BN

علی احمد ڈھلوں


یقین مانیں: معیشت آخری سانسیں لے رہی ہے!


فرض کیا کہ ایک شخص قرض پر زندگی گزار رہا ہے، اس کے اخراجات کا پھیلائو اس قدر ہے کہ وہ چاہ کر بھی اپنے اخراجات کم نہ کر پا رہا۔ جبکہ قرض دینے والے اْس پر ہر حربہ استعمال کر چکے ہیں کہ شاید وہ کسی طرح اپنے پائوں پر کھڑا ہو جائے لیکن وہ ہر صورت ناکام رہے۔ دن گزرتے جا رہے ہیں اور اب موصوف کی حالت یہ ہو چکی ہے کہ وہ پچھلا قرض اور سود چکا نے کے لیے اگلا قرض لینے پر مجبور ہے اور اس کے لیے گھر کی چیزیں تک گروی رکھوارہا
هفته 03 دسمبر 2022ء مزید پڑھیے

عمران خان اسمبلیوں سے مستعفی ہونے کے اعلان پر غور کریں!

منگل 29 نومبر 2022ء
علی احمد ڈھلوں
خان صاحب نے اپنی سیاست میں ایک اور سرپرائز دیتے ہوئے تمام اسمبلیوں کی نشستوں سے مستعفی ہونے کے بارے میں مشاورت کا اعلان کردیا ہے۔ لہٰذا تحریک انصاف کے استعفوں کے نتیجے میں قومی اسمبلی کی 123 نشستوں، پنجاب اسمبلی کی 297 نشستوں، خیبر پختونخواہ کی 115 نشستوں، سندہ اسمبلی کی 26 اور بلوچستان کی دو نشستوں یعنی کل 563 نشستوں پر ضمنی انتخابات ہوں گے۔جو ناممکنات میں سے ایک ہے ۔لہٰذاحکومت فوری طور پر جنرل الیکشن کی طرف جائے گی ، لیکن اُس سے پہلے حکومت بھی کچھ نہ کچھ ’’کارروائیاں‘‘ کر سکتی ہے۔ اس طرح نئے
مزید پڑھیے


خوش آمدید! جنرل عاصم منیر

هفته 26 نومبر 2022ء
علی احمد ڈھلوں
بالآخر جنرل عاصم منیر نئے آرمی چیف بن گئے، اْن کی تقرری کے بعد ایک دور کا اختتام اور ایک نئے دور کا آغاز ہوا ہے۔اس نئے دور کے آغاز نے ایک مرتبہ تو دن میں تارے دکھا دیے ہیں کہ ملکی سیاست میں گزشتہ 6ماہ سے اور کچھ سجھائی ہی نہیں دے رہا تھا۔ بقول قتیل شفائی دور تک چھائے تھے بادل اور کہیں سایہ نہ تھا اس طرح برسات کا موسم کبھی آیا نہ تھا سگمنڈ فرائیڈ کی Unconscious اور Jokes کے تعلق کے حوالے سے ایک کتاب ہے جس پر کارل ژونگ نے تبصرہ کرتے
مزید پڑھیے


کیا پاکستان امریکا کے بغیر رہ سکتا ہے؟

هفته 19 نومبر 2022ء
علی احمد ڈھلوں
آج کل ہمارے سیاستدانوں کے لب و لہجے اس قدر بدلے بدلے سے ہیں کہ وہ بات اپوزیشن کی کر رہے ہوتے ہیں مگر وہ سنا کسی ’’اور‘‘ کو رہے ہوتے ہیں، جیسے خان صاحب امریکا کے لیے ڈھکے چھپے الفاظ میں پیغام رسانی کرتے ہیں کہ وہ ان کے خیر خواہ ہیں، بقول پی ڈی ایم کے کہ’’ انہوں نے بڑی مشکل سے امریکا کے ساتھ تعلقات دوبارہ استوار کیے ہیں ورنہ تو سابقہ حکومت پاکستان کو تباہی کے دہانے پر لے آئی تھی وغیرہ! اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آپ امریکا کے لیے کتنے ضروری ہیں
مزید پڑھیے


ملک میں قانون کہاں ہے؟

هفته 12 نومبر 2022ء
علی احمد ڈھلوں
کیا آپ تصور کر سکتے ہیںکہ پاکستان دنیا کے اُن ممالک میں شمار ہوتا ہے جہاں انصاف کی ایک ’قیمت‘ ہے، جو ادا کرتا ہے وہ اُسے حاصل کر لیتا ہے،۔جو ادا کرنے سے قاصر رہتا ہے ،وہ انصاف سے بھی محروم ہو جاتا ہے۔ نہیں یقین تو آپ خود چیک کر لیں کہ شاہزیب قتل کیس میں طاقتور نے سارا نظام ہی خرید لیااور مجرم باعزت بری ہوگئے، ناظم جوکھیو قتل کیس میں بھی طاقتوروں نے ایک ساتھ ہی سارا نظام تلپٹ کر دیا اوربااثر مجرمان رہا بھی ہوگئے۔ کوئٹہ میں مجید اچکزئی کیس کا تو سب کو علم
مزید پڑھیے



الیکشن کی تاریخ دینے میں مسئلہ کیا ہے؟

منگل 08 نومبر 2022ء
علی احمد ڈھلوں
’’جب تک الیکشن کی تاریخ نہیں دی جاتی، احتجاج جاری رہے گا‘‘ یہ ہے ملک کی سب سے بڑی سیاسی جماعت تحریک انصاف کا سب سے بڑا مطالبہ۔ اسی مطالبے پر لاہور سے اسلام آباد لانگ مارچ کا آغاز بھی کیاگیا، جلسے، جلوس بھی منعقد کیے گئے اور کبھی کبھار سکیورٹی اداروں سے مدبھیڑ بھی ہوئی۔ جبکہ اسی لانگ مارچ کے دوران عمران خان پر قاتلانہ حملے نے ملک میں جاری سیاسی بحران کو اور بھی شدید کر دیا۔لیکن مجال ہے کہ پی ٹی آئی اپنے اس مطالبے سے ایک قدم بھی پیچھے ہٹی ہو۔ جبکہ مسئلہ یہ ہے کہ
مزید پڑھیے








اہم خبریں