BN

عبداللہ طارق سہیل



دونوں طرف سے دھمکی!


اندازے یہی آ رہے تھے کہ نریندر مودی بھارت کا عام الیکشن یا تو ہار جائیں گے یا پھر بہت کم مارجن سے جیتیں گے اور حکومت بنانے کی پوزیشن میں نہیں آ سکیں گے۔ پھر یہ پلوامہ کا واقعہ ہوگیا اور گویا مودی کی کشت نیم ویراں میں بہار کا جھونکا آ گیا۔ پلوامہ میں فوجی قافلے پر خودکش حملہ کرنے والا مقبوضہ کشمیر کا نوجوان لڑکا تھا جس کی ماں نے بتایا کہ بھارتی فوج نے اس پر اتنا ظلم کیا کہ وہ فدائی بن گیا لیکن بھارت کہتا ہے کہ حملہ پاکستان سے ہوا۔ مقبوضہ وادی کے
پیر 18 فروری 2019ء

جدے کو بنی گالے سے…!

جمعه 15 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
دفتر خارجہ کے ترجمان نے ٹھیک وضاحت کی لیکن قطعی بے ضرورت۔ کہا، یمن کی جنگ میں پاکستان کو دھکیلنے کی کوئی سازش نہیں ہو رہی۔ ترجمان کا گمان ہو گا کہ کہیں کوئی سازش کا نہ سوچ رہا ہو لیکن ایسا تو کوئی بھی نہیں سوچ رہا۔ جو بھی ہے، ہاتھ کنگن کو آرسی کی طرح ہے۔ حالات ہوں یا واقعات، جو بھی ہے سب کے سامنے ہے، خلاصہ یہ ہے کہ بے خطر آتش نمرود میں کود پڑنے کا وقت آ گیا ہے۔ یمن کی صورتحال یہ ہے کہ پانچ برس ہونے کو آئے، اسلامی فوج صنعا سے ہنوز
مزید پڑھیے


اسے چوری نہیں کہہ سکتے

جمعرات 14 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
آئی ایم ایف کی سربراہ سے کامیاب مذاکرات کر کے وزیر اعظم فاتحانہ وطن لوٹے تو حاسدین تکلیف میں مبتلا ہو گئے اور اس بات پر تنقید شروع کر دی کہ وزیر اعظم کیوں ملے، آج تک کوئی وزیر اعظم ایسے مذاکرات کے لیے نہیں گیا، خان صاحب نے جا کر اس طرح ملاقات کر کے ملک کی سبکی کرا دی ہے۔ سبکی کہاں بھلے لوگوں، وطن کی شان بلند کرائی ہے۔ دیکھتے ہیں دنیا بھر میں ہمارے وطن کی کیسی مشہوری ہوئی ہے۔ کم و بیش سارے ہی عالمی اخبارات نے ’’مانو یا نہ مانو‘‘(Believe it not)کے انداز میں یہ
مزید پڑھیے


کیتھولک۔ قربت کی راہیں

بدھ 13 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
اس مہینے کی پانچ تاریخ کو ایک منفرد واقعہ ہوا۔ رومن کیتھولک مذہب کے پیشوا پوپ فرانسیس نے ابوظہبی کا دورہ کیا اور ایک عالمی مذہبی امن کانفرنس سے خطاب کیا جس میں 22مذاہب اور مذہبی فرقوں کے رہنما شریک تھے۔ جناب فرانسس پہلے پوپ ہیں جو عربستان آئے۔ ان سے آٹھ سو سال پہلے کے پوپ نے بھی ایک عرب ملک کا دورہ کیا تھا لیکن وہ مصر تھا‘ جو عرب ملک تو ہے پر افریقہ میں ہے‘ عربستان میں نہیں۔ اتفاق دیکھیے ان پوپ صاحب کا نام بھی فرانسس تھا۔پوپ نے فرمایا‘ دنیا کو امن کی ضرورت ہے۔
مزید پڑھیے


خفیہ مفاہمت

منگل 12 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
دن گنے جاتے تھے جس دن کے لیے۔ آخر آئی ایم ایف سے مفاہمت ہو گئی اور ہونا ہی تھی۔ کتنے دنوں سے پس پردہ ’’تعاون‘‘ چل رہا تھا۔ خبر ہے کہ کیا طے ہوا۔ یہ بات خفیہ رکھی جائے گی۔ خفیہ رکھنے کی درخواست کس فریق نے کی ہوگی؟ خود اندازہ فرما لیجئے۔ خفیہ لیکن کب تک خفیہ رہے گا۔ ایک دن باہر آ ہی جائے گا۔ ایک بات کا پتہ چلا ہے کہ 230 ارب روپے کے ٹیکس عوام کی جیب سے نکالے جائیں گے۔ بدلے میں صرف چھ ارب ڈالر ملیں گے۔ نشانیاں البتہ نمودار ہورہی ہیں،
مزید پڑھیے




