BN

عبدالرفع رسول



کیابھارت کوئی مس ایڈونچرکرے گا


ہندوستان جل رہاہے مودی حالت کنٹرول کرنے میں ناکام ہوچکاہے اسے اس کے سوا کچھ سجھائی نہیں دے رہا۔کہیں وہ ایل اوسی پرکوئی مس ایڈوانچر نہ کربیٹھے۔جس کی صدائے باز گشت بھارتی آرمی چیف بپن راوت کی اس تازہ دھمکی میں سنائی دے رہی ہے کہ جس میں وہ کہتے ہیںکہ لائن آف کنٹرول پر صورتحال کسی وقت بھی سنگین ہو سکتی ہے۔ادھرافواج پاکستان کے ترجمان کاکہناہے کہ کسی فالز فلیگ آپریشن یا حملے کی کوشش کی گئی تو پاکستانی افواج تیار ہیں اور حملہ آور ہونے کی کوشش پر مناسب جواب دیا جائے گا۔ سٹیزن شپ امینڈمنٹ
جمعه 20 دسمبر 2019ء

جامعہ ملیہ اسلامیہ: آتش زیرپا

منگل 17 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
آج ایک بارپھرشیخ الہندکاموقف سرچڑھ کربول رہاہے اوربھارت کے پاس کردہ شہریت ترمیمی بل کے خلاف جامعہ ملیہ کے طلبہ برسراحتجاج ہیں۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ بھارت کے دار الحکومت نئی دہلی میں واقع ایک مرکزی یونیورسٹی ہے۔بنیادی طورپر 1920 ء میں برطانوی راج میں موجودہ دور کے اتر پردیش کے شہر علی گڑھ میں قائم کی گئی تھی۔ 1988 ء میں بھارتی پارلیمان کے ایک ایکٹ کے تحت جامعہ ملیہ اسلامیہ کو مرکزی یونیورسٹی کا درجہ ملا۔ اس کے بانیوں میں شیخ الہند مولانا محمودالحسن،مولانا محمد علی جوہر، حکیم اجمل خان تھے ،ان حضرات کا خواب ایک ایسا تعلیمی ادارہ کا
مزید پڑھیے


شہریت ترمیمی بل کے کشمیرپر ہلاکت خیز اثرات

جمعرات 12 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
بھارت کی مودی سرکارنے شہریت ترمیمی بل کو ایوان زیریں ’’لوک سبھا‘‘ میں منظورکرلیااور چنددنوں کی بات ہے کہ اسے اب ایوان بالا’’ راجیہ سبھا‘‘میں بھی علاقائی جماعتوں کے تعاون سے اسے فورا پاس کرا لیا جائے گا۔اس قانون کے تحت بھارت کے پڑوس کے مسلم ممالک پاکستان ،بنگلہ دیش اورافغانستان میں بسنے والے غیر مسلموں کو ہندوستانی شہریت دینے کی گنجائش نکالی گئی ہے۔اس کی دلیل یہ پیش کی گئی ہے کہ متذکرہ مسلم ممالک میں غیرمسلموں پر ظلم ہوتا ہے۔بل پیش اورپاس کرتے ہوئے البتہ مودی سرکاری یہ بات پس پشت ڈال گئی ہے کہ جتنے
مزید پڑھیے


خاک ہوجائیں گے ہم تم کو خبرہونے تک

منگل 10 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
کشمیرکی تحریک آزادی مشکل ترین اورکٹھن آزمائشی دور سے گزررہی ہیں ۔1990 ء میں جبر کے ماحول میں آنکھ کھولنے والی آزادی کشمیر کا مطالبہ کرنے والی کشمیر کی تیسری نسل خون آشام روز و شب میں پلی بڑھی اور تیغوں کے سائے میں جوان ہوئی۔ بھارتی فوجیوں کی دہشت اور گن گرج کے ماحول میں پیدا ہونے والی یہ نسل واضح طور پر بے خوف دکھائی دے رہی ہے۔ وہ موت کے ڈر اور ہر قسم کے دھونس اور دبائو سے صاف طور پر آزاد نظر آرہی ہے۔ ظاہر ہے اس نسل کی بے خوفی کا سبب ستم رسیدہ
مزید پڑھیے


کینڈل مارچ کی نہیں انقلابی اقد ام کی ضرورت ہے !!!

اتوار 08 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
کاغذی ریکارڈاورانتظامی کارروائی میں کشمیر کو بھارت کا علاقہ دکھانے کے باوجودیہ ایک زندہ حقیقت ہے کہ کشمیر کے مقبول جذبات میںبھارت کے روّیے اور وابستگی کے خلاف ہمیشہ کی طرح آج بھی وہی دم خم ہے۔ کشمیر میں بھارت کاطلسم ٹوٹ چکاہے ۔تاہم افسوس سے کہناپڑتاہے کہ5اگست سے 5اکتوبرپورے دوماہ تک حکومت پاکستان کاکشمیرپر’’ہاہو‘‘بڑے زورشورسے جاری رہااوراس کے بعد حکمران ٹھنڈے پڑگئے ۔یہ صرف آج کی ہی بات نہیں بلکہ ماضی میں بھی ایساہی ہوتارہاہے۔ارباب پاکستان کے بشمول پاکستان کاالیکٹرانک میڈیابھی اس تاک میں رہتے ہیں کہ کب کشمیرمیں جنازے اٹھیں اوروہ ان پربین کرناشروع کردیںحالانکہ یہ صریحاََغلط سوچ
مزید پڑھیے




تاریخی جامع مسجدسری نگر4ماہ سے مقفل!

