Common frontend top

ڈاکٹر احمد سلیم


آئی کیوب قمراور یادماضی!


پاکستان کا سیٹلائٹ مشن ’’ آئی کیوب قمر‘‘ خلا میں روانہ کر دیا گیا جسے پاکستان کے ’’ انسٹی ٹیوٹ آف سپیس ٹیکنالوجی ‘‘ ، جو کہ اسلام آباد میں قائم ایک پبلک یونیورسٹی ہے نے ’’ سپارکو‘‘ اور چین کی ’’ شنگہائی یونیورسٹی‘‘ کے تعاون سے تیار کیا ہے اور اسے چین کی نیشنل سپیس ایجنسی کے تعاون سے خلا میں بھیجا گیا ہے۔اس منصوبے میں مذکورہ یونیورسٹی کے سو کے قریب طلبہ نے اپنے اساتذہ کی نگرانی میں حصہ ڈالا ہے۔ پروگرام کے مطابق سیٹلائٹ پانچ دنوں میں چاند تک پہنچ جائے گا اور تین
پیر 06 مئی 2024ء مزید پڑھیے

ایرانی صدر کا دورہ پاکستان!

پیر 29 اپریل 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
نئی حکومت کے قیام کے بعد رواں برس کا اب تک کا سب سے بڑا سفارتی واقعہ بلاشبہ ایرانی صدر ’’سید ابراھیم رئیسی‘‘ کا تین روزہ سرکاری دورہ پاکستان ہے۔ فلسطین، مشرق وسطی کی صورتحال ، چندہفتے قبل ہونے والی پاک ایران سرحدی کشیدگی اور ایران اسرائیل تنازعہ جیسے واقعات اس دورے کی اہمیت میںمزید اضافہ کر دیتے ہیں۔ اپنے دورے کے دوران ایرانی صدر نے صدر پاکستان، وزیر اعظم پاکستان سمیت پاکستان کی سول اور ملٹری قیادت سے ملاقاتیںکی۔ وزیر اعظم پاکستان سے ملاقات کے بعد مشترکہ اعلامیہ میںکہا گیا کہ آئندہ پانچ برسوں میں پاک
مزید پڑھیے


’’ارتھ ڈے‘‘ اور ہماری زمین!

منگل 23 اپریل 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
فلسطین، یوکرائین ، برما، سوڈان ، یمن ، شام، کانگو سمیت اس وقت دنیا میں کم از کم 32مقامات پر مسلح جنگیں چل رہی ہیں۔ ان مسلح تنازعات میں ہر برس کم از کم اڑھائی لاکھ لوگ ہلاک ہو جاتے ہیں۔ ان کی وجہ بظاہر مذہب بتائی جائے یا نظریاتی اختلاف، اصل میں اس کے پردے میں یہ زمین کے کسی نہ کسی ٹکڑے اور قدرتی وسائل پر قبضہ کرنے کی سعی ہے۔ سوچنے اور سمجھنے کی ضرورت ہے کہ انسان زمین کے ٹکروں کے لیے تو جان لے بھی رہا ہے اور جان دے بھی رہا ہے لیکن
مزید پڑھیے


عالمی مالیاتی ادارہ اور ہماری معیشت

پیر 15 اپریل 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
گزشتہ کئی حکومتوں کی طرح موجودہ نئی قائم ہونے والی حکومت کے لیے بھی سب سے بڑا چیلنج ’’ معیشت ‘‘ ہے۔ وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب کے دوران اخباری رپوٹوں کے مطابق اس بات کا اعادہ کیا گیا ہے کہ سعودی عرب پاکستان میں پانچ بلین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔ دوسری جانب ایک اور رپوٹ کے مطابق عالمی مالیتی ادارے(IMF)کی جانب سے کہا گیا ہے کہ پاکستان کے ساتھ تین ارب ڈالر کے ’’ سٹینڈ بائی ایگریمنٹ‘‘ کے لیے بات چیت حتمی نتیجے پر پہنچنے والی ہے۔ ساتھ ہی انہو ں نے کچھ چیزوں کی نشاندہی
مزید پڑھیے


فلسطین: ماضی سے آج تک!

پیر 08 اپریل 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
فلسطین میں آج جو کچھ ہو رہا ہے وہ دراصل مسلمانوں، یہودیوں اور عیسائیوں کے مابین ہزاروں برس پرانا تنازعہ ہے۔ تینوں ابراھیمی مذاہب کے لیے مقدس ترین شہر یروشلم کی تاریخ چار پانچ ہزار برس پرانی ہے۔ ایک ہزار برس قبل مسیح میں حضرت دائود ؑ نے اس علاقے کو فتح کر کے یہاں اپنی حکومت قائم کی۔ ان کے بعد انکے سب سے چھوٹے بیٹے حضرت سلیمانؑ نے یہاں ایک عبادت گاہ تعمیر کی جسے پہلا ہیکل یا ’’ ہیکل سلیمانی‘‘ کہا جاتا ہے۔ تعمیر کے قریب قریب ساڑھے پانچ سو برس
مزید پڑھیے



