عبدالرفع رسول


کشمیریوں کی خوشی وغمی پاکستان کے ساتھ


دہلی کی جامع مسجد کے امام اعلان کرچکے تھے کہ بھارت میں رئویت ہلال کی کہیں سے بھی کوئی شہادت موصول نہیں ہوئی اس لئے بھارت میں 25مئی سوموارکوعید الفطرہوگی۔مگر ملت اسلامیہ کشمیرکو دہلی کے شاہی امام کے اعلان سے کوئی غرض اور کوئی سروکارنہ تھا۔ کشمیری مسلمانوں کے بے اعتنائی کایہ طرزعمل بے چارے جامع مسجددہلی کے امام کے خلاف ہرگز نہ تھابلکہ ان کایہ وطیرہ ہندوستان کے خلاف تھاکیوں کہ وہ توہندوستانی نہیں ۔تاریخ اٹھاکردیکھ لیجئے کہ کشمیر سلطنت بھارت کا کبھی حصہ رہاہے اورنہ ہی کشمیری مسلمانوں نے اپنے آپ کوکبھی ہندوستانی مسلمان سمجھا۔اس لئے وہ
جمعرات 28 مئی 2020ء

کشمیرمیں تصورعید

اتوار 24 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
رمزآشنااورمحرم رازعلامہ حسن البناء شہیدنے کیاخوب فرمایاکہ ’’تمہاری حقیقی عیداس دن ہوگی جس دن تمہاری سرزمینیںآزادہونگی اوردنیامیںقرآن کی حکمرانی ہوگی ‘‘یقینااس دن نہ صرف ہماری حقیقی عید ہوگی بلکہ وہ دن امت مسلمہ کے لئے عہدآفریں بھی ہوگاکہ جب نبرآزماشیطانی طاقتوں کوعبرت انگیزشکست ملے گی اوراسلام کے نشاہ ثانیہ اورپھرسے اس کے اوج اقبال کادوردورہ ہوگا۔ دنیاکے دیگرخطوں میں پائی جانے والی اسلامی تحریکات کے بشمول ملت اسلامیہ کشمیرطویل و صبر آزما جدوجہدمیں جو قربانیاں پیش کررہی ہے ظلم و جبراوربربریت کا کوئی متوحش اورمتنفرہتھکنڈہ ایسا نہیں جو ہندوبھارت نے بے سرو سامان اور نہتے کشمیری مسلمانوں پر نہ آزمایا
مزید پڑھیے


رامائن پرخاموشی اور ارطغرل پرفتوے چہ معنی دارد

هفته 23 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
ڈرامہ ارطغرل نے چارسو اپناسکہ بٹھادیاغیرمسلم اقوام اس پرناخوش تھے ہی لیکن مسلمانوں میں سے بھی بعض طبقات اس پرناک بھویں چڑھائے بیٹھے ہیں۔افسوس یہ ہے کہ بعض بھارتی علماء نے اس کے خلاف فتوے صادرکردیے۔ المیہ یہ ہے کہ بھارت میں سینکڑوںاقساط پردکھائے جانے والے ہندوتہذیب وثقافت پرمبنی ہندوڈرامہ ’’رامائن سیریل اورمہابھارت‘‘پریہ علماء ایسے چپ رہے جیسے ان کے منہ میں گھنگھنیاں پڑچکی تھیںمگرجونہی مسلمانوں کے عثمانی دورخلافت اوراس دورکے فتوحات پرمبنی ڈرامہ ارطغرل نے پوری آب وتاب کے ساتھ دنیاپر اپنی دھاگ بٹھادی تووہ بپھرگئے اورفتوے جاری کردیئے کہ اسلام میں ڈرامہ بازی کاکوئی تصورنہیں ۔اس لئے اسے
مزید پڑھیے


