BN

عبداللہ طارق سہیل


خوشحالی ہر قیمت پر قبول ہے


کسی ملک کی قومی اسمبلی کو وہاں کے وزیر خزانہ نے ایک سوال پر تحریراً بتایا کہ ملک کے وزیراعظم ہائوس میں سال گزشتہ کے دوران سو ارب روپے کی چائے پی گئی۔ پی گئی سے مراد صرف پی گئی نہیں بلکہ پلائی گئی بھی اس میں شامل ہے۔ یہ خبر اس ملک کے چند ٹی وی چینلز پر ٹکر کی صورت میں ذرا کی ذرا چلی پھر یہ ٹکر غائب ہو گئے۔ اگلے روز اس ملک کے دونوں بلکہ تینوں بڑے شہروں کے اخبارات کھنگالے لیکن یہ خبر نظر نہیں آئی۔ ایسا اس ملک میں اکثر ہوتا ہے
منگل 15 جون 2021ء

زیرو لوڈشیڈنگ‘ خوشحالی بجٹ

پیر 14 جون 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیراعظم نے قوم کو خوشحالی والا بجٹ دیا لیکن کمال ہے بلکہ افسوس ہے کہ اپوزیشن اسے عوام دشمن بجٹ کہہ رہی ہے۔ ایک لیڈر نے کہا کہ یہ عوام پر حملہ ہے‘ دوسرے نے کہا کہ عوام سے دشمنی کی گئی۔ بجٹ دیکھنے سے معلوم ہوتا ہے کہ اپوزیشن بلاوجہ کی الزام تراشی کر رہی ہے ورنہ بجٹ میں تو ہر طرف خوشحالی ہی خوشحالی ہے۔ تنخواہیں ہی دیکھ لیجئے‘ پورے دس فیصد کا اضافہ نعمت غیر مترقبہ سے کم نہیں۔ غیرمترقبہ اس لیے کہ تین سال سے نہ تنخواہ بڑھی نہ الائونس اور مہنگائی بڑھتے بڑھتے یہاں تک
مزید پڑھیے


ٹیکس چور قوم سکول اور ہسپتال مانگتی ہے!

پیر 07 جون 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
پیپلزپارٹی کے رہنما بلاول بھٹو زرداری نے بتایا کہ عمران خان حکومت نے بجٹ میں کم آمدنی والے طبقے کو نشانہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ بلاول نے یہ بات تنقیدی رنگ میں کہی لیکن اس میں غلط کیا ہے۔ ایثار اسی سے مانگا جاتا ہے جو ایثار کرسکتا ہو اور پاکستان میں غریب اور کم آمدنی والا طبقہ ہی ایثار کرتا آیا ہے۔ ماضی کی حکومتوں نے غریب طبقے پر اتنی زیادہ توجہ نہیں دی۔ یہ اعزاز عمران خان کو ہی جاتا ہے کہ اس نے ایثار مانگنے کے لیے غریب طبقے کو پوری طرح چن لیا۔ عمران خان نے
مزید پڑھیے


کیلکولیشن

منگل 01 جون 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
زبان کی پھسلن پی ٹی آئی کا ’’ھال مارک قسم کا ٹریڈ مارک‘‘ ہے اور یہ راز ہنوز تشنۂ افشا ہے کہ آخر کیا وجہ ہے کہ اس جماعت کے بڑے سے لے کر چھوٹے تک‘ ہر ایک رہنماکی زبان مہینے دو مہینے میں ایک بار ضرور پھسلتی ہے۔ جرمنی جاپان بارڈر سے لے کر بارہ موسموں تک‘ قائد اعظم کی ’’کمبائنڈ انڈیا‘‘ کے لئے جدوجہد سے لے کر پام آئل سے بجلی سازی تک ’’پھسلاھٹوں‘‘ کی تعداد اتنی زیادہ ہے کہ ایک پوری تنصیف ’’کتاب الاذ کیاء جدید‘‘ کے نام سے منصہ شہود پر آ سکتی ہے۔ ابھی
مزید پڑھیے


اے الٰہ دین کے چراغ……!

پیر 31 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
اسد خوشی سے میرے ہاتھ پائوں پھول گئے،وزیر اعظم کی یہ خوش کن اطلاع سن کر کہ انہوں نے فرمایا، اللہ کا شکر ہے، ہم مشکل دور سے نکل آئے اور ملک کو معاشی استحکام دے دیا۔ ویسے اکثر لوگوں بلکہ اکثر سے زیادہ لوگوں کا خیال ہے کہ ملک مشکل دور سے بہت پہلے کا نکل چکا ہے۔ عمران حکومت کے سو دن پورے ہوتے ہی معاشی استحکام آنا شروع ہو گیا تھا، جو سال بھر اور مستحکم استحکام کی شکل اختیار کر چکا تھا۔ دوسرے سال کے پورا ہوتے ہوتے یہ استحکام مستحکم ترین ہو چکا تھا۔ یہ تیسرا
مزید پڑھیے