مقامی حکومت کی اہمیت و ضرورت

پیر 01 اپریل 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
اگر کوئی آپ سے پوچھے کہ زندگی میں سب سے اہم کیا ہے ؟ دولت، آسائش، جمہوریت، آزدی سب ایک طرف، زندگی میں سب سے اہم سکون ہے۔ بلکہ ہم زندگی کی آسائشوں ، ذاتی ترقی سے لے کر اپنی پسند کی حکومت کے قیام تک ہر چیز کی جد و جہد کرتے ہی اس لیے ہیں کہ ہمیں سکون نصیب ہو، کیونکہ سکون کے بغیر امن آزادی بلکہ زندگی ہی بے مقصد رہ جاتی ہے۔ ہمارے پاکستان میں بسنے والی تقریباََ چوبیس کروڑ کی آبادی میں سے نناوے فیصد سے زیادہ ’’عام آدمی‘‘ ہیں۔ ان عام آدمیوں کی عام
مزید پڑھیے


پاک بھارت تجارت

منگل 26 مارچ 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
کوئی شک نہیں کہ تجارت ہمیشہ قریبی پڑوسیوں کے ساتھ زیادہ فائدہ مند ہوتی ہے۔ ہمارے قریب ترین پڑوسی جن کے ساتھ تجارت بظاہر ہماری عوام کو فائدہ دے سکتی ہے وہ ایرن اور بھارت ہیں۔ آج صرف بھارت ک بارے میںبات کرتے ہیں۔ حال ہی میں ہماری حکومت کی جانب سے یہ کہا گیا ہے کہ ہمارے تاجر نئی دہلی کے ساتھ تجارت چاہتے ہیں۔ لیکن کیا یہ سب واقعی اتنا سیدھا اور آسان ہے؟َ یہ ایک حقیقت ہے کہ پاک بھارت تجارت ہمیشہ سے ضرورت اور معیشت کے ساتھ ساتھ سیاست کے ساتھ بھی نتھی رہی ہے۔ اور
مزید پڑھیے


بھارتی شہریت کے سیاہ قانون پر عملدرآمد

پیر 18 مارچ 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
گزشتہ ہفتے بھارت کی مودی سرکار نے بھارت میں شہریت حاصل کرنے کے ترمیمی بل (CAA 2019) پر عمل درآمد کرنے کا اعلان کر دیاہے جس کے مطابق تین ممالک، پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے تعلق رکھنے والے ایسے افراد جو غیر قانونی طور پر ہی سہی ، 31 دسمبر 2014 سے قبل بھارت میں آباد ہوئے تھے اور انکا تعلق ہندو، سکھ، بدھ مت، جین، پارسی یا کرسچین مذہب سے ہے تو وہ بھارت کی شہریت حاصل کر سکتے ہیں۔ ویسے تو یہ قانون 2019 میں پاس ہوا تھا لیکن اس کے بعد بھارت میں ایک جانب اس
مزید پڑھیے


گزشتہ فروری اور گلوبل وارمنگ!

پیر 11 مارچ 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
گزشتہ دنوں دنیا کی تمام نیوز ایجنسیوں نے ایک خبر رپوٹ کی( جو ہمارے کچھ اخبارات کی زینت بھی بنی)۔ بظاہر یہ ایک بے معنی سی خبر تھی کہ اس سال فروری کا مہینہ ریکارڈ شدہ انسانی تاریخ کا گرم ترین فروری تھا۔ یہ ’’ گلوبل وارمنگ‘‘ کے اثرات ہیں۔ ویسے تو ہم کئی برسوں سے عالمی میڈیا کے ذریعے ’’ گلوبل وارمنگ‘‘ کا ذکر سنتے آرہے ہیںلیکن اس خبر میں ہمارے لیے کتنا بڑا خطرہ چھپا ہوا ہے نہ تو ہمارے پاس اس بارے میں سوچنے کا فہم ہے اور نہ وقت۔ اسی لیے نہ تو ہماری کسی سیاسی
مزید پڑھیے


رمضان کریم کی برکتیں اور خود احتسابی!

پیر 04 مارچ 2024ء
ڈاکٹر احمد سلیم
رمضان المبارک کی آمد آمد ہے۔ بہت سی باتوں پر اختلافات کے باوجود تمام مکاتب فکر کے علما کرام کم از کم اس بات پر متفق ہیں کہ رمضان المبارک ’’ رحمتوں اور برکتوں ‘‘ کا مہینہ ہے اور یہ کہ ’’ رمضان کریم میں شیاطین قید کر لیے جاتے ہیں‘‘۔ اسی مناسبت اس مہینے کی برکات کو بیان کرتے وقت عمومی طور پر اسے تین حصوں یا عشروں میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ آغاز ’’ رحمت خداوندی‘‘ سے ہوتا ہے اور اس کے بعد اگلا عشرہ مغفرت کا اور پھر آخری ’’ دوزخ
مزید پڑھیے








اہم خبریں