Common frontend top

ڈاکٹر احمد سلیم


متن میں چُھپی خبر!


مجھے کم عمری سے ہی اخبار بینی کی عادت پڑ گئی تھی جو اب تک جاری ہے۔ یہ بھی تلخ حقیت ہے کہ الیکٹرانک میڈیا نے آج کے دور میں اخبار کی مقبولیت (اہمیت نہیں) کافی حد تک کم کر دی ہے۔ گذشتہ کچھ دہائیوں میں بدلتے وقت اور اقدار کے ساتھ آہستہ آہستہ اخبارات میں سے بھی صحافت کم ہوتی گئی ہے اور اسکی جگہ ’’ میڈیا ‘‘ نے لے لی ہے۔ اسی لیے میری اخبار بینی کی پرانی عادت تو جاری ہے لیکن وقت کے ساتھ ساتھ اخبار پڑھنے کے ایک دو حیرت انگیز اصول دریافت ہوئے ہیں۔
پیر 18  ستمبر 2023ء مزید پڑھیے

قائدؒ کا پاکستان!

پیر 11  ستمبر 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
پاکستان بنے تیرہ ماہ ہی گزرے تھے کہ 1948ء میں آج کے دن قائد اعظمؒ رحلت فرما گئے۔ جب آخری دنوں میں قائد اعظم ؒ کی طبیعت زیادہ ناساز ہوئی تو جولائی 1948 ء کے وسط میں انہیں پہلے کوئٹہ اور پھر وہاں سے 130 کلومیٹر دور ، اور سطح سمندر سے 2450 میٹر بلند مقام زیارت شفٹ کر دیا گیا۔ پھر جب انکی واپسی کا فیصلہ گیا گیا تو کوئٹہ سے کراچی کی فلائٹ تو قریب قریب دو گھنٹے کی تھی لیکن کراچی میں ائر پورٹ سے گورنر جنرل ہائوس تک پندرہ منٹ کے فاصلہ طے
مزید پڑھیے


’’آزاد میڈیا‘‘ اور صحافت!

پیر 04  ستمبر 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
چار ستون کسی بھی جمہوری ریاست کی بقا اور کامیابی کی ضمانت ہوتے ہیں۔ اول حکمران، جو ریاست اور اس کے اداروں کا نظام چلاتے ہیں، دوسر ا مقننہ یا قانون ساز ادارے جن کا اصل کام ترقیاتی فنڈ استعمال کرنا نہیںبلکہ قانون سازی یعنی حکومت کو درست طریقے سے کام کرنے کے لیے بنیاد اور حدود فراہم کرنا ہوتا ہے ۔ سوئم عدلیہ جو اس بات کی ضامن ہوتی ہے کہ ریاست کے تمام باشندوں کو ایک جیسا اور فوری انصاف ملے اورحکومت اور حکمران مکمل آزادی اور ایمانداری کے ساتھ لیکن قانون ساز اداروں کے بنائے گئے
مزید پڑھیے


سپاہی مقبول حسین کا پانچویں برسی

پیر 28  اگست 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
آج ۲۸ اگست سپاہی مقبول حسین کا پانچواں یوم وفات ہے۔ تحریک پاکستان، قیام پاکستان اور ہجرت کی تاریخ ہو، یا پھر دفاع پاکستان کی، ہمار ی تاریخ عوام اور پاک فوج کے جوانوں اور افسران کی شجاعت ، بہادری اور قربانی کی داستانوں سے بھری پڑی ہے۔ اپنے ملک سے محبت اور وفاداری کی علامت بن جانے والی ایسی بے شمار داستانیں ہیں جو نہ صرف ہمیں یاد رکھنی ہیں بلکہ اپنی اگلی نسلوں میں منتقل بھی کرنی ہیں اور بار بار دہرانی بھی ہیں تاکہ ہم ، عوام ، لیڈر اور افسران کو اپنے روز کے گورکھ دھندوں
مزید پڑھیے


زمانہ نہیں، ہم بدل رہے ہیں

پیر 21  اگست 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
زمانہ بدل گیا ہے! یہ وہ الفاظ ہیں جو ہم اکثر کوئی غیر متوقع خبر یا واقع دیکھ کر اپنے دل یا اپنی زبان سے دہراتے ہیں اور آگے بڑھ جاتے ہیں۔گزشتہ چند برسوں کو یاد کریں تو ہم یہ بھی دیکھتے ہیں کہ ایسی خبریں اور واقعات ہمیں تواتر کے ساتھ پیش آ رہے ہیں،خاص طور پر پاکستان،اسلام اور ہماری معاشرتی روایات کو لے کر۔پہلے پہل اگر یہ خبر سنتے تھے کہ احادیث مبارک کو سکولوں کی کتابوں سے حذف کر دیا گیا ہے یا اصحابہ کرامؓ اور مشاہیر اسلام کے متعلق اسباق کو ’’ مغربی ہیروز‘‘ کے متعلق
مزید پڑھیے



