BN

سعد الله شاہ


مہنگائی کے خلاف جنگ اور مشکلات


بے ربط کر کے رکھ دیے اس نے حواس بھی جتنا وہ دور لگتا ہے اتنا ہے پاس بھی میں سوچتا ہوں اس کی رسائی کے بعد کا کچھ کچھ میں خوش ہوا ہوں تو کچھ کچھ اداس بھی اس بات میں عجیب ایمائیت ہے کہ ایک گندے انڈے نے سارے انڈے خراب کردیئے یا پھر گندے انڈوں میں اچھا انڈا بھی خراب ہوگیا۔ مسئلہ تو یہ ہے ہی نہیں۔ مسئلہ یا تشویش یہ ہے کہ چوزوں تک نوبت ہی نہیں آئی۔ ہمارے حواس پر مخدوش فردا سوار ہے کہ اب بنے گا کیا۔ یہ ایک انار سو بیمار والے محاورے سے بھی آگے
بدھ 14 اکتوبر 2020ء

سیاسی ‘سوشل اور ادبی چائے

پیر 12 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
محفل سے اٹھ نہ جائیں کہیں خامشی کے ساتھ ہم سے نہ کوئی بات کرے بے رخی کے ساتھ اپنا تو اصل زر سے بھی نقصان بڑھ گیا سچ مچ کا عشق مر گیا اک دل لگی کے ساتھ معزز و محترم قارئین:ڈاکٹر نے سیاسی تحریر سے پرہیز بتایا ہے اس لئے آج ذرا چٹ پٹی اور کٹھی میٹھی باتیں ہونگی مگر یہ دانشمندی کی جھلکیاں ہونگی جنہیں Intellectual flashes کہتے ہیں۔ مگر سیاست میں بھی یہ دلچسپ مرحلہ آیا ہے کہ بغاوت کیس میں ن لیگی رہنما خود گرفتاری دینے کے لئے شاہدرہ تھانہ پہنچ گئے اور پولیس انہیں گرفتار کرنے سے انکاری
مزید پڑھیے


لاک ڈائون کے بعد پہلا مشاعرہ

هفته 10 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
ہم کہ چہرے پہ نہ لائے کبھی ویرانی کو کیا یہ کافی نہیں ظالم کی پشیمانی کو جس میں مفہوم کوئی نہ کوئی رنگ غزل یار جی آگ لگے ایسی زباں دانی کو کیوں نہ آج ذرا زبان و ادب کی بات ہو جائے کہ مجھے ایک مشاعرہ کا حال بھی بیان کرنا ہے کہ لاک ڈائون کے طویل دورانیے کے بعد حلقہ ارباب ذوق کے بعد یہ دوسری ادبی تقریب تھی جو انتہائی نفیس الطبع شاعر علی صدف نے اپنے دولت خانے پر برپا کی تھی۔سچی بات یہ کہ ہم تو ترس گئے تھے سخن آرائی اور غزل سرائی کو مشاعرہ پر مستزاد
مزید پڑھیے


دو آتشہ کالم

بدھ 07 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
دل سے کوئی بھی عہد نبھایا نہیں گیا سر سے جمال یار کا سایہ نہیں گیا ہاں ہاں نہیں ہے کچھ بھی میرے اختیار میں ہاں ہاں وہ شخص مجھ سے بھلایا نہیں گیا تو جناب! دل پر کس کو اختیار ہے وہ بے بس ہے اگر کسی کے لیے بے قرار ہے۔ آپ کس کس پر قدغن لگائیں گے کہ فلاں ابن فلاں کو چھوڑ دو۔ آپ د ل کو تسخیر کرنے کا ہنر سیکھیں۔ وہی جو جگر نے کہا تھا جو دلوں کو فتح کرلے وہی فاتح زمانہ۔ لوگ تو حالات و واقعات کے باعث دل گرفتہ ہیں۔ کوئی دردمندی‘
مزید پڑھیے


الیکشن حلقۂ ارباب ذوق 2020ء

منگل 06 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
دربہاراں گل نوخواستہ سبحان اللہ جلوہ آرا ہے وہ بالواسطہ سبحان اللہ ایسا ہنستا ہوا چہرہ کہیں دیکھا ہی نہ تھا کہہ دیا میں نے بھی بے ساختہ سبحان اللہ اس غزل کا کمال یہ ہے کہ ردیف سبحان اللہ ہے تو ہر شعر پر ثواب کا امکان تو ہے میرے بہت ہی پیارے قارئین!آج میں سیاست کو مس نہیں کروں گا کہ ابھی کل حلقہ ارباب ذوق کے تازہ الیکشن ہوئے ہیں تو مجھے حق ادب ادا کرنا ہے۔ پاک ٹی ہائوس میں ہونے والے یہ الیکشن اس کافی ہائوس ہی کی طرح تاریخی اہمیت کے حامل ہیں۔ ہر سال یہاں رونق لگتی
مزید پڑھیے



