BN

عبداللہ طارق سہیل



مزدور‘ تولہ سے تین ماشے تک


یوم مئی پر سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے مطالبہ کیا ہے کہ مزدور کی تنخواہ 18ہزار روپے مقرر کی جائے۔ کچھ زیادہ ہی مطالبہ نہیںکر دیا؟ اس وقت مزدور کی زیادہ سے زیادہ تنخواہ 15ہزار کم ہے (مزدور بچے تین تین ہزار لیتے ہیں) اضافہ کرنا ہے تو سو سوا سو کافی ہیں‘ اکٹھے 18ہزار کا مزدور کرے گا کیا۔ دیکھیے‘ مزدور کی ضروریات اتنی کم ہوتی ہیں کہ پندرہ ہزار بھی اس کے لئے بہت ہیں۔ مزدوروں کے گھروں میں اکثر بجلی نہیں ہوتی چنانچہ بجلی کا بل اسے دینا ہی نہیں پڑتا۔ گیس بھی نہیں ہوتی۔ اس
جمعه 03 مئی 2019ء

مینگل صاحب کا ثواب بے لذت

جمعرات 02 مئی 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حسب توقع نیب نے چودھری برادران کے خلاف پلاٹوں کی الاٹمنٹ والا کیس بند کر دیا ہے۔ اس سے پہلے خبریں آئی تھیں کہ حکومتی اتحادیوں میں قاف لیگ اور تحریک انصاف کے درمیان پیدا ہونے والی دوریاں دور ہو رہی ہیں۔ بلکہ بڑی حد تک دورہو گئی تھیں۔ تبھی یہ توقع بندھی تھی کہ ریفرنس کی فائل بندہونے والی ہے۔ ماشاء اللہ الحمد اللہ۔ دو اتحادیوں کے درمیان مفاہمت کا پائیدار عمل تقریباً مکمل ہو گیا۔ ٭٭٭٭٭ بالآخر مہمند ڈیم کا سنگ بنیاد رکھنے کی گھڑی آ گئی۔ یہی وہی ڈیم ہے ناں جس کی تعمیر کا ٹھیکہ سیٹھ
مزید پڑھیے


بھاری پتھر

بدھ 01 مئی 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
شریف فیملی کے ساتھ عالم بالا کے کیا معاملات چل رہے ہیں۔ اس پر کئی طرح کی دلچسپ حکایات آتی رہتی ہیں لیکن کراچی کے ایک معاصرنے کچھ زیادہ ہی دلچسپ رپورٹ ’’قابل اعتبار‘‘ ذرائع کے حوالے سے چھاپی ہے۔ لکھا ہے معاملات قریب قریب طے ہو چکے، نواز شریف طویل عرصے کے لیے باہر چلے جائیں گے اور سیاست سے کوئی علاقہ نہیں رکھیں گے ان کے بعد پارٹی کی قیادت شہباز کے سپرد ہو گی اور اس نئی مسلم لیگ کو عالم بالا سے ’’حب الوطنی‘‘ کا سرٹیفکیٹ مل جائے گا۔ معتبر ذرائع کی رپورٹ یہاں تک تو خیر
مزید پڑھیے


احتساب اور روحانی دیوار

منگل 30 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
فواد چودھری کی جگہ آنے والی فردوس عاشق اعوان صاحبہ نے اپوزیشن کو یہ کہہ کر لاجواب کر دیا ہے کہ ہمیں آئے ہوئے آٹھ مہینے ہی ہوئے ہیں‘ ہم سے تیس سال کا حساب نہ مانگا جائے۔ دوسرے لفظوں میں وہ اپوزیشن کو چیلنج کر رہی ہیں کہ ہم سے ہمارے آٹھ مہینے کا حساب مانگیں ویسے محترمہ کو شاید اندازے کی غلطی تھی‘ آٹھ سے اوپر ایک مہینہ اور ہو گیا۔ اپوزیشن یہ حساب کبھی نہیں مانگے گی۔ آٹھ نو مہینے میں حکومت نے ایسی مشکل مہمات سر کی ہیں کہ تاریخ میں اس کی مثال صرف فرہاد کی
مزید پڑھیے


جماعت اسلامی کا قدمِ نو‘ نظمِ نو

پیر 29 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
اپوزیشن کا میدان بڑی جماعتوں کے وجود سے تقریباً خالی ہے۔ مسلم لیگ ن سمٹ کر شاہد خاقان عباسی اور رانا ثناء اللہ تک محدود ہو گئی ہے اور نیب کو ان کے خلاف کارروائی کی ہدایت بھی مل گئی ہے چنانچہ جلد ہی ان کے خلاف کارروائی متوقع ہے۔ پیپلز پارٹی سندھ تک محدود ہے اور بلاول بھٹو اعلان کے باوجود پنجاب نہیں آ رہے۔ حکومت کو تاریخ ساز لوٹ مار کے لئے فری ہینڈ مل گیا ہے۔ ہر وزارت سے طرح طرح کی ناقابل اشاعت خبریں گشت کر رہی ہیں لیکن چونکہ وہ ناقابل اشاعت ہیں اس
مزید پڑھیے




