BN

عبداللہ طارق سہیل



مصنوعی اور اصلی شاہی محل


رات ایک ٹی وی پروگرام میں خاں صاحب کو مشورہ دیا گیا کہ وہ اپنی ساری ٹیم ہی بدل ڈالیں کہ ساری ٹیم ہی نالائق ہے۔ لیکن ایسے مطالبات کرنے والے ایک بات نہیں جانتے یا اسے نظر انداز کر رہے ہیں اور وہ یہ کہ یہ سارے خود ان کا حسن انتخاب ہیں اور سارے جس ’’وژن‘‘ کو آگے بڑھا رہے ہیں‘ وہ خاں صاحب ہی کا وژن ہے۔ کوئی چاہے تو تردید کر دے اور بتا دے کہ نہیں‘ وژن کسی اور کا ہے‘ نام البتہ خاں صاحب کا ہے اور یہ کہ انتخاب بھی خاں صاحب
جمعه 19 اپریل 2019ء

بلاول کا انتباہ

جمعرات 18 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
آپ نے زندگی میں بہت سی‘ بہت ہی عجیب خبریں پڑھی ہوں گی لیکن یقین کیجئے‘ ایسی عجیب و غریب خبر پہلے شاید ہی پڑھی ہو گی جو کل اخبارات میں چھپی۔ خبر میں بتایا گیا ہے کہ وزیر منصوبہ بندی اور ترقی نے ٹیکس محصولات بڑھانے کے لئے 40کروڑ ڈالر کا غیر ملکی قرضہ لینے کی منظوری دی ہے۔ خبر میں لکھا ہے کہ وزیر صاحب کے بقول یہ قرضہ لینے سے ٹیکس دہندگان کی تعداد دوگنی ہو جائے گی۔ کیا یہ کوئی سائنسی دریافت ہے؟ اگر ہے تو اسے بھی اتنی ہی اہمیت ملنی چاہئے جتنی ’’بلیک ہول‘‘ کے
مزید پڑھیے


چھترول کا ریلیف

بدھ 17 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر مملکت شہریار آفریدی کے اس انکشاف پر یار لوگ سر دھن رہے ہیں کہ ان کے وزیر اعظم نے حال ہی میں ایران کے صدر ہاشمی رفسنجانی سے فون پر بات کی ہے۔ رفسنجانی کو مرحوم ہوئے دو سال گزر گئے؛چنانچہ ان کے انکشاف کو لطیفہ سمجھا جا رہا ہے لیکن یہ سچ بھی تو ہو سکتا ہے۔ بنی گالہ روحانی علوم و معارف کا سرچشمہ ہے۔ ابن عربی اور مولانا روم بھی یہاں پانی بھرتے ہیں۔ کیا عجب، خان صاحب نے حاضرات ارواح کا عمل کیا ہو اور رفسنجانی کو طلب کر کے بات کر ڈالی ہو۔ افسوس
مزید پڑھیے


ایوب خان …تھوڑی سی تحدیث نعمت

منگل 16 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
غالباً یہ 1974ء کا سال تھا جب ایوب خاں پرلوک سدھارے۔ گویا نصف صدی(تقریباً) ہونے کو آئی اور تب سے اب تک کسی کو ان کی یاد آئی نہ ان کے محاسن کی لیکن اب یک لخت آسمان نے ایسا رنگ بدلا کہ ان کی وہ خوبیاں جو ایک سربستہ راز تھیں۔ عیاں ہونے لگی ہیں۔ ٹی وی چینلز پر کم از کم دو پروگرام ان کی مدح میں ہو چکے اور سوشل میڈیا پر بھی تین یا چار صادق و امین حضرات نے موصوف کی کردار افروزی کی سعی فرمائی ہے۔ ان پانچوں چھٹیوں صدقاً و امناً کا تعلق
مزید پڑھیے


باری کی قطار لمبی ہے

پیر 15 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
گرمیوں میں چیزیں پھیلتی ہیں لیکن نیب کا موسم الگ ہے۔ یہاں گرمیوں میں بھی سکڑائو ہوتا ہے۔ چند روز پہلے کی بات ہے کہ شہباز شریف فیملی کے خلاف نیب نے 85ارب روپے کی منی لانڈرنگ کا کیس ٹھوس شواہد کے ساتھ پکڑا۔ خوب دھوم مچی کہ لو جی پنجاب میں بھی ڈاکٹر عاصم جیسا کیس نکل آیا۔ محب وطن اینکرز نے جوش و عقیدت کے ساتھ پروگرام کئے اور بتایا کہ نیب نے رعایت کی ہے‘ منی لانڈرنگ کی اصل مالیت سو ارب روپے ہے(مبلغ15ارب کی رعایت) ۔وزیر اطلاعات کے بیان نے بھی محب وطن اینکرز کی تائید
مزید پڑھیے