بدھ 04 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
قابض بھارتی فوج نے مداخلت فی الدین کاایک بارپھرارتکاب کرتے ہوئے 5اگست 2019سے کشمیرکی تاریخی جامع مسجد سری نگرکومحاصرے میں لے رکھااورتام دم تحریر18جمعہ مسلسل ہوچکے ہیں کہ مسلمانان کشمیر کو مسجدمیں نمازجمعہ کی ادائیگی سے روک لیاگیاہے اس طرح گذشتہ 4 ماہ سے جامع مسجد سری نگرمیںنمازجمعہ ادانہ ہوسکی۔اسے قبل 2016ء میں بھی جامع مسجدسرنگر اس وقت4ماہ تک مسلسل مقفل رہی کہ جب برہان وانی کی شہادت کے بعد مقبوضہ کشمیرمیں عوامی احتجاجی لہر نے کشمیرپربھارتی ناجائزقبضے اوراسکے جارحانہ تسلط کو مستردکردیا۔خیال رہے جامع مسجد سرینگر کی سخت سے سخت ناکہ بندی کر دی گئی ہے اوراسے
مزید پڑھیے


کشمیر:برصغیرکافلسطین !

پیر 02 دسمبر 2019ء
عبدالرفع رسول
مسلسل120ویں روز بھی مقبوضہ وادی کشمیر میںبھارتی فوجی محاصرہ جاری ہے۔محاصرے کے اس طویل دورانیے میں ظلم وجورکی وہ کونسی قسم ہے کہ جوقابض فوج کی طرف سے اسلامیان کشمیرپرآزمائی نہ گئی ہو۔ظلم وستم کے ساتھ ساتھ بھارت کشمیرکی(Demography)تبدیل کرنے کے لئے واضح طورپر کئی طرح کے ناپاک اقدام بھی اٹھارہاہے جن میں اسرائیلی طرزکاشرمناک منصوبہ بھی شامل ہے جس پروہ عمل درآمدکرچکاہے اوربدھ27نومبر2019کوکشمیری پنڈتوں’’کشمیری ہندوئوں‘‘ اور بھارتی ہندوئوںکی ایک مشترکہ تقریب سے تقریرکرتے ہوئے امریکی شہر نیویارک میں تعینات بھارتی قونصلیٹ جنرل سندیپ چکرورتی نے اسی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ نریندر مودی حکومت مقبوضہ کشمیر میں
مزید پڑھیے


یہ سناٹااور مجرمانہ خاموشی آخرکب تک؟

جمعرات 28 نومبر 2019ء
عبدالرفع رسول
دنیا میں مسلمانوں کی مظلومیت کی ایک دلدوزمثال کشمیرہے جہاں 80لاکھ کشمیری مسلمان کڑے محاصرے میں ہیںاوراس محاصرے کے 115دن بیت چکے ہیں لیکن بھارت کی اس جارحیت کے باوجودمظلومین کشمیربھارت کے سامنے سپراندازنہیں ہورہے اورلگاتار جہد پیمائی کررہے ہیں۔مظلومیت کی دوسری المناک مثال فلسطین ہے جہاں نوجوانان فلسطین بیت المقدس اورمقدس سرزمین کی بازیابی اور اپنی آزادی کے لئے پوری حمیت کے ساتھ سینہ سپر رہتے ہیں ۔دنیا بھر میں لاکھوں مسلمان بدترین مظالم کے شکار ہو رہے ہیں ، جنہیںخصوصی کیمپوں میں جانوروں کی طرح بندکرکے تمام انسانی حقوق سے محروم رکھا گیا ہے لیکن میڈیائی
مزید پڑھیے


کشمیر۔۔۔احوال تازہ

منگل 26 نومبر 2019ء
عبدالرفع رسول
113دن بیت گئے کہ مقبوضہ کشمیر خطرناک انسانی بحران کاشکارہے اورخزاں رسیدہ خاک افتادہ پتوں کی مانندمثلے جارہے ہیں۔وہ مسلسل اوربدستوردست ِ ستم کیش اوردست تظلم کے شکارہیں ۔80 لاکھ سے زائد انسانوں کے انفرادی، اجتماعی، معاشرتی، مذہبی اور سیاسی حقوق سلب کئے جاچکے ہیں۔کڑے محاصرے کے باعث پوری وادی کشمیر ایک پنجرے کے مانند ہے جہاں جانورنہیں بلکہ انسان بندہیں ۔دنیا میں ایسا کوئی شیردل سامنے نہیں آرہا جو کشمیریوں کے دردکادرماں ثابت ہو سکے۔ ایسا کوئی ہاتھ بلندنہیںہورہا جو اس ظلم کو روک سکے۔ لیکن ایک بات روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ کشمیریوں کی نفرت
مزید پڑھیے


مسلمانوں کا ہیروعمرالیاس

پیر 25 نومبر 2019ء
عبدالرفع رسول
ناروے کے شہر کرسٹین سینڈ میں جمعرات 21نومبرکو قرآن مجید کی توہین کا افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے۔ اسلام مخالف تنظیم ’’سیان‘‘کے کارکنوں نے ریلی نکالی جس میں قرآن مجید کی شدید بے حرمتی کی گئی اور اس ساری شرمناک کارروائی کے دوران ناروے کی پولیس خاموش تماشائی بنی رہی اور تنظیم کے ملعون لیڈرلارس تھورسن کو روکنے کی کوئی کوشش نہ کی گئی۔قرآن مجید کی توہین کو وہاں موجود مسلمان نوجوان برداشت نہ کرسکے اور سبق سکھانے کے لیے ناپاک جسارت کرنے والے ملعون پر حملہ کردیا۔ ایک نوجوان عمرالیاس تمام رکاوٹیں اورپولیس حصار توڑتا ہوا آگے بڑھا
مزید پڑھیے