منگل 28 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
توقع کے عین مطابق بھارت میں ہندو قوم پرست بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اقتدار میں واپس آگئی ہے اور وزارت عظمیٰ کا تاج ایک بار پھر نریندر مودی کے سر پر بندھ چکا ہے۔ مگر جس طرح کا مینڈیٹ بی جے پی کو حاصل ہوا ہے، اسکی توقع کسی کو نہ تھی۔ امید تھی کہ اپوزیشن کانگریس کم از کم مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ جیسے صوبوں میں بہتر کارکردگی کا مظاہر ہ کرے گی، جہاں پچھلے سال کے آواخر میں ہوئے صوبائی اسمبلیوں کے انتخابات میں اس نے بی جے پی کو شکست دیکر اقتدار پر
مزید پڑھیے



ایک یہودی عالم سے بات چیت

منگل 21 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
مشرق وسطیٰ میں جہاں اس وقت امریکہ اور ایران کے مابین کشیدگی عروج پر ہے، وہیں فلسطین کے حوالے سے صدر ٹرمپ، یورپی یونین، ان کے عرب حلیف اور اسرائیل ایک فارمولہ کو حتمی شکل دینے میں مصروف ہیں، جس کو ’’ڈیل آف سنچری‘‘ کا نام دیا جا رہا ہے۔ چند ماہ قبل دہلی کے دورہ پر آئے ایک یہودی عالم ڈیوڈ روزن نے عندیہ دیا تھا کہ سابق امریکی صدر بارک اوبامہ جس خاکہ کو تیار کرنے میں ناکام ہو گئے تھے، ٹرمپ ، سعودی عرب و دیگر عرب ممالک کے تعاون سے فلسطین کے حتمی حل کے قریب
مزید پڑھیے


2019کے انتخابات: مسلمانوں کیلئے سبق

بدھ 15 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
آخر مسلمان بی جے پی کو ووٹ کیوں نہیں دیتے ہیں؟ سہارنپور کے مدرسہ مظاہر العلوم میں استاد اور جید عالم مولانا شاہد الحسینی کا کہنا ہے کہ فسادات یا عدم تحفظ کے احساس سے زیا دہ مسلمانوں کے خلاف نظریاتی یلغار سے وہ خوف زدہ ہیں۔ ’’ایسے حالات بنائے گئے ہیں، جہاں میڈیا حکومت کی شہ پر مسلمانوں اور ان کی شریعت کو عفریت بنا کر پیش کر رہا ہے۔پارلیمنٹ کے پچھلے اجلاس میں کسی بھی عالم یا فقہ سے متعلق ادارہ سے مشورہ کئے بغیر تین طلاق پر پابندی اور اسکو جرم کے زمرے میں ڈال کر
مزید پڑھیے


2019کے انتخابات: مسلمانوں کیلئے سبق

منگل 14 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
گو کہ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق بھارت کی 1.3بلین آبادی میں مسلمان تقریباً14فیصد ہیں اور ایک طرح سے 145پارلیمانی حلقوں میں امیدواروں کی قسمت کا فیصلہ کرسکتے ہیں، مگر حالیہ انتخابات میں کسی بھی سیاسی پارٹی نے ان کو اپنے حق میں لبھانے کیلئے کوئی تگ و دو نہیں کی۔بھارت میں اب انتخابی عمل آخری دور میں داخل ہوگیا ہے۔ مجھے یاد ہے کہ ماضی میں انتخابی مہم کے دوران ملک کی اعلیٰ سیاسی قیادت، مسلم راہنماوٗں کے دروازوں پر دستک دیکر ا ن کو اپنے حق میں لام بند کرنے کی کوشش کرتی تھی۔ نہ صرف سیکولر
مزید پڑھیے


مودی بنام مسعود اظہر

بدھ 08 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
پد مانابھن بعد میں فوج کے سربراہ بھی تھے۔ افسر نے فوراً ہی افغانی کو تفتیشی محکمہ کے سپرد کردیا۔ اگلے تین دن تک شدید ترین انٹر وگیشن کے باوجود سجاد افغانی یہی بیان دہراتا رہا۔ افسران کو بھی شاید اب یقین ہو گیا تھا کہ یہ فربہ مولوی ناحق ہی ان کے ہتھے چڑھ گیا ہے۔ مگر رہائی سے قبل اسکا بیک گراونڈ چیک کرنے کیلئے جب اس کو انٹروگیشن کے کمرے میں لایا گیا، تو ان کے بقول ایک گھنٹے کے اندر ہی اس نے پوری کہانی اگل دی۔ تاہم دسمبر 1999ء تک جب بھارتی فضائیہ کے اغواشدہ
مزید پڑھیے


مودی بنام مسعوداظہر

منگل 07 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
غالباً سال 1996ء میں حکومت جموں و کشمیر نے صحافیوں کو جموں کے نواح میں کوٹ بلوال جیل کا دورہ کرنے کی دعوت دی۔ سلاخوں کے پیچھے لنگڑاتے ہوئے ایک باریش شخص، جیل کی رہداریوں سے گذرتے ہوئے صحافیوں کی طرف ہاتھ ہلا کر ،بار بار اپنی طرف توجہ مرکوز کروانے کی کوشش کر کے کہہ رہا تھا ’’کہ میں بھی ایک صحافی ہوں۔‘‘ مگر شاید ہی کسی نے دھیان دیا۔ کیونکہ صحافیوں کا گروپ کسی مولوی نما صحافی پر وقت صرف کرنے کے بجائے حرکت الانصار کے کمانڈروں ،نصراللہ منصور لنگریال اور سجاد افغانی کو دیکھنے کیلئے بیتاب تھا۔
مزید پڑھیے