’’شائستہ کلامی‘‘

جمعه 26 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
صاحب نے وانا میں دوران تقریر بلاول بھٹو کو صاحبہ کہہ کر ایسا کیا نیا کر دیا کہ ہر طرف طوفان ملامت آ گیا۔ وہ تو شروع ہی سے ایسی ہی شائستہ کلامی کے عادی ہیں اور لوگ بھی انہیں اسی طرح سننے کے عادی ہو گئے ہیں۔ بہرحال‘ سوال اگر بنتا ہے تو صرف اتنا کہ آخر بے جوڑ سے خطاب میں بلاول کو یاد فرمانے کی وجہ کیا تھی۔ اصحاب الرائے کی رائے اس بارے میں منقسم ہے۔ کچھ کا خیال ہے کہ جناب نے تہران میں علم و حکمت کے جو موتی برسائے‘ ان پر اتنی زیادہ
مزید پڑھیے


جغرافیہ ساز

جمعرات 25 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر اعظم نے دورہ تہران میں دو ہی باتیں کیں اور انوکھا ماجرا دیکھئے، الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا نے دونوں ہی کا بلیک آئوٹ کیااور جو باتیں انہوں نے ادھر ادھر کی کیں، وہی جو گفتگو کا مواد ختم ہونے پر ملاقاتی ایک دوسرے سے ’’اور سنا ئیے‘‘ یعنی ’’ہور سنائو‘‘ کے انداز میں کہا کرتے ہیں، وہ شہ سرخیوں کی صورت میں چھپیں۔ پھر اتفاق دیکھیے کہ جن دو اہم باتوں کا میڈیا نے بلیک آئوٹ کیا، وہی ایوان میں ’’وائٹ آئوٹ‘‘ ہو کے جگ مگ جگ مگ کرتی رہیں۔ پہلی بات انہوں نے یہ کی کہ ایران میں دہشت
مزید پڑھیے


حفیظ شیخ کے اہدافِ بلند

بدھ 24 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
کوئٹہ میں خطاب فرمانے کے بعد بزرگ ایران تشریف لے گئے۔وہاں تہران میں بزرگوں کی لسانِ صدق نشان نے یہ بیان جاری فرمایا کہ ایران میں ہونے والی دہشت گردی پاکستان سے آپریٹ ہوتی ہے بخدا بزرگوں کے مرشد ثانی پرویز مشرف کی یاد بے ساختہ آئی۔ وہ ایک بار کسی باہر کے ملک گئے اور یہ اعلان کیا کہ دہشت گردی دنیا میں جہاں بھی ہو،کھرا پاکستان ہی کو آتا ہے۔ غنیمت ہے، بزرگوں نے ایران کے بعد پاکستان واپسی کی راہ لی، کہیں سری لنکا کے دورے پر نہیں نکل گئے جہاں تین روز پہلے ہی دہشت گردی
مزید پڑھیے


گوہر ایوب کا آدھا سچ

منگل 23 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
جناب گوہر ایوب خاں نے ایک ٹی وی پر انٹرویو دیتے ہوئے تاریخ کا آدھا سچ بیان فرمایا تو یہ بھی غنیمت ہے۔ کہا‘ 1965ء کے صدارتی الیکشن براہ راست(یعنی عوام کے ووٹوں سے) ہوتے تو والد صاحب کبھی نہ جیت پاتے۔ یہ معرکہ فاطمہ جناح سر کر لیتیں۔ یعنی اتنا اعتراف تو کر لیا کہ ایوب خاں عوام میں مقبول نہیں تھے۔ عوام فاطمہ جناح کو چاہتے تھے۔ انہیں مادر ملت مانتے تھے ‘ بھارت کا ایجنٹ نہیں تھا۔ یہ حق 80ہزار بی ڈی ممبران کو تھا۔ اس وقت بھی دیوتائوں کا ڈاکٹرائن نہیں تھا کہ عوام اس قابل نہیں
مزید پڑھیے


خالی کھوپڑی

پیر 22 اپریل 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وفاقی کابینہ میں انقلابی تبدیلیوں پر تبصرہ کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے دلچسپ تبصرہ کیا۔ فرمایا کہ دماغ نکل گیا۔ خالی کھوپڑی رہ گئی۔ اس تبصرے کی بنیاد غالباً وہ تبصرے ہیں جو سابق وزیر خزانہ اسد عمر کی فراغت سے پہلے کے زمانے میں بہت سے تجزیہ نگار ازراہ تفنن کر تے آئے ہیں کہ پی ٹی آئی میں ایک ہی دماغ ہے اور اس کا نام اسد عمر ہے۔ خود پی ٹی آئی کی تشہیری مہم سے بھی یہی تاثر ملتا تھا۔ ویسے سرکٹ میں ایک سپر ہٹ بلکہ ایکسٹرا اور الٹرا سپر
مزید پڑھیے