سعید خاور



مٹیالے پھندے میں جھولتی ننھی لاش


سندھ کی جواں سال شہزادی گل سما رندکی لاش واہی پاندھی سے ساڑھے تین کلومیٹر دورسندھ بلوچستان کی سرحدکے قریب ایک پہاڑی قبرستان میں ایک کے ساتھ ایک جڑی پرانی قبر وں سے بہت دور جب عجلت میں کھودے گئے گڑھے میں ڈالی جا رہی تو کوئی آنکھ اشک بار نہیں تھی اور نہ کسی چہرے پر کوئی ملال تھا۔کوئی ہاتھ اسے سپرد خاک کرتے ہوئے نہ کپکپایااور نہ کوئی ہاتھ اس کی مغفرت کے لئے دعا کو اٹھ سکا۔سب کے چہرے پر غیظ وغضب کے آثار اور ماتھے پر ناگواری اور نفرت سے لبریز تیوریاں تھیں۔ دفنانے والوںکے ہاتھ
جمعرات 12 دسمبر 2019ء

کراچی کے شہری نامعلوم افراد کے رحم وکرم پر

جمعه 06 دسمبر 2019ء
سعید خاور
کراچی میں نامعلوم افراد کی کارستانیوں کی تاریخ بہت پرانی ہے،72سال بعد بھی ان نامعلوم افرادنے قائد اعظم محمدعلی جناح کے شہر اور اس کے باشندوں کا جینا حرام کیا ہوا ہے۔کراچی میں قیام پاکستان کے تقریباً 6ماہ بعدپہلی بار یہ نامعلوم افراد حرکت میں آئے اور شہر کاامن اور بین المذاہب ہم آہنگی ٹھکانے لگا دی۔قائد اعظم نے قیام پاکستان کے بعد اقلیتوں کو امن کی ضمانت دی تھی اور برملا یہ کہا تھاکہ جوسکھ اور ہندو پاکستان چھوڑ کر نہیں جائے گا، اس کی جان ومال کی حفاظت ریاست کی ذمہ داری ہو گی لیکن ان نامعلوم
مزید پڑھیے


ارباب اختیار کے منہ پر ایک اور طمانچہ

بدھ 04 دسمبر 2019ء
سعید خا ور
جب سے دورافتادہ تھانہ واہی پاندھی ضلع دادو میںسندھ کی کمسن بیٹی گل سما رند کو سنگسار کئے جانے کا واقعہ رونما ہوا ہے میری ہی نہیں فرسودہ روایات سے باغی ہر شخص کی نیندیں حرام ہو گئی ہیں، ایک اور معصوم کلی کھلنے سے پہلے مسل دی گئی، یہ ہے نیا پاکستان ،تحریک انصاف کا پاکستان، نیاہو یا پراناپاکستان ، کل بھی اس مملکت خداداد میں غریب کی بیٹی کی عزت اور زندگی دائو پر لگی ہوئی تھی اور آج بھی وہ کسی طرح سے محفوظ نہیں ہے۔تحریک پاکستان کے نئے پاکستان کا ذکرمیں نے اس
مزید پڑھیے


مانجھی فقیر ٗایک جیتی جاگتی صوفیانہ تحریک

جمعه 29 نومبر 2019ء
سعید خا ور
اس کانام تو کچھ اور ہے جو برسوں سے مانجھی فقیر کے وسیع دامن میں کہیں لاپتا ہوگیا ہے، مجھے بھی کبھی اس کے اصل نام کا کھوج لگانے کی ضرورت نہیں پڑی، اس لئے کہ میں اس کی بے لوث محبتوں اور دل میں اتر جانے والے سروں کا اسیر ہوں۔وہ میرے چولستانی یار آں جہانی فقیرے بھگت کی طرح ایک ہاتھ میںیک تارا اور دائیں ہاتھ میں چپڑی اٹھا کر عارفانہ کلام گا کربدلتی رتوں کے قدم تھام لیتا ہے اور یہ کہ اڑتے ہوئے پنچھی اس کے سُروں میں اپنی
مزید پڑھیے


صحرائے تھر میں زندگی مضطرب

بدھ 20 نومبر 2019ء
سعید خا ور
سندھ کاعظیم صحرا تھر اکثر خبروں میں رہتا ہے۔ کم وبیش 20ہزارمربع کلومیٹر پر پھیلا یہ صحرا اپنی بیابانی، بے سرومانی اور خوب صورتی کی وجہ سے دنیا کے لئے ایک بڑی کشش رکھتا ہے۔ پھر یہ کہ لطیف سرکارؒ نے اپنی شاعری کے ایک غالب حصے میں تھر کے رنگ اور روح ڈال کر اسے زمین پر جنت ارضی بنا دیا ہے۔تھر کی پیاس ، افلاس اور اس کی وسعت میں پنہاں قدرتی خزانے اسے ہمیشہ شہ سرخیوں میںرکھتے ہیں۔ یہ اور بات ہے کہ یہ وسیع وعریض صحرا اپنے منفرد قدرتی محل
مزید پڑھیے




