BN

شازیہ ذیشان


کرسی بچاؤ،پارٹی کی خیر ہے!


مسئلہ اڑھائی برسوں کا نہیں ہے کہاس عرصہ میں حکومت نے دودھ اورشہد کی نہریں کیوں نہیں بہائیں۔ مسئلہ اب ڈھٹائی کا بن چکا ہے ہ موجودہ حکومت کے لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ بہت دیانتدار پارسا لوگ ہیں اور باقی سب کرپشن کے کیچڑ میں گندے ہو چکے ہیں تو دور کہاں جانا، ڈسکہ کے حالیہ ضمنی الیکشن ہی دیکھ لیں۔ وہ تو یہ حکومت ٹھیک کروا نہیں سکی، بزدار صاحب پر کیا پہلے کم تنقید ہو رہی تھی جو انہوں نے ڈسکہ کے الیکشن میں ایک اور موقع دے دیا۔ مطلب آ بیل مجھے مار،
جمعه 26 فروری 2021ء

نوٹ بمقابلہ ضمیر کا ووٹ!

جمعه 19 فروری 2021ء
شازیہ ذیشان
سینیٹ الیکشن کا شیڈول جاری ہوتے ہی ملک بھر میں جوڑ توڑ کی سیاست شروع ہو چکی ہے۔ ایک طرف اپوزیشن سرپرائز دینے کے دعوے کررہی ہے،تو دوسری جانب حکومت ہارس ٹریڈنگ کو روکنے کے لیے تمام قانونی آپشنز بروئے کار لانے کی سعی میں ہے۔اس دوران سپریم کورٹ میں سینیٹ الیکشن اوپن بیلٹ سے کروانے کے معاملے پر سماعتوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ سپریم کور ٹ کی ایک حالیہ سماعت میں بہت اہم ریماکس سامنے آئے ہیں کہ ووٹ ہمیشہ کے لیے خفیہ نہیں رہ سکتا،قیامت تک ووٹ خفیہ رہنا آئین میں ہے ،نہ عدالتی فیصلوں میں۔متناسب نمائندگی
مزید پڑھیے


یہ پیسے کا کھیل ہے صاحب!

بدھ 10 فروری 2021ء
شازیہ ذیشان
سینیٹ الیکشن قومی سیاست کا محور بن چکا اور سینیٹ الیکشن پرحکومت جس طرح کی جلد بازی کا مظاہرہ کر رہی ہے، اس کو دیکھتے ہوئے لگ یوں رہا ہے کہ اوپن بیلٹنگ حکومت کی دکھتی رگ بن چکی ہے، کیونکہ حکومت کی طرف سے پہلے تو اس معاملے کو ایک صدارتی ریفرنس کی شکل میں سپریم کورٹ کی رائے لینے کے لیے پیش کیا گیااور پھر حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلے سے پہلے ہی اپنا فیصلہ کرلیا۔ اس سلسلے میں حکومت نے پہلے سپریم کورٹ میں صدارتی یفرنس داخل کیا، پھر پارلیمنٹ میں 26 ویں آئینی ترمیم
مزید پڑھیے


ایک اور 5 فروری آ گیا!

جمعه 05 فروری 2021ء
شازیہ ذیشان
ایک اور پانچ فروری آ گیا۔آج ایک مرتبہ پھر ملک بھر میں یوم یکجہتی کشمیر منایا جا رہا ہے۔ آج پھر سیمینارز، کانفرنسیں، ریلیاں اوراحتجاجی مظاہرے ہوں گے۔ کئی کلو میٹر کی ہاتھوں کی زنجیریں بنیں گی۔ چوکوں اور چوراہوں پر بھارتی اور امریکی حکمرانوں کے پتلے نذر آتش ہوں گے۔گزشتہ 31 برس 1990 سے 2021 تک ہم ہر سال پانچ فروری کو یہی تو کرتے آ رہے ہیں۔ سوال یہ ہے کہ گزشتہ تیس اکتیس برس میں پروان چڑھنے والی نوجوان نسل میں کتنوں کو پانچ فروری کو منائے جانے والے یوم یکجہتی کشمیر کی تاریخ کے
مزید پڑھیے


تین پارٹیاں ، تین کہانیاں

بدھ 27 جنوری 2021ء
شازیہ ذیشان
تین عورتیں تین کہانیاں تو آپ نے پڑھی یا سنی ہوں گی۔ آج آپ کو تین پارٹیوں اور ان کی تین کہانیوں کے بارے میں بتانا چاہتی ہوں۔آپ سمجھ تو گئے ہوں گے کہ یہ تین پارٹیاں،پاکستان کی تین بڑی سیاسی جماعتیں پی ٹی آئی، ن لیگ اور پیپلز پارٹی ہیں،ان کے علاوہ ایک اور پارٹی بھی ہے، جو ابھی تک نہ توتین میں شمار ہوتی ہے، نہ تیرہ میں اور اس کے بارے میں بھی آپ سمجھ ہی گئے ہوں گے، مگر پھر بھی اس کا یہاں ذکر کیا جا رہا ہے اور وہ پارٹی ہے ،جے یو
مزید پڑھیے