طالبان بھارت سے چیں بجبیں مگرکیوں

بدھ 20 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول

وقت نے یہ ثابت کردیاہے اورپوری دنیااب یہ حقیقت تسلیم کرتی ہے کہ طالبان افغانستان کی سب سے موثر جنگی و سیاسی قوت ہیں مگراس المیے کاکیاکریں کہ بھارت اس حقیقت سے آنکھیں چرارہاہے اورتاحال وہ اپنے شیطانی حربوں سے بازنہیں آتا۔حالانکہ طالبان کی قوت کے سامنے بھارت کی افغانستان میں ابلیسی چالوں کوپرکاہ کی بھی حیثیت نہیں۔یہ الگ بات ہے کہ بغیرکسی ردوکدکے طالبان دلجوئی سے گفتگوکرنے کے خوگرہیں لیکن حرب وضرب کے میدان میں جنگی منصوبوں میں انکی فراست صادقہ،استغراق فن حرب اور شمشیرزنی کی قوت اورلڑائی کے بے باکانہ انداز کاحال امریکہ اور اسکے اتحادیوںسے پوچھا جانا
مزید پڑھیے


کشمیرکی بولتی تصویریں

هفته 16 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
5اگست 2019ء سے کشمیرمیں جاری لاک ڈائون کی کوریج کرنے والے تین کشمیری صحافیوں کو5مئی 2020ء میںامریکہ میںپلٹرز ایوارڈسے نوازاگیا۔ کشمیرکے جرنلسٹوںکے ایوارڈپربھارت جس طرح چیں بجبیں ہوا ۔مودی اینڈکمپنی کی اس حوالے سے حیرانی ،پریشانی،اضطراب و بے چینی بھارتی میڈیاپردیکھی جاسکتی ہے ۔بولتی تصویروں کی گویائی میں کوئی طوالت ،تکلف اور تصنع نہیں ہوتا۔صورتحال جیسی ہوتی ہے تصاویراسی کی ہوبہو عکس بندی کرتی ہیں۔ تصویرکسی مصیبت زدہ انسانی آبادی کے رنج و غم کوسامنے لانے کایہ ایک سائینٹفک اسلوب ہوتاہے کہ جس پرکسی ردوقدح اورمباحثوںکی ضرورت نہیںہوتی ہے اور نہ ہی منظرعام پرلانے والوں پربودے الزامات و دشنام طرازی
مزید پڑھیے



ہریانہ جہاں مسلمانوں کوجبراََمرتدبنایاجارہا

جمعرات 14 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول

1947ء سے بالعموم ااور2014ء سے بالخصوص بھارتی حکمرانوں کے غصیلے تیورسے یہ اخذ کرناکوئی مشکل کام نہ تھاکہ بھارت میں مسلمانوں کاکوئی مستقبل نہیں۔آج واضح طورپربھارت کامسلمان جن زہرگدازمصائب وآلام کاشکارہے یہ بہت پہلے سے طے شدہ اسکرپٹ تھاجس پربس عمل درآمدکاسلسلہ چل پڑاہے۔ مسلمان بھارت کی تمام ریاستوں میں دوڑائے ہانپائے جارہے ہیں،سانسیں انکی پھولی ہوئیں،اکھڑی ہوئیں،آنسو بہہ بہہ کرآنکھیں خشک،کھال خشک، ہونٹ خشک ۔ٹھنڈی آہیں بھر رہے ہیں،لرزتی زبان سے فریادکناں ہیں ،چہرے اترے ہوئے ہیں۔ان کی کشتی حیات منجدھار میں مسلسل ہچکولے کھارہی ہے ۔یہ ہے آج کے ہندوراشٹربھارت میں مسلمانوں کے حالات بدکی منظرکشی اوریہ ہیں
مزید پڑھیے


ریاض نائیکوایک تیغ بے نیام

منگل 12 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
ہمت واستقلال کے پیکرریاض نائیکو میںپہاڑوں سے ٹکرلینے کی بھرپورسکت تھی اوروہ جادہ حق کابے خوف راہی تھا۔جس طرح وہ آخری دم قابض فوج کے اعصاب پرسواررہا،شہادت پانے کے بعدبھی وہ انکے اعصاب سے نہ اترسکا۔یہی وجہ ہے کہ قابض بھارتی فوج نے ان کاجسدخاکی انکے لواحقین کوسپردکرنے کے بجائے کسی نامعلوم مقام پردفنا دیا۔قرآن مجیدمیں ارشادہے کہ شہیدزندہ ہوتاہے اسے مردہ مت کہو۔ فسطائی مزاج بھارتی پالیسی سازوں کی اس وقت مت ماری جاتی ہے جب وہ کشمیرپر تسخیری حربوں کے باوجودہرنئے دن کے ساتھ اسلامیان کشمیرکانعرہ آزادی پہلے سے زیادہ گرجدار، توانااورمضبوطی کے ساتھ بلندہوتا دیکھتے ہیں۔ 6مئی2020ء بدھ
مزید پڑھیے