گیس کہاں گئی؟

پیر 11 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حکومت نے ڈیل اور ڈھیل کا اتنا غل مچایا کہ اسی کے پیدا کردہ بحرانوں کے شور سے توجہ ہٹ گئی ہے۔ شاید غل کا مقصد بھی یہی ہے اور ایسا ہے تو اعتراف کیجئے، حکومت ایک بار پھر ’’کامیاب‘‘ ہے۔ ڈیل اور ڈھیل نہ دینے کی لنترانیوں پر تبصرہ کرتے ہوئے اپوزیشن کے ایک لیڈر نے کہا ہے کہ ایسے معاملات میں وزیراعظم کا کوئی اختیار نہیں ہوتا اور کیوں اتنا شور کر رہے ہیں۔ اپوزیشن ہی کے ایک اور لیڈر نے کہا ہے کہ پرائم منسٹر کو عوام پر مسلط کیا گیا ہے۔ عرض ہے کہ وزیراعظم کو شور
مزید پڑھیے


نیب کا ’’بامقصد‘‘ فرینڈلی فائر

جمعه 08 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
پنجاب کے سینئر وزیر علیم خاں کی گرفتاری پر کوئی کچھ بھی کہے‘ یہ نیب کے فرینڈلی فائر کے سوا کچھ نہیں۔ اس ’’فرینڈلی‘‘ کا رروائی کا مقصد کیا ہے‘ اس پر اختلاف ہو سکتا ہے اور ہے۔ بعض کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ بزدار نے خاں صاحب کو ایک پرزور اور پر درد اور حتمی شکایت کی تھی کہ مجھے یہ صاحب چلنے نہیں دے رہے اور میرے بارے میں گفتہ بہ اور ناگفتہ بہ کہانیاں انہی کی وجہ سے چل رہی ہیں چنانچہ اس وقت علیم خان کی گرفتاری کا فیصلہ ہو گیا اور یہ عارضی ہے۔
مزید پڑھیے


کمالاتِ جام

بدھ 06 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
عالمی معاشی ایجنسی کی رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے مسلم لیگ کے ترجمان نے عجب متضاد فقرہ کہہ دیا۔ عالمی ایجنسی سٹینڈرڈاینڈ پؤرز کا کہنا تھا کہ پاکستان کا معاشی مستقبل خطرے میں ہے اور حالات بہتر ہونے کے فوری امکانات ختم ہو گئے۔ ساتھ ہی ایجنسی نے پاکستان کی ریٹنگ کی منفیت کو دوبالا کرتے ہوئے اسے بی کیٹگری میں شامل کر دیا۔ اس پر تبصرہ کرتے ہوئے مسلم لیگ کے ترجمان نے کہا کہ یہ عمرانی حکومت کی نااہلی اور نالائقی کی چارج شیٹ ہے ساتھ یہ بھی کہا کہ عمرانی حکومت جان بوجھ کر ملکی معیشت کو تباہ
مزید پڑھیے


افغانستان میں کایا کلپ

منگل 05 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
یقین کیجئے ‘رومن امپائر کے شاہ معظم جب بھی اپنی قلمروکے صوبائی دارالحکومت کے دورے پر تشریف لاتے ہیں تو ان کے پروٹوکول کا جاہ و چشم‘ ان کے ’’روٹ‘‘ لگنے کے تام جھام اور شاہی سواری گزرنے کے لرزہ براندام کرنے والے مناظر دیکھ کر دل باغ باغ ہو جاتا ہے کہ اس بھری دنیا میں اور کون ہے جو اس باب میں ہمارے وطن کی ہمسری کر سکے۔ کہاں وہ ’’الیکٹڈ‘‘ دور کے بے حیثیت وزیر اعظم چپ چاپ دورہ کرتے تھے کہ اس کا علم اگلے روز اخبار پڑھ کر ہی ہوتا تھا۔ کہاں یہ دور کہ
مزید پڑھیے


کل مہنگائی 20 روپے کی!

پیر 04 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حکومت نے حج پر سبسڈی ختم کردی، اچھا کیا۔ بہت سے لوگوں اور علما اور سیاستدانوں نے اس کی مذمت کی، برا کہا۔ دیکھئے جناب، سرکار میں بقول علما اور دانشور بھی فتوے سامنے لے آئے کہ سرکاری خرچے سے حج حرام ہے۔ اسے آپ یادداشت کی واپسی بھی کہہ سکتے ہیں اور یہ بھی کہہ سکتے ہیں کہ عمران سرکار کا فیض ہے کہ ان مقبول دربار سرکار علما دانشوروں کی یادداشت واپس آ گئی۔ اتنے برسوں سے یہ حرام کام جاری تھا، یہ حضرات مسئلہ بھولے ہی رہے، ادھر سرکار نے اس پر پابندی لگائی، ادھر ان کی
مزید پڑھیے