BN

اوریا مقبول جان


افغانستان میں طالبان حکومت اور پاکستان کا مذہبی عنصر


امریکہ کی افغانستان میں ذلت آمیز شکست کے بعد اب دوسری شکست ان سیکولر، لبرل، جمہوریت پرست تجزیہ نگاروں کی ہورہی ہے جو گزشتہ ایک سال سے یہ واویلا مچا رہے تھے کہ اگر امریکہ افغانستان سے چلا گیا تو وہاں ایک ایسی خانہ جنگی کا سماں ہوگا کہ تاریخ میں کسی نے نہ دیکھا ہو۔ مہاجرین کے قافلے پاکستان کا رخ کریں گے اور افغانستان میں خانہ جنگی کے نتیجے میںپاکستان میں دہشت گردی کو فروغ ملے گا۔ گزشتہ ماہ،6 جولائی 2021ء کو ٹیکنالوجی پرستوں کا ’’دیوتا‘‘ رات کی تاریکی میں اپنے سب سے محفوظ ٹھکانے ’’بگرام ایئرپورٹ‘‘ سے
جمعه 13  اگست 2021ء مزید پڑھیے

عمران اور اسٹیبلشمنٹ کی بنیادی غلط فہمی

جمعرات 12  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
وزیر اعظم عمران خان سے تقریباً تین سال بعد ملاقات ہوئی۔ یہ ٹھیک اتنا ہی عرصہ ہے جتنا انہیں اقتدار کی مسند پر سرفراز ہوئے ہو چکا ہے۔ ان سے آخری رابطہ بھی اگست کے دوسرے ہفتے میں ہوا جب وہ وزیر اعظم کا حلف اُٹھانے کی تیاریوں میں تھے، تو انہوں نے مجھے فون کر کے اسلام آباد آنے کو کہا تاکہ بیوروکریسی کے حوالے سے جو میرا تجربہ ہے، اس سے بساط بھر مشورہ دے سکوں، لیکن رات گئے، عون چوہدری کا فون آ گیا کہ خان صاحب مصروف ہو گئے ہیں، اس لئے وہ اب خود بتائیں
مزید پڑھیے


سپن بولدک: ایک استعارہ

اتوار 08  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
کوئٹہ سے قندھار کے راستے کے ٹھیک درمیان میں چمن کا شہر آتا ہے، جو ساڑھے سات ہزار فٹ بلند خوجک پہاڑ کے دامن میں واقع ہے۔ اسی پہاڑ کو کاٹ کر انگریز نے 1891ء میں ریلوے لائن کیلئے چار کلو میٹر طویل سُرنگ تعمیر کی۔ مشہور ناول ’’امرائو جان ادا‘‘ کے مصنّف مرزا ہادی رسوا اسی ریلوے لائن کی تعمیر پر ملازم تھے۔ خوجک کا پہاڑ دراصل ایک فصیل ہے جس پر انگریز نے اپنے زمانے میں پختہ مورچے تعمیر کئے تھے جو آج بھی موجود ہیں۔ خوجک کی چوٹی پر کھڑے ہو کر دیکھیں تو پاکستان کے چند
مزید پڑھیے


شیخ عمران حسین پاکستان میں

هفته 07  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
علامہ اقبالؒ کی شاعری قرآنِ حکیم کے بحرِ بیکراں سے موتی چُن کر ترتیب دی گئی ہے۔ یہ صرف اور صرف مالکِ کائنات کی خصوصی عطاء ہے،جو اقبالؒ کے نصیب میں آئی۔اقبالؒاس سے باخبر تھے اور اپنے اس الہامی علم سے اُمت کو بیدار اور خبردار بھی کرتے رہے۔ مولانا امین احسن اصلاحی جدید دَور کے ایک عظیم مفسرِ قرآن تھے۔ مرحوم نے ایک دفعہ ڈاکٹر اسرار احمد مرحوم سے کہا تھا کہ میری پوری زندگی قرآن و حدیث پڑھنے،سمجھنے اور اسی کے متعلق تحریر کرنے میں گزر گئی۔میں نے جب قرآنِ پاک کی تفسیر ’’تدبرِ قرآن‘‘ تحریر کی تو
مزید پڑھیے


وسیع البنیادی کے دن گزر گئے

جمعه 06  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
ہماری شامتِ اعمال کیوں آئے گی۔ بحیثیت قوم ہم سے ایسا کون سا بڑا جرم سرزد ہوا ہے جس کی سزا ہمارا مقدّر ہو چکی ہے۔ سیدالانبیاء ﷺ کی حدیث کا یہ ٹکڑا ’’سندھ کی خرابی ہند‘‘ سے جب بھی ذہن سے ٹکراتا ہے یا آنکھوں کے سامنے آتا ہے تو خوف کی ایک لہر پورے بدن اور روح میں دوڑ جاتی ہے۔ ہمارے اکثر علماء اس حدیث کی سند پر گفتگو کرتے ہوئے اسے کمزور اور ضعیف قرار دیتے ہیں، لیکن علامہ قرطبیؒ نے اپنی مشہور کتاب ’’التذکرہ باحوالِ موتیٰ و امورِ الآخرۃ‘ میں علامہ ابن جوزی ؒکی کتاب
مزید پڑھیے



