BN

عبداللہ طارق سہیل



جہاد بالغنا


بہت قابل تعریف بات ہے کہ حکومت کی کشمیر پالیسی واضح ہوتی جا رہی ہے بلکہ واضح ہو گئی ہے۔ ہم بھارتیوں کو نغماتی مار ماریں گے یعنی جہاد بالغنا ؎ او بلما جا جا جا اب کون تجھے لے جائے تو خود ہی جا جا جا راگ راگنیوں کی مار‘ فن کا وار بہت کڑا ہوتا ہے۔ ملہار گائو تو سونامی آ جاتا ہے۔ دیپک گائو تو الائو بھڑک اٹھتا ہے۔ ہم نے ’’راگ بھاگ بھارتی‘‘ کا جادو جگانے کا بروقت اوربرحق فیصلہ کیا ہے۔ مظفر آباد میں وزیر اعظم کا پروگرام دل دہلا دینے والی چتائونی تھا۔ فنکاروں
پیر 16  ستمبر 2019ء

کرش ویڈیو

جمعه 13  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
دجالی فتنہ کیا ہے‘ اس کی علامات کیا ہیں‘ مقصد کیا ہے‘ طریقہ کار اور میکنزم کیا‘ اس پر بے پناہ مواد دستیاب ہے۔ خدا بھلا کرے بھارتی سکالر اسرار عالم کا ہزار ہا صفحات کا مواد تو تنہا انہی نے دیا۔ سائنس ‘ تاریخ ‘ علم الاقتصاد کے لئے بے پناہ مطالعے کا نچوڑ اور معاصر سرگرمیوں کی جامع تصویر ان کی تحریروں میں مل جاتی ہے۔ پھر عرب وہند، امریکہ اور یورپ کے جدید مسلمان سکالرز نے بھی محنت کی۔ اور قیمتی سمعی و بصری مواد جوڑا۔ اس فتنے کا اثر بلکہ جکڑ بندی کس شعبے میں نہیں ہے۔
مزید پڑھیے


خوش آمدید محترم ڈینگی

منگل 10  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
یہ بات شیکسپئر نے تو نہیں، کسی اور نے کہی ہو گی کہ نج کاری کو کسی بھی نام سے پکارو، وہ نج کاری ہی رہے گی۔ پنجاب میں سرکاری ٹیچنگ ہسپتالوں کے بارے میں جو غریب پرور آرڈیننس آیا ہے، اس پر حکومتی ترجمان نے کہا ہے کہ یہ نج کاری نہیں، حالات بہتر بنانے کا اقدام ہے۔ حالات بہتر بنانے سے مراد وہی ’’غریب‘‘ پروری ہے۔ ہسپتالوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میںنجی لوگ لگائے جائیں گے۔ اس غریب پروری سے ان کے حالات بہتر ہو جائیں گے۔ تو یہ نج کاری ہی ہے۔ تم کوئی اچھا سا رکھ لو
مزید پڑھیے


مرزا غالب بے قصور

پیر 09  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
خبر ہے اکیڈمی آف لیٹرز کی گیلری سے مرزا غالب ‘ فیض احمد فیض اور احمد فراز کی تصاویر ہٹا دی گئی ہیں۔ باقی دو کی تو ٹھیک لیکن مرزا غالب کی تصویر کیوں ہٹا دی؟ اس سے پہلے ایک انڈر پاس سے پروفیسر وارث مرحوم کے نام کی تختی بھی اکھاڑ پھینکی گئی تھی جس کا جملہ محب وطن حلقوں نے خیر مقدم کیا تھا کیونکہ مرحوم حریت فکر‘ انسانی حقوق اور جمہوری بالادستی جیسے خیالات پرایمان رکھتے تھے اور یہ نظریات پھیلایا بھی کرتے تھے۔ وہ تو خیر ہوئی کہ مرحوم وفات پا گئے ورنہ سنگین غداری کے
مزید پڑھیے


کشمیر موجود‘ مسئلہ غائب

جمعه 06  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
سعودی عرب اور امارات کے وزرائے خارجہ کی پاکستان آمد‘ وزیر اعظم اور وزیر خارجہ سے ملاقات کے بعد جو مشترکہ اعلامیہ جاری ہوا اس میں کشمیر کا ذکر تو ہے‘ مسئلہ کشمیر کا ذکر غائب ہے۔ حیرت کی بات ہے کہ نہیں؟ اعلامیے میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش ظاہر کی گئی۔ یعنی وہاں انسانی حقوق اور بھارتی جبر و تشدد کی صورتحال۔ تین ہفتوں سے زیادہ لمبا لاک ڈائون‘ اس پر تشویش‘ مسئلہ کشمیر کدھر گیا؟ مسئلہ کشمیر ہے کشمیر کی آزادی‘ حق خود ارادیت‘ اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق ماضی قریب تک مسئلہ کشمیر کی یہی تشریح
مزید پڑھیے




