BN

ظہور دھریجہ


کورونا کا عذاب ۔ احتیاط کی ضرورت


دنیا کے دیگر ممالک کی طرح پاکستان میں بھی کورونا کی صورتحال بگڑتی نظر آ رہی ہے ، کورونا سے پاکستان میں ہلاکتیں 80 سے زائد اور متاثرین کی تعداد 5ہزار سے اوپر چلی گئی ہے۔ لاک ڈاؤن کو قریباً 20واں روز ہے ۔ ایک طرف کورونا دوسری طرف بھوک کی موت منہ کھولے کھڑی ہے ۔ حکومت کی طرف سے امداد جو کہ اونٹ کے منہ میں زیرہ کے برابر ہے ، کا طریقہ کار درست نہیں۔ تین دن قبل ملتان میں بھگدڑ سے ایک خاتون ہلاک اور 20 زخمی ہو چکی ہیں ۔ اسی طرح کا واقعہ گزشتہ
پیر 13 اپریل 2020ء

92 نیوز کی لائق تحسین کاوش

اتوار 12 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن متاثرین کی امداد کیلئے 92 نیوز کی ملکی تاریخ کی سب سے بڑی ٹیلی تھون کا انعقاد ہوا ۔ اسد اللہ خان ، شازیہ ذیشان ، سعدیہ افضال میزبان تھے جبکہ عارف نظامی ،ہاروں الرشید ، ارشاد عارف اور ڈاکٹر معید پیرزادہ بطور تجزیہ کار شریک تھے۔ لائیو ٹیلی تھون کے وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان عمران خان مہمانِ خصوصی ۔ وزیراعظم نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 30 سال سے پاکستان میں فنڈ ریزنگ کرتا آ رہا ہوں ، مجھے سب سے زیادہ تجربہ ہے ۔ وزیراعظم کا یہ کہنا کسی
مزید پڑھیے


وزیر اعلیٰ کا دورہ اور خطے کے مسائل

هفته 11 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
وزیراعلیٰ سردار عثمان خان بزدار نے گزشتہ روز راجن پور کے نواحی علاقے روجھان میں گندم کٹائی کا افتتاح کیا اس موقع پر انہوں نے کہا کہ کاشتکاروں سے ایک ایک دانہ خرید کریں گے ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ لندن میں بیٹھ کر مزے لوٹنے والوں کی زبان سے دکھی انسانیت کی بات نہیں جچتی۔ وزیراعلیٰ نے راجن پور ہسپتال کے دورے کے دوران راجن پور ، فاضل پور ، کوٹ مٹھن ، داجل اور روجھان کے ہسپتالوں کو اپ گریڈ اور جام پور ہسپتال میں گائنی وارڈ بنانے کا اعلان کیا ۔ ہسپتالوں کو اپ گریڈ
مزید پڑھیے


اداروں کو بچانے کی ضرورت

جمعه 10 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
قوموں کی زندگی میں اداروں کی بہت اہمیت ہے۔ کورونا کی جو آفت آئی ہے قومی معیشت پر اس کے دوررس اثرات مرتب ہوں گے جس کے نتیجے میں شاید فوری طور پر نئے ادارے قائم نہ ہو سکیں البتہ پہلے سے موجود اداروں کو بچانے کی ضرورت مسلمہ ہے۔ قیام پاکستان کے بعد نئے ادارے وجود میں نہ لائے گئے۔ذوالفقار علی بھٹو پہلے سربراہ تھے جنہوں نے ادارے قائم کئے، ذوالفقار علی بھٹو کا ذکر آیا ہے تو عرض کرتا چلوں کہ بھٹو کی برسی 4 اپریل کو کورونا لاک ڈاون کے باعث خاموشی سے گزر گئی۔ یہ بھی
مزید پڑھیے


سیاسی زخموں کا علاج مرہم یا نمک؟

جمعرات 09 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
آٹا چینی بحران پر بات کرنے سے پہلے یہ عرض کرنا چاہتا ہوں کہ وزیر اعظم کے اقدام کا ایک فائدہ یہ ہوا ہے کہ لوگوں کی تھوڑی سی توجہ کورونا وائرس اور لاک ڈائون سے ہٹ کر آٹا چینی بحران کے حوالے سے تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ پر آئی ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ پوری دنیا کورونا سے بھی پریشان ہے اور میڈیا پر کورونا کے حوالے سے ہونیوالے تبصروں سے بھی، یہ رپورٹ پریشان حال پاکستانی قوم کیلئے ہو اکا تازہ جھونکا ثابت ہوئی ہے۔ آج وزیر اعظم کا اخبارات میں یہ بیان شائع ہوا ہے کہ عمران
مزید پڑھیے



