BN

عبداللہ طارق سہیل



سب آپ کے ہیں قبلہ!


سابق آمر پرویز مشرف نے دبئی میں پریس کانفرنس کی اور بتایا کہ عمرانی کابینہ میں آدھے وزیر ان کے ہیں۔ لہجے سے واضح نہیں ہو رہا تھا کہ آپ اس بات پر خوش ہیں کہ آدھے وزیر آپ کے ہیں یا اس بات پر ناخوش کہ آدھے وزیر آپ کے نہیں ہیں۔ جو بھی ہو‘ جو آدھے وزیر آپ کے خیال میں آپ کے نہیں ہیں‘ دراصل وہ بھی آپ کے ہی ہیں۔ فکر پرویزی پر کاربند‘ عملیات مشرفی پر دل و جان سے عامل۔ خود عمران خان کے بارے میں کیا خیال ہے؟ آپ کے تاریخ ساز ریفرنڈم
پیر 25 فروری 2019ء

مصائب اور مراتب

جمعه 22 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
حکومت کے بازوئے پکڑ دھکڑ نے سندھ اسمبلی کے سپیکر کو پکڑ لیا ۔ وہ کسی کام سے اسلام آباد آئے تھے جہاں پکڑ دھکڑحکام گھات میں بیٹھے تھے الزام وہی اثاثوں اور آمدنی والا۔ یہ الزام بھی کیا خوب ہی ہے ہر گلے کی چابی جسے چاہو پکڑ لو۔ لگتا ہے اپوزیشن کے سارے ارکان اسمبلی اسی کی مدد سے پکڑے جائیں گے۔ کیا پتہ کل کلاں صحت مند افراد کی شکایت بھی آ جائے تمہاری صحت تمہار عمر کے حساب سے بہت اچھی لگتی ہے۔ لگتا ہے ناجائز کماتے ہو۔ نکالو منی ٹریل۔گرفتاری پر پیپلز پارٹی مشتعل ہوئی۔
مزید پڑھیے


جنگ ہوگی؟

جمعرات 21 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیراعظم عمران خان نے بالآخر بھارتی پردھان منتری نریندر مودی کی جنگی دھمکیوں کا جواب دے دیا۔ کئی روز کی تاخیر سے ہی سہی پر جواب تو دیا۔ ہوئی تاخیر تو کچھ وجہ تاخیر بھی تھی اور وہ یہ تھی کہ بقول خان کہ ہم مہمان کی مہمانداری میں مصروف تھے۔ مہمان آیا تھا یا بحران؟ یہ بھی ہوسکتا ہے مناسب جواب سوچنے میں اتنے دن لگ گئے ہوں۔ سوچنا بہرحال اچھی بات ہے۔ وزیراعظم نے بھارت کو پلوامہ حملے کی تحقیقات میں تعاون کی پیشکش کی، دہشت گردی پر مذاکرات کا بھارتی مطالبہ بھی مان لیا اور یہ بھی کہہ
مزید پڑھیے


سوتے بچے کو لوری

بدھ 20 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
پاک سعودی مشترکہ اعلامیہ میں کشمیر کا ذکر نہیں کیا گیا جس پر کچھ لوگوں کو حیرت سی ہوئی۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ بات خلاف معمول ہے بلکہ غیر معمولی ہے لیکن ایسا نہیں ہے۔ مسئلہ کشمیر کا ذکر اگرچہ براہ راست نہیں ہے لیکن بالواسطہ تو ہے۔ وہ ایسے کہ مشترکہ اعلامیہ میں پاک بھارت مذاکرات کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے اور مذاکرات جب بھی ہوئے کشمیر کا موضوع ان میں شامل ہو گا۔ چاہے ضمنی ہی ہو‘ ہو گا تو ضرور۔ یوں بالواسطہ ذکر آ گیا۔ اور ذکر تو ذکر ہے۔ چاہے بالواسطہ ہو
مزید پڑھیے


سجدہ سہو

منگل 19 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
سعودی عرب سے پاکستان کے جو معاہدے ہوئے ہیں‘ ان میں سب سے اہم گوادر ریفائنری کا ہے لیکن اس پر بلوچستان اسمبلی نے سوال اٹھا دیے ہیں کہ اس سے ملک کو تو فائدہ ہو گا لیکن صوبے کو کیا فائدہ ہو گا۔ سوال غلط نہیں‘ سی پیک کے شروع میں زیادتی نواز شریف دور میں ہوئی اب پھر ’’ری پلے‘ ہو رہا ہے۔ بلوچستان اسمبلی نے اس حوالے سے قرار داد پاس کی ہے کہ معاملے میں صوبے کو بھی اعتماد میں لیا جائے۔ مطالبہ برحق ہے۔ اقتصادی تعاون کے معاہدے بہت اہم ہیں لیکن زیادہ اہم سٹریٹجک تعاون
مزید پڑھیے




دونوں طرف سے دھمکی!

