BN

عبداللہ طارق سہیل



خلوص کی کتاب کا نیا باب


یوم خواتین پر اسلام آباد اور لاہور میں ایلیٹ کلاس کی خواتین نے مظاہرے کئے۔ جو نعرے لگائے گئے اور جو سلوگن کتبوں پر لکھے گئے ان میں پانچ فیصد ایسے تھے جنہیںنقل کیا جا سکتا ہے‘ مثلاً ہاںمیں آوارہ ہوں‘ ہاںمیں بدچلن ہوں قسم کے۔ لیکن پچانوے فیصد کا نقل کرنا تو دور کی بات ‘ باہمی مجالس میں انہیں دہرایا بھی نہیں جا سکتا، ایسے سلوگن سُن کربوڑھے مردوں کے کان بھی سرخ ہو جائیں۔ خالی دماغ شیطان کا کارخانہ ہوتے ہیں ایسے فقرے تو امریکہ اور برطانیہ کی کوئی خاتون بھی نہیں لکھ سکتی۔ ہاں‘ فرانس اور
پیر 11 مارچ 2019ء

نئے دور کا راون

جمعه 08 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
پیپلز پارٹی کی سینیٹر کرشنا کماری نے بھارتی پردھان منتری نریندر مودی کو نئے دور کا راون قرار دیا ہے۔ نادر مگر بامعنی خطاب ہے کیونکہ انجام کار مودی اور ان کے سنگ پریوار کی سیاست کاری ہندو دھرم کو نقصان دے گی اور ہندو سماج کو تو اس نے ابھی سے بکھیرنا شروع کر دیا ہے۔ مودی جی راون تو ہیں پر اس طرح کے کہ اپنی لنکا گجرات سے اٹھا کر دہلی لے آئے ہیں۔ حیرت تو ان پر ہے جو اس راون کی زنار کے دانے بن گئے ہیں، اگلے ماہ الیکشن ہے اور یہ چند ہفتے بھارتی
مزید پڑھیے


فلاح انسانیت بھی ممنوع

جمعرات 07 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
آخر کو ’’فلاح انسانیت‘‘ بھی پابندی کی نذر ہوئی۔ ساتھ ہی مولانا مسعود اظہر کے صاحبزادے سمیت ان کے کچھ ساتھی بھی پکڑ لئے گئے۔اعلان مملکت کے داخلہ وزیر نے کیا۔ دو اڑھائی ماہ پہلے ان کی ایک ویڈیو آئی تھی جو کل سے پھر گردش کر رہی ہے۔ اس میں داخلہ وزیر فلاح انسانیت کے وفد سے فرما رہے ہیں کہ جب تک پی ٹی آئی کی حکومت ہے‘ کوئی مائی کا لال آپ کی طرف آنکھ اٹھا کر بھی نہیں دیکھ سکتا اور یہ ہمارے ایمان کی بات ہے۔ وفد نے ان سے یہ خدشہ ظاہر کیا تھا
مزید پڑھیے


فیصلہ کن کارروائی

بدھ 06 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حکومت نے کہا ہے کہ کالعدم تنظیموں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی کی جا رہی ہے۔ ان کے اثاثے اور رفاہی ادارے بھی سرکاری کنٹرول میں لے لئے گئے ہیں۔ یہ بھی کہا گیا ہے کہ اس فیصلے کا کوئی تعلق عالمی دبائو یا بھارتی درخواست سے نہیں ہے۔ اگرچہ ایک اخبار نے اپنی دوسری بڑی سرخی یہ جمائی ہے کہ بھارت مخالف تنظیموں کے اثاثے‘ اکائونٹس ‘ گاڑیاں ضبط کرنے کا حکم۔‘‘ اچھی بات ہے کہ اس بار فیصلہ کن کارروائی ہو گی۔ ماضی کی حکومت نے نیم فیصلہ کن کارروائی کا محض عندیہ ہی دیا تھا‘ وہ بھی ڈرتے
مزید پڑھیے


شاندار سفارتی کامیابیاں

منگل 05 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حالیہ بحران کے حوالے سے وزیر اعظم نے پچھلے ہفتے بہت مصروف دن گزارے۔ ہنگامی طور پر لاہور تشریف لائے اور پنجاب کابینہ کے اجلاس کی صدارت کی۔ آپ نے وزیر اعلیٰ کو بھی انہی کے دفتر میں طلب کیا اور ان کی کرسی پر بیٹھ کر (وزیر اعلیٰ کو سامنے والی یعنی ملاقاتی کرسی پر بیٹھا کر) کارکردگی کی رپورٹ طلب کی۔ وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ انہوں نے لاہور کے حسن کو ’’نظر پروف‘‘ بنایا ہے۔ اس مقصد کے لئے انہوں نے ’’نظر بٹّو‘‘ کے طور پر جابجا کوڑے کے ڈھیر لگوا دیے ہیں‘ اس طرح لاہور کے
مزید پڑھیے