اسلامی اداروں کی تاریخ اور کورونا وائرس

بدھ 08 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
’’ اسلامی اداروں کی تاریخ اور کورونا وائرس ‘‘ اس عنوان کا مقصد یہ نہیں کہ کورونا وائرس اور اسلامی اداروں کی تاریخ کا آپس میں کوئی تعلق ہے ، بلکہ اول مقصد یہی ہے کہ ہم اپنی نوجوان نسل کو اسلامی اداروں کی تاریخ کے بارے میں بتائیں ، کورونا کا تذکرہ اس لئے شامل ہوا ہے کہ اس سے اقوام عالم کے ساتھ ساتھ دنیا کے تمام مسلم ملک بھی متاثر ہوئے ہیں ، دیکھنا یہ ہے کہ مسلم ممالک خصوصاً مسلم اداروں کا کورونا وائرس کے خاتمے اور متاثرین کی امداد کے حوالے سے کیا کردار رہا
مزید پڑھیے


صدام حسین کے خاندان کو وزیراعلیٰ پنجاب سے آس

پیر 06 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
ایک طرف کرونا کا عذاب جاری ہے دوسری طرف بھوک ، غریب کیلئے بہت مسائل ہیں، میں اس موضوع پر لکھنا چاہتا تھا مگر 92 نیوز میں میرا کالم ’’صدام حسین کی موت کے ذمہ دار کون؟‘‘ شائع ہوا تو مجھے قارئین کی طرف سے فون آئے کہ تشنگی باقی ہے اُن کا اصرار تھا کہ دیار غیر میں عربی کفیل کے ظلم اور لالچی باپ کی ستم ظریفیوں کے باعث خودکشی کرنے والے صدام حسین کے ویڈیو پیغام کو مکمل ہونے دیں تو اُن کی خواہش پر میں ویڈیو پیغام کا دوسرا حصہ وزیر اعلیٰ صاحب اور دوسرے صاحب
مزید پڑھیے


گھر کی قید سے رہائی کی ضرورت

اتوار 05 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
وزیراعظم عمران خان کے خطاب کا شدت سے انتظار تھا ، تعمیرات کے پیکج بارے پہلے بتا دیا گیا تھا ، انتظار اس لئے تھا کہ امید کی جا رہی تھی کہ وزیر اعظم تمام مزدوروں اور تمام دیہاڑی داروں کو کام کی اجازت ،اور ملک کے غریبوں کی لوٹی گئی دولت لٹیروں سے چھین پر غریبوں کو دینے کا اعلان کریں گے۔ مایوسی اس بناء پر ہوئی کہ وزیراعظم نے اعلان فرمایا کہ ’’ تعمیرات پر سرمایہ کاری کرنے والوں سے ذرائع آمدن نہیں پوچھے جائیں گے۔‘‘ اگر ایسا ہے تو پھر نواز شریف اور زرداری سے جھگڑا کس
مزید پڑھیے


صدام خان کی موت کا ذمہ دار کون؟

جمعه 03 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
پچھلے دنوں دبئی میںچوٹی زیریں ڈیرہ غازی خان کے ایک محنت کش نوجوان نے خود کشی کی اور خود کشی سے پہلے ایک ویڈیو پیغام وائرل کیا ۔قریباً دس منٹ کے ویڈیو پیغام میں نوجوان نے اپنا نام ، پتہ ، خود کشی اور اس کی وجوہات کے بارے میں بتایا ہے اور یہ بھی بتایا ہے کہ خود کشی کرنے والے کا ٹھکانہ جہنم ہے مگر میں کیاکروں کہ میری زندگی جہنم سے پہلے جہنم بنا دی گئی ہے ۔نوجوان نے خود کشی کیوں کی؟ تفصیل بتانے کی بجائے میں اس کا اپنا مکمل بیان من و عن پیش
مزید پڑھیے


کرونا وائرس، وزیر اعظم کا خطاب

بدھ 01 اپریل 2020ء
ظہور دھریجہ
کرونا وائرس کے بارے میں وزیر اعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کرونا ریلیف فنڈ قائم کر دیا ہے اور ٹائیگر فورس کے قیام کا اعلان کیا ہے۔ وزیر اعظم نے یہ بھی کہا ہے کہ ملازمین کو فارغ نہ کرنے والے اداروں کو اسٹیٹ بینک سستے قرضے فراہم کرے گا۔ ذخیرہ اندوزی کرنے والوں کو ریاست سخت سزا دے گی۔ انہوں نے کہا کہ وائرس کے خلاف جنگ جیتیں گے۔ کرفیو نافذ نہیں ہو گا۔ وزیر اعظم نے ہمسایہ ملک بھارت کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ بھارت میں لاک ڈائون کی سختی کی گئی تو
مزید پڑھیے