زرداری کا ٹکا سا جواب

جمعرات 05  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
جماعت اسلامی نے کہا ہے کہ کشمیر پر حکومتی بیانات سے الجھائو بڑھ رہا ہے۔کہاں کا الجھائو حضور‘ یہاں تو سلجھائو ہی سلجھائو ہے۔ اکثر نے بات سمجھ لی اور چپ سادھ لی۔ جماعت کو سمجھ میں نہیں آئی تو وزیر اعظم کا تازہ فرمان پڑھ لیں۔ صاف لفظوں میں کہا ہے کہ ہم جنگ میں پہل نہیں کریں گے۔ بات کرسٹل کلیئر ہوئی کہ اب بھی الجھائو ہے؟ ہم پہل نہیں کریں گے‘ بھارت کو ضرورت ہی نہیں ہے۔ اس نے اپنا الّو وائٹ ہائوس کے ’’کیمپ ڈیوڈ‘‘ میں سیدھا کر لیا۔ بات ختم۔ تھوڑا سا مسئلہ انسانی حقوق
مزید پڑھیے


نیب کا نادر روزگار جادو

بدھ 04  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
نیب نے جادو کر دکھایا۔ اس کی شبانہ روز اور ان تھک کوششوں سے کرپشن کی عالمی رینکنگ میں پاکستان کا درجہ 175سے 116واں ہو گیا ہے۔ نیب نے اخبارات میں نمایاں طور پر خبر چھپوائی ہے۔ گویا مختصر عرصے میں پاکستان ایمانداری کی 59سیڑھیاں چڑھ گیا، یا بدعنوانی سے 59سیڑھیاں نیچے اتر آیا۔ کمال ہے اور بے مثال کمال ہے۔ آپ کی مرضی، اسے جادو کہہ لیں یا معجزہ۔ ہاں، بس ایک سوال ے جو جادو کے اس چیستان کے حل ہونے کی راہ میں رکاوٹ ہے۔ وہ یہ کہ ٹرانسپرنسی کے اس انڈکس میں جسے سی پی آئی(کرپشن پرسیپشن
مزید پڑھیے


تشریحات رشید اور اصل کہانی

منگل 03  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
شیخ رشید نے دو تین اہم خبریں بریک کی ہیں۔ فرمایا ہے کہ آصف زرداری کے ساتھی رقم واپس کرنے پر تیار ہو گئے ہیں اور اگر نواز شریف یا ان کے ساتھی بھی رقم دینے پر آمادہ ہو جائیں تو ان کی بات بھی بن سکتی ہے۔ ان کی بات بھی بن سکتی ہے۔ یعنی آصف زرداری کی بات بن گئی ہے یا بننے والی ہے۔ پیپلز پارٹی کے ذرائع اس سے اتفاق نہیں کرتے۔ ان کا کہنا ہے کہ کیسی رقم ؟‘ کسی رقم کی واپسی کا وعد ہ نہیں کیا گیا۔ ویسے بات رقم واپس کئے بغیر بھی
مزید پڑھیے


جنگ آپشن نہیں۔ پھر یہ ہنگامہ ؟

پیر 02  ستمبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
یمن کی جنگ میں غضب کا موڑ آیا ہے۔ صدر ہادی کی حکومت دوسری مرتبہ بے دخل ہو گئی۔ پہلے حوثیوں نے صنعا سے نکالا۔ اب ’’اسلامی فوج‘‘ نے بندر گاہی شہر عدن سے نکالا دیا۔ جی اسلامی فوج دھڑے بند ہو گئی ہے۔ متحدہ عرب امارات نے پورے عدن پر قبضہ کر کے سعودی اتحادیوں کو صدر ھادی سمیت نکال باہر کیا ہے اور یہ کوئی کل کی خبر نہیں۔ اسلامی فوج کے دو دھڑوں میں گھمسان کی جنگ مہینہ بھر پہلے شروع ہوئی۔ اماراتی دھڑے نے عدن کے کچھ حصوں پر قبضہ کیا‘ بہت سے سعودی اتحادی مارے گئے
مزید پڑھیے


جنگ نہیں‘ دھرنا

جمعه 30  اگست 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
شیخ رشید نے کہا ہے کہ وہ نومبر میں پاک بھارت جنگ دیکھ رہے ہیں، تشبیہ اور استعارے کی زبان ہے۔ دراصل وہ نومبر میں مولانا فضل الرحمن کا مارچ اور دھرنا دیکھ رہے ہیں۔ وہ اور ان کی حکومت خود کو پاکستان اور اپوزیشن کو بالخصوص مولانا کو بھارت سمجھتی ہے اور بھارت کو پھر کیا سمجھتی ہے؟ وہی جو امریکہ نے سمجھنے کو کہا ہے۔ شیخ جی کو پتہ ہے کہ پاک بھارت جنگ کا ایک فیصد امکان بھی نہیں۔ جنگ نہ ہونے کا ضامن امریکہ ہے۔ وہی امریکہ جس نے کشمیر کے معاملے کو حتمی شکل دلوائی۔ لیکن
مزید پڑھیے