مہابلی کی شامت

پیر 04 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
بھارت کی شمال مغربی پہاڑی ریاست ہماچل پردیش کی سرکار نے بندر کو موذی جانورقرار دیا ہے۔ فرمان میں کہا گیا ہے کہ بندروں کی گنتی بہت بڑھ گئی ہے، ہر جگہ اودھم مچا رکھا ہے۔ گھر ہویا بازار، جیون نشٹ کر کے رکھ دیا ہے۔ جہاں دیکھو مارڈالو۔ انعام ملے گا۔ انعام کے اعلان کے بعد بندروں کی شامت آ گئی ہے۔ کو ئی دو چار بھی مارلے تو دن بھر کی چائے پانی کا بندوبست ہو جاتا ہے۔ بندر ہندوئوں کا بھگوان ہے اور بھگوان بھی چھوٹا موٹا نہیں، مہا بلی بلوان بھگوان ہنومان۔ وہی جس نے بھگوان رام
مزید پڑھیے


محدود جنگ ‘ امریکہ کی ضرورت

جمعه 01 مارچ 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
بھارتیوں کی بھاری اکثریت نہیں تو بھی خاصی بڑی تعداد کو سو فیصد یقین تھا کہ ان کے طیاروں نے کامیاب آپریشن کیا ہے اور پاکستانی علاقے میں جا کر ایک کیمپ کو تباہ کر دیا ہے جس میں تین سو یا اس سے بھی زیادہ دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ ان لوگوں نے ملک بھر میں جشن منایا اور جلوس نکالے،شہروں میں مٹھائیاں بانٹی گئیں۔ پاکستان اور مسلمانوں کے خلاف نعرے لگائے۔ بالعموم ہر جلوس سو ڈیڑھ سو افراد پر مشتمل تھا۔ کہیں کہیں سینکڑوں لوگ بھی نکلے ہزاروں کا کوئی جلوس نہیں تھا۔ بھارتی میڈیا پر خوشی کا
مزید پڑھیے


سفارت کاری کہاں ہے؟

جمعرات 28 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
بھارتی جارحیت کے بعد سے دونوں ملکوں میں کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ بالاکوٹ کے علاقے میں جارحیت کے اگلے روز بھارت نے پھر فضائی خلاف ورزی کی جس کا خمیازہ اسے دو طیاروں کی تباہی اور دوپائلٹوں کی گرفتاری کی صورت میں بھگتنا پڑا۔ سب کی دعا ہے اور امید بھی کہ جنگ کی نوبت نہ آئے لیکن فضا بتا رہی ہے کہ خطرہ قریب آ رہا ہے۔ ان حالات میں پاکستان کو سب سے زیادہ ضرورت کامیاب سفارت کاری کی ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکہ سے امید باندھ رکھی ہے۔ کہا ہے کہ وہ کشیدگی کو بڑھنے
مزید پڑھیے


مطلب اب سمجھ میں آیا

بدھ 27 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
چند روز قبل حکمران جماعت کے اقلیتی رکن رمیش لال بھارت کے اچانک دورے پر گئے اور پردھان منتری نریندر مودی سے ملے۔ انہوں نے مودی کو وزیر اعظم عمران خان کا پیغام دیا اور وطن واپسی پر پیر کی صبح یہ بیان دیا کہ اس ملاقات کے مثبت نتائج چندروز تک برآمد ہوں گے اور خوشخبری ملے گی۔ خوشخبری یہ ملی کہ اس رات بھارتی فضائیہ نے آزاد کشمیر کا علاقہ عبور کیا اور پاکستانی سرحد سے اندر آ کر پختونخواہ کے شہر بالا کوٹ اور گڑھی حبیب اللہ کے درمیان علاقے میں بم گرائے۔ مقامی شہریوں کے مطابق بھارتی
مزید پڑھیے


عرب بہار حصہ دوئم؟

منگل 26 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
1969ء کی بات ہے‘ رباط میں اسلامی سربراہی کانفرنس ہوئی جس میں بھارت کو بھی مبصر کے طور پر بلانے کا فیصلہ کیا گیا۔ فیصلہ کرنے والوں کا موقف تھا کہ بھارت میں کروڑوں مسلمان رہتے ہیں اور یہ دنیا کی دوسری بڑی مسلمان آبادی ہے اس لئے اسے تنظیم کا مبصر بنانے میں کوئی خرابی نہیں بلکہ فائدہ ہی ہے۔ پاکستان نے اس پر سخت اعتراض کیا اور کانفرنس کا بائیکاٹ کرنے کی دھمکی دی۔ اس پر فیصلہ منسوخ ہو گیا۔ یہ نصف صدی پرانا واقعہ ہے۔ اگلے مہینے کی یکم تاریخ کو (جس کے بیچ اب دو تین دن
مزید پڑھیے