BN

عابد قریشی


بابا فرید گنج شکرؒ کی نگری پاکپتن میں


اْٹھ فریدا سْتیا جا جھاڑو دے مسیت تو سْتّا تے رب جاگدا تیری ڈاڈے نال پریت دسمبر 2012ء میں مظفر گڑھ سے پاکپتن تبادلہ اچانک ہوا۔ نہ کوئی کاوش، نہ منصوبہ بندی البتہ عرصہ دراز سے دل کے نہاں خانوں میں ایک معصومانہ سی خواہش موجزن رہی کہ کبھی پاکپتن شریف میں بھی سروس کا موقع ملے۔ ہمارے لیے پاکپتن کی پوسٹنگ دنیاوی آن بان اورٹھاٹ سے ہٹ کر خالصتاً ایک قلبی اور روحانی معاملہ تھا کہ بابا فرید گنج شکرؒ کے ساتھ ایک روحانی اور نسبی تعلق
بدھ 30 دسمبر 2020ء

وقت رخصت وہ چپ رہے ناصر

منگل 29 دسمبر 2020ء
عابد قریشی
اچھے خاندانی پس منظر، عمدہ روایات اور شرافت و نجابت کا عملی پیکر ڈاکٹر نوید احمد صدر بار اور بڑے ہونہار اور محنتی قانون دان صابر سلطان پاشا سیکرٹری بار تھے۔ پاشا صاحب بعد ازاں ایڈیشنل سیشن جج بن گئے۔ اعجاز خان بلوچ جو پاکپتن بار کے متواتر آٹھ نو بار صدر بار رہ چکے تھے اور وکلاء میں بڑے ہی مقبول اور رکھ رکھاؤ والے تھے وہ اْن دنوں واحد ممبر پنجاب بار کونسل تھے۔ بار کے ان عہدے داران کی فراست و دانائی اور معاملہ فہمی کی بدولت بار اور بنچ کے تعلقات بڑے خوشگوار رہے۔ نہ
مزید پڑھیے


علامہ اقبال ایک آفاقی شاعر

منگل 10 نومبر 2020ء
عابد قریشی
شاعر بے مثل، فلسفی شاعر، شاعر مشرق ڈاکٹر علامہ محمّد اقبال کا یوم ولادت تزک و احتشام سے تو نہیں البتہ سادگی سے منایا گیا۔ اقبال جو ایک آفاقی شاعر ہیں انہوںنے خوابِ غفلت میں گْم ایک بے آواز قوم کو ایک واضح نظریہ اور سمت دی۔ تحریک آزادی پاکستان میں اقبال کا کردار اْنکی ولولہ انگیز اور انقلابی شاعری سے مترشّح ہے۔ جو روشنی کا ایک منارہ ہے۔ مگر افسوس ہم نے اقبال کی شاعری کو سمجھنے، اْس پر عمل کرنے یا اْس سے رہنمائی لینے کی بجائے ان شاعری کو قوالوں کے سپرد کر دیا ہے۔ ہم اچھے
مزید پڑھیے


مقام مصطفٰے صلی اللہ علیہ وسلم قرآن کے آئینے میں

بدھ 28 اکتوبر 2020ء
عابد قریشی
انسانیت کی ابتدا سے انتہا تک کروڑوں، اربوں انسان کرّہ ارض پر نمودار ہوئے اور ہوتے رہیں گے۔ ان میں سینکڑوں ایسے ہونگے جنہوں نے اپنی خداداد سیاسی، سماجی، عسکری اور معاشی صلاحیتوں کی بنا پر نسل انسانی پر انمٹ نقوش چھوڑے۔ مگر اس پوری کائنات میں صرف ایک ہستی ایسی آئی کہ جو بے مثل ہے جس نے انتہائی نا مساعد حالات میں کفر و شرک، بت پرستی اور الحاد کے گھٹا ٹوپ اندھیروں میں آنکھ کھولی۔ انسانیت کی تذلیل، اخلاق و کردار کی پستی، گمراہی اور تنزلّی کی آخری حدود کو چھوتے ہوئے معاشرہ میں سیدنا محمّد
مزید پڑھیے


عورت کی وراثت ایک گھمبیر مسئلہ

جمعه 14 فروری 2020ء
عا بد قر یشی
عورت خواہ ماں کے روپ میں ہو بہن کے، بیوی ہو یا بیٹی۔ اس کے تمام روپ دلکش، خوبصورت، محبت آمیز اور پر خلوص ہیں۔ یہ وفا اور محبت کی علامت ہے کہ وجودِ زن سے ہے تصویرِ کائنات میں رنگ۔بد قسمتی سے ظہور اسلام سے قبل عورت معاشرہ کی مظلوم ترین مخلوق تھی۔ نہ عزت، نہ توقیر، نہ وراثت، نہ حفاظت۔ بیوہ کو خاوند کی وفات پر ساتھ ہی مار دیا جاتا ۔ بیٹی کو بوجھ تصور کیا جاتا اور زندہ درگور کر دیا جاتا۔ آقائے دوجہاں سرور ِکائناتؐ کی آمد پر انسانیت نے
مزید پڑھیے