BN

عبداللہ طارق سہیل



جماعت اسلامی کا قدمِ نو‘ نظمِ نو


اپوزیشن کا میدان بڑی جماعتوں کے وجود سے تقریباً خالی ہے۔ مسلم لیگ ن سمٹ کر شاہد خاقان عباسی اور رانا ثناء اللہ تک محدود ہو گئی ہے اور نیب کو ان کے خلاف کارروائی کی ہدایت بھی مل گئی ہے چنانچہ جلد ہی ان کے خلاف کارروائی متوقع ہے۔ پیپلز پارٹی سندھ تک محدود ہے اور بلاول بھٹو اعلان کے باوجود پنجاب نہیں آ رہے۔ حکومت کو تاریخ ساز لوٹ مار کے لئے فری ہینڈ مل گیا ہے۔ ہر وزارت سے طرح طرح کی ناقابل اشاعت خبریں گشت کر رہی ہیں لیکن چونکہ وہ ناقابل اشاعت ہیں اس
پیر 29 اپریل 2019ء

’’شائستہ کلامی‘‘

جمعه 26 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
صاحب نے وانا میں دوران تقریر بلاول بھٹو کو صاحبہ کہہ کر ایسا کیا نیا کر دیا کہ ہر طرف طوفان ملامت آ گیا۔ وہ تو شروع ہی سے ایسی ہی شائستہ کلامی کے عادی ہیں اور لوگ بھی انہیں اسی طرح سننے کے عادی ہو گئے ہیں۔ بہرحال‘ سوال اگر بنتا ہے تو صرف اتنا کہ آخر بے جوڑ سے خطاب میں بلاول کو یاد فرمانے کی وجہ کیا تھی۔ اصحاب الرائے کی رائے اس بارے میں منقسم ہے۔ کچھ کا خیال ہے کہ جناب نے تہران میں علم و حکمت کے جو موتی برسائے‘ ان پر اتنی زیادہ
مزید پڑھیے


جغرافیہ ساز

جمعرات 25 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر اعظم نے دورہ تہران میں دو ہی باتیں کیں اور انوکھا ماجرا دیکھئے، الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا نے دونوں ہی کا بلیک آئوٹ کیااور جو باتیں انہوں نے ادھر ادھر کی کیں، وہی جو گفتگو کا مواد ختم ہونے پر ملاقاتی ایک دوسرے سے ’’اور سنا ئیے‘‘ یعنی ’’ہور سنائو‘‘ کے انداز میں کہا کرتے ہیں، وہ شہ سرخیوں کی صورت میں چھپیں۔ پھر اتفاق دیکھیے کہ جن دو اہم باتوں کا میڈیا نے بلیک آئوٹ کیا، وہی ایوان میں ’’وائٹ آئوٹ‘‘ ہو کے جگ مگ جگ مگ کرتی رہیں۔ پہلی بات انہوں نے یہ کی کہ ایران میں دہشت
مزید پڑھیے


حفیظ شیخ کے اہدافِ بلند

بدھ 24 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
کوئٹہ میں خطاب فرمانے کے بعد بزرگ ایران تشریف لے گئے۔وہاں تہران میں بزرگوں کی لسانِ صدق نشان نے یہ بیان جاری فرمایا کہ ایران میں ہونے والی دہشت گردی پاکستان سے آپریٹ ہوتی ہے بخدا بزرگوں کے مرشد ثانی پرویز مشرف کی یاد بے ساختہ آئی۔ وہ ایک بار کسی باہر کے ملک گئے اور یہ اعلان کیا کہ دہشت گردی دنیا میں جہاں بھی ہو،کھرا پاکستان ہی کو آتا ہے۔ غنیمت ہے، بزرگوں نے ایران کے بعد پاکستان واپسی کی راہ لی، کہیں سری لنکا کے دورے پر نہیں نکل گئے جہاں تین روز پہلے ہی دہشت گردی
مزید پڑھیے


گوہر ایوب کا آدھا سچ

منگل 23 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
جناب گوہر ایوب خاں نے ایک ٹی وی پر انٹرویو دیتے ہوئے تاریخ کا آدھا سچ بیان فرمایا تو یہ بھی غنیمت ہے۔ کہا‘ 1965ء کے صدارتی الیکشن براہ راست(یعنی عوام کے ووٹوں سے) ہوتے تو والد صاحب کبھی نہ جیت پاتے۔ یہ معرکہ فاطمہ جناح سر کر لیتیں۔ یعنی اتنا اعتراف تو کر لیا کہ ایوب خاں عوام میں مقبول نہیں تھے۔ عوام فاطمہ جناح کو چاہتے تھے۔ انہیں مادر ملت مانتے تھے ‘ بھارت کا ایجنٹ نہیں تھا۔ یہ حق 80ہزار بی ڈی ممبران کو تھا۔ اس وقت بھی دیوتائوں کا ڈاکٹرائن نہیں تھا کہ عوام اس قابل نہیں
مزید پڑھیے