مجاہدین کشمیرکی پریس کانفرنس

جمعه 08 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
2مئی ہفتے کی شام کوا ایک بڑی اوراہم جہادی کارروائی میں مجاہدین کشمیرنے تین بھارتی فوجی افسروں اورسات اہلکاروںکوہلاک کردیاہلاک شدہ گان میں ایک کرنل ،ایک میجراورایک انسپکٹر تھا۔ہراہم اوربڑی جہادی کارروائی دراصل مجاہدین کشمیرکی طرف سے پریس کانفرنس ہوئی جسکے ذریعے وہ اپنی موجودگی ،اپنی کارکردگی اوراپنے نصب العین کوثابت اورواضح کرنے کے کے ساتھ ساتھ اپنایہ بلیغ پیغام دیتے ہیں کہ سرزمین کشمیرتب تک قابض بھارتی فوج کاشمشان گھاٹ بنتارہے گا جب تک وہ کشمیرخالی نہیں کرتے ۔مجاہدین کشمیراس تازہ کارروائی کے بعد بھارت پرپاگل پن کے جودورے پڑے ہوئے ہیں بھارتی میڈیاپراس کاخوب نظارہ کیاجاسکتاہے۔ مقبوضہ کشمیرکے
مزید پڑھیے


کشمیریوں کے آشیانوں کا انہدام

منگل 05 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول

اسلامیان کشمیر کی گذشتہ 30سالہ عسکری جدوجہدمیں ہمیشہ یہ دیکھاگیاکہ کشمیری مجاہدین کے ساتھ تاب مقاومت نہ لاتے ہوئے براہ راست مبارزت اور دوبدومقابلہ آرائی کے بجائے قابض بھارتی فوج دورسے ہی کشمیریوںکے ان آشیانوںکوشارٹ رینج کے میزائیلوں سے نشانہ بناکر منہدم کرتی ہے جہاں اسے شک ہوتاہے کہ ان میںمجاہدین موجود ہیں۔ پچھلے ماہ اپریل کے دوران قابض فوج کی ایسی ہی بزدلانہ کارروائیوں کے دوران کشمیرکے 40رہائشی مکانات منہدم اورمسمار کردیئے۔گزشتہ کئی برسوں سے قابض بھارتی فوج نے اپنی ایسی ہی بزدلانہ کارروائیوںکے دوران کشمیری مسلمانوں کے سیکڑوں آشیانے چھین لئے ۔آہ !آشایانے چھن جاناکوئی معمولی بات نہیں
مزید پڑھیے


بھارت اقلیتوں کے لئے جہنم بناہواہے

اتوار 03 مئی 2020ء
عبدالرفع رسول
امریکی کمیشن برائے عالمی مذہبی آزادی کی رپورٹ میں بھارت کو اقلیتوں کے لئے خطرناک قرار دیاگیاہے ۔مگرہم کہتے ہیں کہ بغیرکسی جرح وتعدیل کے یہ ایک مسلمہ حقیقت ہے کہ بھارت کے ہندونسل پرستانہ رویے نے بھارت کو اقلیتوں کے لئے خطرناک ہی نہیں، جہنم بنایاہواہے ۔ یہ ایک نتھری حقیقت ہے کہ بھارت کے ریاستی جرائم میں امریکہ سمیت دنیاکی تمام بڑی طاقتیں اوروہ عرب ممالک بھی شامل ہیں کہ جنہوں نے بھارتی جرائم دیکھ کر ہمیشہ نہ صرف اس پر چپ سادھ لی بلکہ بھارت کے ساتھ ہرقسم کے تعلقات استوارکرتے اورانہیں فروغ دیتے رہے
مزید پڑھیے