اپنا سچ اپنا جھوٹ

بدھ 20 جنوری 2021ء
شازیہ ذیشان
جنوری کی شدید سرد ی میں سیاست میں ایسی گرما گرمی دیکھنے میں آ رہی ہے، جو اس سے قبل پاکستان کی سیاسی تاریخ میں نہیں دیکھی گئی ۔ فارن فنڈنگ کیس ہو یا براڈ شیٹ کا معاملہ،حکومت اور اپوزیشن کے درمیان سرد جنگ کا سلسلہ جاری ہے۔گزشتہ روز پی ڈی ایم نے پی ٹی آئی کے خلاف الیکشن کمیشن کے باہر 6 سال سے زیر التوا فارن فنڈنگ کیس کو مدعا بناتے ہوئے بھرپور احتجاج ریکارڈ کروایا۔یوں پی ٹی آئی پر بیرونی ممالک سے حاصل ہونے والی رقم(فارن فنڈنگ ) کا معاملہ ایک بار پھر زیر بحث آ
مزید پڑھیے


واٹس ایپ بھی دھوکہ دے گیا!

بدھ 13 جنوری 2021ء
شازیہ ذیشان
ارے اس کال پر بات نہ کرو۔۔۔بند کرو۔۔۔بند کرو۔۔۔واٹس ایپ پر آئو۔۔۔واٹس ایپ زیادہ محفوظ ہے۔جی ہاں! ہم سب ہی یہ کرتے ہیں۔یہ ہم سب کی نارمل کی روٹین ہے۔پوری دنیا میں لوگ واٹس ایپ کو محفوظ تصور کرتے تھے، لیکن اب یہ بھی محفوظ نہیں رہا، کیونکہ گزشتہ چنددنوں سے واٹس ایپ کی طرف پرائیویسی کی ایک نئی پالیسی کا پیغام دنیا میں موجود اس کے لاکھوں صارفین کو موصول ہورہا ہے، جس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ واٹس ایپ کی جانب سیاپنیصارفین کو پرائیویسی پالیسی کے حوالے سے ایک پیغام ارسال کیا جا رہا
مزید پڑھیے


2020 ایک تلخ حقیقت

بدھ 06 جنوری 2021ء
شازیہ ذیشان
بہت مشکل ہے کہ 2020 کی تلخ یادوں کو دماغ کی گیلری سےDelete کرنا۔ ہر کسی کے لیے 2020 کا سال کچھ ایسے گہرے زخم چھوڑ کر گیا ہے، جس کا بھرنا ابھی تو نا ممکن سی بات لگتی ہے۔ میرے لیے 2020 اس کالی رات کی طرح ہے، جو روشنی کی طرف جانے ہی نہیں دیتی۔میری امی کا انتقال 25 اپریل 2020 کو ہوا۔ وہ کورونا سے اتنا ڈرتی تھیں؛ اپنا اور گھر میں سب کا بہت خیال رکھتی تھیں۔ کورونا سے تو وہ بچ گئیں، لیکن اچانک برین ہیمبرج کے اٹیک سے وہ اس دنیا سے
مزید پڑھیے


پاکستانی سیاست کے رنگ

بدھ 30 دسمبر 2020ء
شازیہ ذیشان
گڑھی خدا بخش میں بے نظیر بھٹو کی 13 ویں بر سی کی تقریب، پی ڈی ایم کے جلسے میں تبدیل ہو گئی۔بظاہر پی ڈی ایم کی قیادت نے لاڑکانہ کے اسٹیج پر کھڑے ہو کر حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا، مگر پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جلسے میں عدم شرکت اور آصف علی زرداری کی معنی خیز تقریر نے پی ڈی ایم میں اختلافات کی شدت کو واضح کر دیا۔آصف علی زرداری کا پرویز مشرف کا ذکر کرتے ہوئے یہ کہنا کہ میں نے ایک جنرل کو صدر ہوتے ہوئے مکھی کی
مزید پڑھیے


ہاتھ سے کیا نکلا جا رہا ہے؟

بدھ 23 دسمبر 2020ء
شازیہ ذیشان
ملکی سیاست میں سینیٹ انتخابات انتہائی اہمیت اختیار کرچکے ہیں۔حکومت نے آئندہ سال میں ہونے والے سینیٹ کے انتخابات قبل از وقت اور شو آف ہینڈز کے ذریعے کروا نے کا ارادہ ظاہر کرکے ایک نئی بحث چھیڑ دی ہے ۔سینیٹ کے انتخابات 10 فروری سے لیکر مارچ کے ابتدائی ہفتے تک کسی بھی وقت الیکشن کمیشن کے اعلان کر دہ شیڈول کے مطابق ہو ں گے ،جس میں حکومت اور اپوزیشن کی جانب سے نامزدہ 52 افراد اپنی قسمت آزمائیں گے، کیونکہ52 موجودہ ارکان نے اپنی آئینی مدت پوری کر کے ریٹائر ہونا ہے اور ان کی
مزید پڑھیے