خالی کھوپڑی

پیر 22 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وفاقی کابینہ میں انقلابی تبدیلیوں پر تبصرہ کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے دلچسپ تبصرہ کیا۔ فرمایا کہ دماغ نکل گیا۔ خالی کھوپڑی رہ گئی۔ اس تبصرے کی بنیاد غالباً وہ تبصرے ہیں جو سابق وزیر خزانہ اسد عمر کی فراغت سے پہلے کے زمانے میں بہت سے تجزیہ نگار ازراہ تفنن کر تے آئے ہیں کہ پی ٹی آئی میں ایک ہی دماغ ہے اور اس کا نام اسد عمر ہے۔ خود پی ٹی آئی کی تشہیری مہم سے بھی یہی تاثر ملتا تھا۔ ویسے سرکٹ میں ایک سپر ہٹ بلکہ ایکسٹرا اور الٹرا سپر
مزید پڑھیے


مصنوعی اور اصلی شاہی محل

جمعه 19 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
رات ایک ٹی وی پروگرام میں خاں صاحب کو مشورہ دیا گیا کہ وہ اپنی ساری ٹیم ہی بدل ڈالیں کہ ساری ٹیم ہی نالائق ہے۔ لیکن ایسے مطالبات کرنے والے ایک بات نہیں جانتے یا اسے نظر انداز کر رہے ہیں اور وہ یہ کہ یہ سارے خود ان کا حسن انتخاب ہیں اور سارے جس ’’وژن‘‘ کو آگے بڑھا رہے ہیں‘ وہ خاں صاحب ہی کا وژن ہے۔ کوئی چاہے تو تردید کر دے اور بتا دے کہ نہیں‘ وژن کسی اور کا ہے‘ نام البتہ خاں صاحب کا ہے اور یہ کہ انتخاب بھی خاں صاحب
مزید پڑھیے


بلاول کا انتباہ

جمعرات 18 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
آپ نے زندگی میں بہت سی‘ بہت ہی عجیب خبریں پڑھی ہوں گی لیکن یقین کیجئے‘ ایسی عجیب و غریب خبر پہلے شاید ہی پڑھی ہو گی جو کل اخبارات میں چھپی۔ خبر میں بتایا گیا ہے کہ وزیر منصوبہ بندی اور ترقی نے ٹیکس محصولات بڑھانے کے لئے 40کروڑ ڈالر کا غیر ملکی قرضہ لینے کی منظوری دی ہے۔ خبر میں لکھا ہے کہ وزیر صاحب کے بقول یہ قرضہ لینے سے ٹیکس دہندگان کی تعداد دوگنی ہو جائے گی۔ کیا یہ کوئی سائنسی دریافت ہے؟ اگر ہے تو اسے بھی اتنی ہی اہمیت ملنی چاہئے جتنی ’’بلیک ہول‘‘ کے
مزید پڑھیے


چھترول کا ریلیف

بدھ 17 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر مملکت شہریار آفریدی کے اس انکشاف پر یار لوگ سر دھن رہے ہیں کہ ان کے وزیر اعظم نے حال ہی میں ایران کے صدر ہاشمی رفسنجانی سے فون پر بات کی ہے۔ رفسنجانی کو مرحوم ہوئے دو سال گزر گئے؛چنانچہ ان کے انکشاف کو لطیفہ سمجھا جا رہا ہے لیکن یہ سچ بھی تو ہو سکتا ہے۔ بنی گالہ روحانی علوم و معارف کا سرچشمہ ہے۔ ابن عربی اور مولانا روم بھی یہاں پانی بھرتے ہیں۔ کیا عجب، خان صاحب نے حاضرات ارواح کا عمل کیا ہو اور رفسنجانی کو طلب کر کے بات کر ڈالی ہو۔ افسوس
مزید پڑھیے


ایوب خان …تھوڑی سی تحدیث نعمت

منگل 16 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
غالباً یہ 1974ء کا سال تھا جب ایوب خاں پرلوک سدھارے۔ گویا نصف صدی(تقریباً) ہونے کو آئی اور تب سے اب تک کسی کو ان کی یاد آئی نہ ان کے محاسن کی لیکن اب یک لخت آسمان نے ایسا رنگ بدلا کہ ان کی وہ خوبیاں جو ایک سربستہ راز تھیں۔ عیاں ہونے لگی ہیں۔ ٹی وی چینلز پر کم از کم دو پروگرام ان کی مدح میں ہو چکے اور سوشل میڈیا پر بھی تین یا چار صادق و امین حضرات نے موصوف کی کردار افروزی کی سعی فرمائی ہے۔ ان پانچوں چھٹیوں صدقاً و امناً کا تعلق
مزید پڑھیے