مسئلہ کشمیر تحلیل کے لئے تیار

جمعه 12 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر اعظم نے بھارتی انتخابات میں نریندر مودی کی کامیابی کے لئے نیک خواہشات ظاہر کی ہیں اور کہا ہے کہ وہ جیت گئے تو مسئلہ کشمیر کے حل میں مدد ملے گی ع ہائے کس بت کی پرستش میں گرفتار ہوئے اور مودی نے بھی نیک خواہشات کا نیک جواب دینے میں دیر نہیں کی۔ بلاتاخیر فرمایا‘ مسئلہ کشمیر ویسا ہی حل کریں گے جیسے حیدر آباد دکن اور جونا گڑھ کے مسئلے حل کئے تھے۔ دونوں ریاستوں پر بھارت نے بزور قبضہ کیا ‘ انہیں ضم کیا اور دنیا سے یہ قبضہ جائز تسلیم
مزید پڑھیے


قیامت نہیں آئے گی

جمعرات 11 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
ہر شے کی قیمت کو آگ لگی ہوئی ہے تو گوشت کا کیا قصور‘ وہ کیوں پیچھے رہے‘ چنانچہ وہ بھی مہنگا ہو گیا۔ شیخ جی نے کہ ریلوے کے کریا کرم کے وزیر ہیں‘ بجا فرمایا کہ گوشت مہنگا ہونے سے کوئی قیامت نہیں آ جائے گی۔ کوئی بدگمان یہ نہ سمجھے کہ شیخ جی نے اس طبقے کا یہ مذا ق اڑایا ہے،عرف عام میں جسے عوام کہا جاتا ہے، اگرچہ اشرافیہ کا نمائندہ ہونے کی حیثیت سے انہیں یہ مذاق اڑانے کا حق ہے لیکن انہوں نے یہ حق استعمال نہیں کیا‘ صرف حق بات کہی ہے۔ ہر
مزید پڑھیے


پھر ایسی برسات ہوئی

بدھ 10 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
گزشتہ روز وزیر خزانہ نے ایک محفل میں طویل خطاب فرمایا جو ’’لائیو‘‘ نشر ہوا یوں ساری قوم مستفید ہوئی۔ خاصی طویل تقریر تھی۔ وزیر موصوف نے بڑی محنت سے وہ ساری باتیں قوم کو سمجھانے کی کوشش کی جو ابھی خود ان کی اپنی سمجھ میں بھی نہیں آئیں۔ بہرحال جو کچھ لوگوں کی سمجھ میں آیا۔ اس کا لب لباب یہ تھا کہ کارکردگی دکھانے کے لئے مزید ڈیڑھ دو سال کی مہلت دی جائے۔ گویا تیسری بار توسیع مانگ لی۔ پہلی مدت کا تعین خود حکومت نے کیا تھا اور اعلان نما وعدہ کیا تھا کہ سو روز
مزید پڑھیے


بے ذمہ داری

منگل 09 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
چلیے ایک مسئلہ تو حل ہوا‘ منی لانڈرنگ ختم کرنے سے جان چھوٹی۔ وزیر اعظم نے وجہ بتا دی۔ سپریم کورٹ نے حدیبیہ کیس کا فیصلہ میرٹ پر کیا ہوتا تو منی لانڈرنگ ختم ہو جاتی۔ آپ پانچ سال تک اس خیال میں رہے اور اسی کی بنیاد پر یہ دعوے کرتے رہے کہ حکومت میں آتے ہی منی لانڈرنگ ختم کر دوں گا۔ آپ کا فرمانا تھا کہ روزانہ کئی ہزار ارب روپے کی منی لانڈرنگ ہوتی ہے۔ حکومت میں آنے کے آٹھ نو ماہ بعد آپ کو پتہ چلا کہ حدیبیہ کا فیصلہ چونکہ میرٹ پر نہیں ہوا
مزید پڑھیے


شاہنامے میں ترمیم

پیر 08 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
شاہنامے لکھنے والے حضرات اب تک تو یہی بتاتے تھے کہ والا حضور کوہ نور ہیں۔ اور ساتھی ان کے سب درخشاں لال اور نگینے ہیں۔ لیکن لگتا ہے برآمد شدہ نتائج کے بعد قصیدوں کے مضمون میں ذرا سی ترمیم کرنا پڑی ہے۔ کچھ دنوں سے وہ یہ بتا رہے ہیں کہ والا حضور خود توبدستور کوہ نور ہیں لیکن ان کے سارے ساتھی نکمے اور نالائق ہیں۔ بعض نے تو انہیں کرپٹ بھی قرار دے دیا ہے اور والا حضور سے کہا ہے کہ انہیں خود سے دور کریں۔ ایک شاہنامہ نویس نے تو اب تک کے قصائد
مزید پڑھیے