کاز کا ارتقا

منگل 25 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
کاز یعنی اصول اور مقصد بھی نظریہ ارتقاء کے تحت اپنی شکل بدلتا رہتا ہے۔ سچ پوچھیے تو یہ ایولوشن سے زیادہ Law of Decayکے دائرہ میں نظر آتا ہے۔ فلسطینی کاز اس کی دردناک مثال ہے اور اس کاز کے ’’ارتقا‘‘ میں اپنوں اور غیروں‘ سبھی نے حصہ لیا ہے۔ قدرت کا ’’لا آف ڈیٹرمنیشن‘‘ شاید انہی عناصر سے عبارت ہے جو فلسطینی کاز کو گھیرے ہوئے ہیں۔ فلسطین حضرت عمرؓ کے دور سے انگریز وںکے دور تک‘ تیرہ سو سال کے سارے عرصے میں فلسطینیوں کا حصہ رہا۔اسرائیل تو رومن دور ہی میں غتربود ہو کر قصہ ماضی
مزید پڑھیے


کورونا فنڈ مریم کھا گئیں

پیر 24 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
غزہ آپریشن پر تبصرہ کرتے ہوئے اسرائیل کے اخبار نے لکھا ہے کہ اس حملے کی وجہ سے دنیا بھر میں یہودیوں سے نفرت عروج پر پہنچ گئی ہے۔ ایک اور اسرائیلی ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکہ اور یورپ میں یہود مخالف Anti semeticواقعات میں 438فیصد یعنی لگ بھگ ساڑھے چار گنا اضافہ ہو گیا ہے۔ اسرائیل کے ایک اخبار ہارٹیز کے اداریے میں لکھا گیا ہے کہ ہم نے غزہ میں تباہی اور بربادی تو پھیلا دی لیکن اسرائیلیوں کی زندگی بھی (حماس کے حملوں نے) تہس نہس کر دی۔ خونریزی کا نیا دور بھی ختم ہوا اور دونوں
مزید پڑھیے


امریکہ پر اعتماد رکھیں

بدھ 19 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
محشرستان فلسطین کی خبریں کچھ یوں آئی ہیں۔ بمباری کا آٹھواں روز‘ مرنے والوں کی تعداد سواسو ہو گئی‘ ساٹھ بچے بھی شہداء میں شامل۔ یعنی جو بھی مرا اس نے گنتی کے کل سکور میں اضافے کے لیے ایک سکور بنایا۔ خبر یہ بھی تھی کہ بمباری سے تمام گھر والے شہید‘ دس کے دس مارے گئے۔ مطلب ایک چھکا اور ایک چوکا بھی آ گیا‘ سکور ایک دم بڑھ گیا۔ جو مر گیا‘ وہ یہ احتجاج بھی نہیں کرسکتا کہ میری ذات کی ہستی‘ میرے وجود کی نفی کر کے مجھے ایک نمبر کیوں بنا دیا گیا ہے۔ مرنے والے
مزید پڑھیے


عید ‘عید اور عید

پیر 17 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل
اس عید پر فلسطینی بچوں کو موت کی عیدی ملی یا پھر زخموں کی۔ عید پر ان کے گھر سجائے نہیں گرائے گئے۔ بہتوں کو یتیمی کا تحفہ ملا اور ان کی بستیاں مٹی اور ملبے کا ڈھیر بنا دی گئیں۔ پوری دنیا نے موت کے رقص کو دیکھا اور داد دی۔ مدد کے لئے کوئی نہیں آیا۔کہنے کو 52اسلامی ملک ہیں لیکن سب کو اپنی پڑی ہے اور فلسطین پرایا قضیہ ہے۔اپنی نبیڑ تو والا رویہ سرچڑھ کر بول رہا ہے۔ تین چار دنوں میں ڈیڑھ سو سے زیادہ فلسطینی شہید ہوئے اور سینکڑوں زخمی۔ اتنی عمارتیں گرائی گئیں کہ
مزید پڑھیے


مہربانی۔نقد نہیں‘ادھار

منگل 11 مئی 2021ء
عبداللہ طارق سہیل

ہر خبر کا ردعمل دوسری خبر ہوتا ہے۔چنانچہ خبر یہ ہے کہ آئی ایم ایف نے پاکستان سے اپنے معاہدے پر نظر ثانی کرنے سے انکار کر دیا ہے جس کی طرف نئے (تاحال) وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا تھا۔ چنانچہ ردّعمل کے طور پر ’’خبر آئی ہے کہ بجلی کے نرخوں میں 93پیسے فی یونٹ کا اضافہ کر دیا گیا ہے۔ ویسے بدخواہ عناصر تو یہی کہیں گے کہ آئی ایم ایف مان جاتا تب بھی بجلی کے نرخ بڑھنے ہی تھے کہ حکومت کو بجلی مہنگی کر کے مزا لینے کی عادت پڑ گئی ہے اور یہ
مزید پڑھیے








اہم خبریں