مسابقت اور پنجاب

پیر 05 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
یہ نہیں ہے تو پھر اس چیز میں لذت کیا ہے ہے محبت تو محبت میں ندامت کیا ہے خوب کہتا ہے نہیں اس نے بگاڑا کچھ بھی ہم کبھی بیٹھ کے سوچیں گے سلامت کیا ہے یہ تو بات ہم بعد میں کریں گے کہ کس نے کس کی نفرت میں کس سے محبت کی اور کہاں تک جا پہنچے۔ وہی کہ جانا پڑا رقیب کے در پر ہزار بار۔اے کاش جانتا نہ تری رہگزر کو میں۔ یا یہ کہ میں کوچہ رقیب میں بھی سر کے بل گیا۔ کوئی سوچ سکتا ہے کہ دونوں بڑی جماعتیں مولانا فضل الرحمن کی سربراہی قبول
مزید پڑھیے


سیاست کی چالاکیاں

اتوار 04 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
مجھ سا کوئی جہان میں نادان بھی نہ ہو کر کے جو عشق کہتا ہے نقصان بھی نہ ہو کچھ بھی نہیں ہوں میں مگر اتنا ضرور ہے بن میرے شاید آپ کی پہچان بھی نہ ہو عشق میں شاید بے آبرو ہونا ہی آبرو مند ہونا ہے، اس میں ہارنا جیت سے افضل ہے بلکہ رل جانا تو موتی بن جانا ہے۔پھر اس میں دو چار ہی نہیں کئی سخت مقام آتے ہیں جگر نے حد ہی کر دی کہ کہا اک آگ کا دریا اور ڈوب کے جانا ہے مگر کیا کریں ہر بولہوس نے عاشقی پیشہ شعار کی۔ سمجھدار عاشق بھی
مزید پڑھیے


ملک کی سلامتی اولین ترجیح !

هفته 03 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
حسرت وصل ملی لمحہ بے کار کے ساتھ بخت سویا ہے مرا دیدہ بیدار کے ساتھ چشم نمناک لئے سینہ صد چاک سیے دور تک ہم بھی گئے اپنے خریدار کے ساتھ ویسے دیدہ اگر بیدار ہو تو بخت بھی جاگ اٹھتا ہے۔ اصل میں دل بیدار کی ضرورت ہے۔ کوئی مقصد ہو تو سودوزیاں سے اوپر اٹھ جانا چاہیے۔ مقصد میں معروف معنوں میں استعمال کر رہا ہوں کہ جس میں خیر پوشیدہ ہو۔اپنی مرضی سے آنکھیں کھولنا اور دانستہ بند کرنا دیدہ ور کا کام نہیں۔ میں کوئی فلسفہ بیان نہیں کر رہا ،بالکل سامنے کی بات ہے کہ آپ سچ بھی
مزید پڑھیے


اِدھر اُدھر کی نہ بات کر

جمعرات 01 اکتوبر 2020ء
سعد الله شاہ
اور بھی مجبور ہوتا جا رہا ہوں میں زندگی سے دور ہوتا جا رہا ہوں میں آئینہ تھا آ گیا میں پتھروں کے شہر کیا گلہ جب چور ہوتا جا رہا ہوں میں ہمارے خان صاحب کی سوئی بھی اس پر اڑ گئی ہے کہ نواز شریف کو واپس لائیں گے۔ یعنی کھلائیں گے پلائیں گے اور ان سے کرپشن منوائیں گے۔ یہ الگ بات کہ این خیال است و محال است بلکہ وبال است۔آپ جتنی مرضی قافیہ آرائی کر لیں مگر جب تک سخن میں مضمون پھیکا ہے تب تک شاہکار بننے کا نہیں۔پتہ نہیں اس بیان سے چودھری شجاعت کے عزم کی
مزید پڑھیے


یہ تو ہونا تھا

بدھ 30  ستمبر 2020ء
سعد الله شاہ
ہمارے پاس حیرانی نہیں تھی ہمیں کوئی پریشانی نہیں تھی ہمیں ہونا تھا رسوا‘ ہم ہوئے ہیں کسی کی ہم نے بھی مانی نہیں تھی قدرت کا سب سے بڑا انعام حیرت اور تجسس ہے۔ یہی حیرتیں تمام ایجادات اور اختراعات کے در کھولتی ہیں۔ بچے کے پاس بھی یہی خوبصورتی اس کی معصومیت کو چار چاند لگا دیتی ہے۔ وہ جن آنکھوں سے معصومیت سے دیکھتا ہے ان آنکھوں کی روشنی دیکھنے والی ہوتی ہے ، پھر یہ آنکھیں دنیا سے بھر جاتی ہیں تو وہ نور بھی ماند پر جاتا ہے جو اسے فطرت سے ہم آہنگ کرتا ہے۔ خالد احمد
مزید پڑھیے