ہم آزاد ہیں

پیر 14  اگست 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
ہم ہر برس 14 اگست کو جشن آزادی منا کر یہ اعلان کرتے ہیں کہ ہم انگریز کی غلامی سے آزادی ہوچکے ہیں۔ ہم یہ تو ثابت کر سکتے ہیں کہ انگریز ہمارے اقتدار کے ایوانوں میں موجود نہیں لیکن اگر کوئی ہم سے پوچھے کہ انگریز تو یہاں سے چلا گیا لیکن کیا ہم غلامی سے بھی آزادی حاصل کر چکے ہیں تو ہمارا جواب کیا ہو گا؟ انگریز نے ہمیں غلام رکھنے کے لیے ایک نظام قائم کیا ہوا تھا۔ کیا اس کے جانے کے بعد ہم نے اس نظام سے بھی چھٹکارا حاصل کر
مزید پڑھیے


5 اگست: کیا زیادہ اہم ہے؟

پیر 07  اگست 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
قلم ہاتھ میں پکڑے سوچ رہا ہوں کہ 5اگست کے حوالے سے لکھنے کے لیے کونسا موضوع زیادہ اہم ہے۔ اس دن ہونے والی گرفتاری یا یوم سیاہ یعنی ’’ یوم استحصال کشمیر‘‘ ؟ بطور پاکستانی کسی کے لیے بھی کشمیر سے بڑھ کر کوئی چیز نہیں ہو سکتی۔ آخر ہم پچھتر برس سے یہ ’’رٹا رٹایا‘‘ جملہ بول رہے ہیںکہ کشمیر ہماری شہہ رگ ہے۔ رٹا رٹایا میں نے اس لیے کہہ دیا کہ کئی دہائیوںسے ہم نے اس شہہ رگ کو چھڑوانے کی کوئی سنجیدہ عملی کوشش یا منصوبہ بندی نہیں کی۔ معلوم نہیں کہ مجھے افسوس کا
مزید پڑھیے


مادرِ ملت ، سالگرہ مبارک

پیر 31 جولائی 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
آج 31 جولائی ’’ مادرِ ملت محترمہ فاطمہ جناح‘‘ کا یوم پیدائش ہے۔ آپ1893 میں پیدا ہوئیں۔ قائد اعظم محمد علی جناح کی چھوٹی ہمشیرہ ، سیاسی مشیر اور ساتھی کی حیثیت سے 28 برس تک قائداعظم کے ساتھ رہیں ۔ ہم ان کو مادر ملت اور قائد اعظم کی چھوٹی ہمشیرہ کی حیثیت سے تو جانتے ہیں لیکن بد قسمتی سے قیام پاکستان سے پہلے اور بعد میں ان کی سیاسی زندگی اور بطور ’’ خاتون رہنما‘‘ ان کی ذات اور خدمات کے حوالے سے اتنا کچھ نہ تو لکھا گیا ہے اور نہ ہم نے اپنی
مزید پڑھیے


عوام بوٹیاں نوچ نوچ کر کھانے والے!

پیر 24 جولائی 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
معلوم نہیں کہ یہ ہماری بد قسمتی ہے یا بڑی کامیابی کہ ہمیں ایک بار پھر IMF سے قرضہ مل گیا ہے ۔ اب کی بار پاکستان اور عالمی مالیتی ادارے کے مابین تین بلین ڈالر کا سٹینڈ بائی ایگریمنٹ ہوا ہے۔ کچھ بھی ہو ایک فوری اور وقتی ریلیف تو بہر حال پاکستان کو مل گیا۔ یہ الگ بات ہے کہ اس قرضے کے حصول کے لیے صرف اس برس پاکستان کو قریب قریب 750 ملین ڈالر کے نئے ٹیکس لگانے پڑیں گے اور شرح سود کو بڑھا کر بائیس فیصد تک لے جانا پڑے گا۔ اور یہ بھی
مزید پڑھیے


’’ عالمی یوم ِ عدل‘‘

پیر 17 جولائی 2023ء
ڈاکٹر احمد سلیم
ہر برس17 جولائی کو تمام دنیا میںـ ’’ عالمی یوم عدل ‘‘ منایا جاتا ہے تاکہ تمام دنیا کے انسانوں کو عالمی سطح پر ایک جیسا انصاف ملے۔ آج پاکستان میںبھی یہ دن منایا جائے گا۔ کچھ بیانات جاری کئے جائیں گے۔ کہیں واک اور کہیں تقاریب بھی منعقد ہوں گی۔ مختصر ترین الفاظ میں عدل و ا نصاف کا تصور اس یقین سے جڑا ہوا ہے کہ تما م انسان برابر اور یکسا ں سلوک کے مستحق ہیں، یعنی کسی عربی کو کسی عجمی پر یا کسی گورے کو کسی کالے پر کوئی فوقیت حاصل نہیں۔
مزید پڑھیے








اہم خبریں