سندھ ، وزیراعظم کی پیش رفت کامنتظر

جمعه 15 نومبر 2019ء
سعید خاور
تحریک انصاف کی حکومت اٹھارہویں ترمیم کو وفاق پر ایک بوجھ سمجھتی ہے اور اسے ناک کا مسئلہ بنا لیا ہے۔جب سے تحریک انصاف برسراقتدار آئی ہے اٹھارہویں ترمیم سندھ اور وفاقی حکومت کے درمیان نزاع کا سبب بنی ہوئی ہے۔سندھ اور وفاق کے درمیان سواسال سے ایک جنگ کی سی کیفیت ہے ،معاملات اس حد تک بگڑ چکے ہیں کہ وزیراعظم عمران خان جب بھی کراچی آتے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کو وزیراعظم سے ملاقات سے محروم رکھا جاتا ہے،کہا جاتا ہے کہ وزیراعظم سے ملاقات کے لئے کسی وزیراعلیٰ کو دعوت نامہ بھجوانے کی
مزید پڑھیے


سندھ کی بیٹی نمرتا پکار رہی ہے!

بدھ 13 نومبر 2019ء
سعید خا ور
712ء میں سندھ میں قید ایک بیٹی کی پکار پر عرب سپہ سالار حجاج بن یوسف نے اپنے جواں سال بھتیجے محمد بن قاسم کو ایک بڑے لشکر کے ساتھ سندھ بھیجا جس نے راجہ داہر کی حکومت کونہ صرف للکارا بلکہ اسے شکست دے کر راجہ داہر کی قید سے اس بیٹی کو رہائی دلا کر تاریخ کے سینے پر اپنی دھاک رقم کردی۔ سندھ کے قوم پرست محمد بن قاسم کی سندھ آمد ، اس کے ایجنڈے اور فتوحات کے حوالے سے ہمارے نصابی بیانئے سے شدید اختلاف رکھتے ہیں لیکن یہ طے ہے
مزید پڑھیے


جوشاخِ نازک پہ آشیانہ بنے گا.....

جمعرات 31 اکتوبر 2019ء
سعید خاور
ایک پڑوسی ملک کے مسلمان شاعر نے جن کے والد اور دادا بھی شاعر تھے اور ان کے سسر بھی شاعرتھے، نے گزشتہ دنوں کیا خوب نظم کہی تھی، کہ جب بھی سنو نئی لگتی ہے اور مزہ دیتی ہے اور یہ نظم آراورپارکے حالات پرحسب حال لگتی ہے۔ پیمرا کے طے کردہ آداب کے پیش نظر نہ تو اس شاعر کا نام لکھنے کی جسارت کرسکتا ہوں اور نہ مجھ میں یارا ہے کہ اس مقبول اردو نظم کے کچھ بند آپ کی نذرکر سکوں البتہ اس نظم کا عنوان لکھنے میں کوئی حرج اور کسی پیمرا
مزید پڑھیے


سندھ کے لئے ایک اورنسخہ کیمیا

هفته 26 اکتوبر 2019ء
سعید خاور
سیدشریف الدین پیرزادہ مرحوم پاکستان کے آمروں کے محبوب قانون دان اور حقیقی معنوںمیں سیاسی مشکل کشا تھے۔ یہی وجہ ہے کہ وہ 1966ء سے 1988ء تک ہر فوجی حکومت میں ہر آمر کی آنکھ کا تارا بنے رہے۔2001ء میں وہ خاصے بزرگ ہو چکے تھے لیکن جنرل پرویز مشرف کوبھی انہوں نے سیاسی بدحالی میں تنہا نہیں چھوڑا اور بلکہ ہرمشکل گھڑی میں انہیںمجرب قانونی نسخوں سے مستفید کرتے رہے،جب جنرل پرویز مشرف پارلیمان کے ہاتھوں مواخذے کے اندیشے کا شکار ہوئے تو انہیں بچانے کے لئے سیدشریف الدین پیرزادہ کا کوئی
مزید پڑھیے


نوے کی دہائی اورموجودہ سیاست

بدھ 23 اکتوبر 2019ء
سعید خاور
اس بار وزیراعظم عمران خان کراچی آئے تو مجھے نوے کی دہائی کی سیاست یاد آگئی۔ تاریخ کس طرح خود کو دہراتی ہے ،یہ سوچ کر بھی حیرت ہوتی ہے اور یہ بھی سوچ کر حیرت ہوتی ہے کہ زمانہ بدل گیا لیکن ہماری سیاست کے رنگ ڈھنگ نہیں بدلے۔ نوے کی دہائی میںجب بی بی شہید وزیراعظم اور میاں نوازشریف پنجاب کے وزیراعلیٰ تھے تووزیر اعظم جب بھی لاہور تشریف لاتیں ،پنجاب کے وزیراعلیٰ نے ایک بار بھی ان کے استقبال کے لئے ایئرپورٹ جانا گوارا نہیں کیا۔ نوے کی دہائی کی وہ سیاست کرداروں کے
مزید پڑھیے