وسیع البنیادی کے دن گزر گئے

جمعرات 05  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
کھرا اور کھوٹا الگ کر دیا جائے گا۔ چھانٹیوں کا موسم آنے والا ہے۔ حق و باطل کا آخری معرکہ اپنے ابتدائی مرحلے میں داخل ہونے کو ہے۔ ایسے میں صفوں میں کسی منافق، کمزور ایمان والے یا متزلزل یقین رکھنے والے کی کوئی گنجائش نہیں ہوتی۔ اللہ نے اس وقت ایسا ہی کیا جب غلبے کیلئے اصل معرکہ شروع ہوا، تو مسلمانوں کی صفوں کو خالص کر دیا۔ مسلمانوں سے میری مراد اُمتِ مسلمہ ہے جو سیدنا ابراہیم ؑ کے دن سے آج تک چلی آ رہی ہے اور جس کا نام اللہ نے ’’مسلم‘‘ رکھا ہے۔ سیدنا ابراہیم
مزید پڑھیے


اگر امریکہ یہاں رُک گیا

اتوار 01  اگست 2021ء
اوریا مقبول جان
ہر کوئی اپنی دُکان از سر نو سجا رہا ہے، اپنی پٹاری میں سے وہ سارے ہنر نکال کر کائونٹر پر رکھ رہا جو اس منڈی میں کام آتے تھے۔ چالیس سالوں کے دوران جہاں افغانستان کی وجہ سے پاکستان میں اور بہت کچھ ہوا وہاں بے شمار لوگوں کا ایک گروہ ایسا ضرور پیدا ہوا، جس نے افغان جہاد اور پھر افغانستان میں دہشت گردی کے خلاف جنگ کے دوران امریکہ اور عالمی طاقتوں کو شیشے میں اُتار کر کمانا سیکھا۔ جس دن پہلے سوویت فوجی نے افغانستان کی سرحد عبور کی، پاکستان میں سرمایہ کاری حاصل کرنے، عالمی
مزید پڑھیے


جنسی تشدد کے بڑے مجرم کی بے سرو پا دلیلیں

هفته 31 جولائی 2021ء
اوریا مقبول جان
خواتین پر جنسی تشدد کا ہماری جدید شہری زندگی سے گہرا تعلق ہے۔ اس جرم کی موجودہ شکل کا آغاز تقریباًڈیڑھ سو سال قبل ہوا۔ یہ وہ زمانہ تھا جب مغربی تہذیب قدیم عفت و حیا کے دبیز پردوں سے جسمانی نمائش کی انگڑائی لے کر باہر آ رہی تھی۔ اس سے قبل خواتین جنگوں کے دوران مردوں کی ہوسناکی اور خواہشات کا نشانہ بنتی تھیں۔ بہت ہی خوفناک مناظر ہوتے جب کوئی فاتح فوج کسی شہر میں داخل ہوتی۔ آج بھی ویسے ہی ہے۔ دوسری جنگ عظیم کے دوران مفتوحہ علاقوں سے پکڑی جانے والی بچیوں کو ’’راحت پہنچانے
مزید پڑھیے


مخلوط معاشرے کی زمین پر بوئی گئی زہریلی فصل

جمعه 30 جولائی 2021ء
اوریا مقبول جان
کون اس بات کا ماتم کر رہا ہے کہ جدید سیکولر لبرل اخلاقیات کی کوکھ سے جنم لینے والے معاشرے کی زد میں آ کر صرف مسلمانوں کا تہذیب و تمدن ہی تباہ ہوا ہے۔ یہ ماتم تو پوری انسانیت کا ہے جو اب ایک تماش بینوں کا ہجوم بن چکی ہے اور اس نے اس دُنیا کو ایک بہت بڑے سٹیڈیم میں تبدیل کر دیا ہے جس کے بیچوں بیچ عورت پُتلی تماشے کی طرح تماش بینوں کی ضرورت کے مطابق کرتب دِکھا رہی ہے۔ نسبتاً کم غلیظ اذہان کیلئے وہ صرف فیشن انڈسٹری کی ماڈل ہے جو اپنے
مزید پڑھیے


مخلوط معاشرے کی زمین پر بوئی گئی زہریلی فصل

جمعرات 29 جولائی 2021ء
اوریا مقبول جان
اہلِ سیاست گنگ ہیں، اہلِ دانش حیران ہیں، منبر و محراب چُپ ہیں، سناٹا ہے، کوئی بولنے کی جرأت نہیں کر رہا۔ اس لیے کہ سب شریکِ جرم ہیں۔ سب نے کانٹوں کی اس زہریلی فصل کے بونے، اس کی نگہداشت کرنے اور اسے پروان چڑھانے میں مقدور بھر حصہ ڈالا ہے۔ اب اِس فصل کے زہریلے کاٹنے حلق میں پھنس رہے ہیں، معاشرتی اور اخلاقی زوال کی بادِ سموم کے تھپیڑے ہمارے چہرے زخمی کر رہے ہیں تو سب عالمِ حیرت و خوف میں ہیں۔ ہماری شاہرائوں پر راہ چلتی عورتوں کی عصمتیں محفوظ نہیں ہیں۔ ہمارے چھوٹے چھوٹے
مزید پڑھیے








اہم خبریں