پیر 18 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
اندازے یہی آ رہے تھے کہ نریندر مودی بھارت کا عام الیکشن یا تو ہار جائیں گے یا پھر بہت کم مارجن سے جیتیں گے اور حکومت بنانے کی پوزیشن میں نہیں آ سکیں گے۔ پھر یہ پلوامہ کا واقعہ ہوگیا اور گویا مودی کی کشت نیم ویراں میں بہار کا جھونکا آ گیا۔ پلوامہ میں فوجی قافلے پر خودکش حملہ کرنے والا مقبوضہ کشمیر کا نوجوان لڑکا تھا جس کی ماں نے بتایا کہ بھارتی فوج نے اس پر اتنا ظلم کیا کہ وہ فدائی بن گیا لیکن بھارت کہتا ہے کہ حملہ پاکستان سے ہوا۔ مقبوضہ وادی کے
مزید پڑھیے


جدے کو بنی گالے سے…!

جمعه 15 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
دفتر خارجہ کے ترجمان نے ٹھیک وضاحت کی لیکن قطعی بے ضرورت۔ کہا، یمن کی جنگ میں پاکستان کو دھکیلنے کی کوئی سازش نہیں ہو رہی۔ ترجمان کا گمان ہو گا کہ کہیں کوئی سازش کا نہ سوچ رہا ہو لیکن ایسا تو کوئی بھی نہیں سوچ رہا۔ جو بھی ہے، ہاتھ کنگن کو آرسی کی طرح ہے۔ حالات ہوں یا واقعات، جو بھی ہے سب کے سامنے ہے، خلاصہ یہ ہے کہ بے خطر آتش نمرود میں کود پڑنے کا وقت آ گیا ہے۔ یمن کی صورتحال یہ ہے کہ پانچ برس ہونے کو آئے، اسلامی فوج صنعا سے ہنوز
مزید پڑھیے


اسے چوری نہیں کہہ سکتے

جمعرات 14 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
آئی ایم ایف کی سربراہ سے کامیاب مذاکرات کر کے وزیر اعظم فاتحانہ وطن لوٹے تو حاسدین تکلیف میں مبتلا ہو گئے اور اس بات پر تنقید شروع کر دی کہ وزیر اعظم کیوں ملے، آج تک کوئی وزیر اعظم ایسے مذاکرات کے لیے نہیں گیا، خان صاحب نے جا کر اس طرح ملاقات کر کے ملک کی سبکی کرا دی ہے۔ سبکی کہاں بھلے لوگوں، وطن کی شان بلند کرائی ہے۔ دیکھتے ہیں دنیا بھر میں ہمارے وطن کی کیسی مشہوری ہوئی ہے۔ کم و بیش سارے ہی عالمی اخبارات نے ’’مانو یا نہ مانو‘‘(Believe it not)کے انداز میں یہ
مزید پڑھیے


کیتھولک۔ قربت کی راہیں

بدھ 13 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
اس مہینے کی پانچ تاریخ کو ایک منفرد واقعہ ہوا۔ رومن کیتھولک مذہب کے پیشوا پوپ فرانسیس نے ابوظہبی کا دورہ کیا اور ایک عالمی مذہبی امن کانفرنس سے خطاب کیا جس میں 22مذاہب اور مذہبی فرقوں کے رہنما شریک تھے۔ جناب فرانسس پہلے پوپ ہیں جو عربستان آئے۔ ان سے آٹھ سو سال پہلے کے پوپ نے بھی ایک عرب ملک کا دورہ کیا تھا لیکن وہ مصر تھا‘ جو عرب ملک تو ہے پر افریقہ میں ہے‘ عربستان میں نہیں۔ اتفاق دیکھیے ان پوپ صاحب کا نام بھی فرانسس تھا۔پوپ نے فرمایا‘ دنیا کو امن کی ضرورت ہے۔
مزید پڑھیے


خفیہ مفاہمت

منگل 12 فروری 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
دن گنے جاتے تھے جس دن کے لیے۔ آخر آئی ایم ایف سے مفاہمت ہو گئی اور ہونا ہی تھی۔ کتنے دنوں سے پس پردہ ’’تعاون‘‘ چل رہا تھا۔ خبر ہے کہ کیا طے ہوا۔ یہ بات خفیہ رکھی جائے گی۔ خفیہ رکھنے کی درخواست کس فریق نے کی ہوگی؟ خود اندازہ فرما لیجئے۔ خفیہ لیکن کب تک خفیہ رہے گا۔ ایک دن باہر آ ہی جائے گا۔ ایک بات کا پتہ چلا ہے کہ 230 ارب روپے کے ٹیکس عوام کی جیب سے نکالے جائیں گے۔ بدلے میں صرف چھ ارب ڈالر ملیں گے۔ نشانیاں البتہ نمودار ہورہی ہیں،
مزید پڑھیے