BN

محمد حسین ہنزل


افغان امن مذاکرات


افغان امن کے حوالے سے متحدہ عرب امارات کے شہر ابوظہبی میں حالیہ مذاکرات کی خبریں سن کر مجھے علامہ اقبالؒ یاد آئے ۔ آج سے کئی دہائیاں قبل مشرق کے اس درویش ِ صفت شاعر نے اپنے ایک فارسی شعر میں پیش گوئی کی تھی کہ افغانستان ایشیاء کا دل ہے اور یہ خطہ جب تک شورش کی زد میںہو گا تب تک پورے ایشیاء میں امن اور خوشحالی کی حالت مخدوش رہے گی۔ آسیا یک پیکر آب وگل است ملت افغان درآں پیکر دل است از کُشاد او کشاد آسیا از فساد او فساد آسیا اقبال کی پیش گوئی سچی
هفته 22 دسمبر 2018ء

ژوب: دیانت کا ایک واقعہ اور ہماری حیرت

منگل 18 دسمبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
یہ واقعہ چونکہ بلوچستان کے ضلع ژوب میں پیش آیا اسلئے میڈیا میںخبروں کی زینت نہ بن سکا ۔ اسلام آباد ، لاہور یا کراچی جیسے شہروں میں پیش آیا ہوتا تو معلوم نہیں ہماری قوم کی حیرت کی انتہا کیا ہوتی ؟ واقعہ کچھ یوں تھا کہ چنددن پہلے ضلع ژوب میں ڈسٹرکٹ جیل کے سامنے گزرنے والی سڑک پر رحمت اللہ مسعود نامی پولیس اے ایس آئی کو چھ لاکھ روپوں کا ایک بھنچا ملا۔ پولیس اہلکار چونکہ ایک حساس انسان اور دیانت دار مسلمان تھا ،یوں اس نے اس پرائی رقم سے اپنی جیب گرم کرنے
مزید پڑھیے


خان صاحب میانہ روی کو اپنا شعار بنائیں

هفته 08 دسمبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
وزیراعظم عمران خان نے جس طرح خود کو متنازعہ بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی ہے اسی طرح ان کے مداح اور حریفوں نے بھی ان کومتنازعہ بنانے میں حد کردی ہے۔ وہ سیاستدان ضرور بنیں لیکن بائیس سال کا طویل عرصہ گزرنے کے باوجود انہوں نے اپنے آپ کو ایک جید سیاستدان کے طور پر نہیں منوایا۔مثال کے طور پر ہم پہلے خان صاحب کی زبانِ بے لگام کولیتے ہیں جس کی وجہ سے وہ ہمیشہ مار کھاتے آئے ہیں اپنے سیاسی کیریئر میں انہوں نے نہ تو کسی سیاستدان اور حاکم کو معاف کیا اور نہ میڈیا میں
مزید پڑھیے


آہ عمردراز مروت …

بدھ 05 دسمبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
عمر دراز مروت بھی داعی اجل کو لبیک کہہ گئے، یوںپروفیسررحمت اللہ درد جیسے مایہ ناز غزل گو شاعرکی رحلت کے بعد لکی مروت ایک اور بامروت شاعر سے محروم ہوا۔ چنددن پہلے سوشل میڈیا پرعمردراز مروت کی علالت کی خبر اور تصویریں گردش میں تھیں ۔پھر جمعرات کے دن جناب اسیر منگل نے سوشل میڈیا پر ان کی آپریشن سے متعلق خبر دی اور ساتھ ساتھ ان کی صحت یابی کیلئے احبا ب سے دعائوں کی التماس کی تھی۔ یقیناًدوستوں نے کی اُن کی درازی ِ عمرکیلئے دعائیں مانگی ہونگی لیکن شام کو آنے والی خبردل کو دکھی کردینے
مزید پڑھیے


اے خاصہ خاصان رُسل وقت ِ دعاہے

پیر 26 نومبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
اس بات میں کوئی دو رائے نہیں کہ مسلمان اس وقت تاریخ کے مشکل دور سے گزر رہے ہیں۔دنیا کے دوسری قوموں کی طرح سائنسی ایجادات اور تعلیم کے شعبے میں مہارت تو کُجا ،یہ قوم آج امن کیلئے بھی ترس رہی ہے۔جنوبی ایشیاء میں اگر افغان خطہ پچھلے چار دہائیوں سے مسلسل شورش اور بدامنی کی لپیٹ میں ہے تو یہ غیروں کے ساتھ اپنوں کا بھی عمل دخل ہے۔ اسی طرح آج اگر مشرق وسطیٰ کا علاقہ میدان جنگ بن چکاہے تو وہاں پر بھی مسلمان ایک دوسرے کو نیچادکھانے میں مصروف ہیں ۔ جس افغانستان کو
مزید پڑھیے



مِسِ خام کو جس نے کندن بنایا

بدھ 21 نومبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
دنیا جہالت کی گھٹا ٹوپ اندھیروں میں گھری ہوئی تھی ۔عقل اورخِرد کے ہوتے ہوئے انسانیت تباہی کے دہانے پرپہنچ چکی تھی اورروحانیت نام کی کوئی چیز باقی نہیں تھی ۔ بالخصوص دنیائے عرب تو اس تھرڈ کلاس کی سوسائٹی کامنظر پیش کررہی تھی جہاں کمزوروں اور ناداروں کوانسان کے نام سے پکارنا عار اورطاقت سب کچھ سمجھا جاتاتھا۔جب تمام حدود سے تجاوزفخر اور شرف ٹھہرا اور خوئے ابلیسی انسانیت کی طرف منتقل ہونے لگی۔جب اشرف المخلوقات کا حسین لقب بھی انسان کیلئے نامناسب ٹھہراتورب کائنات کی حکیم ذات کو اس بیمار معاشرے اور قابل رحم سماج پر ترس آیا
مزید پڑھیے


پولیس آفیسر طاہر داوڑ کی شہادت اور چند سوالات

هفته 17 نومبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
پولیس آفیسر محمد طاہر داوڑ کے اغواء اور بعد میں مبینہ شہادت نے ایک سوال کی بجائے کئی سوالات کو جنم دیاہے ۔ ایسے سوالات کا تسلی بخش جواب دینا ریاست کی ذمہ داری ہوتی ہے بشرطیکہ وہ ایک بنانا ری پبلکBanana Republic) )نہ ہو۔اور حال یہ ہے کہ خیبر پختونخوا میں امن وامان کے حوالے سے نمایاں خدمات سرانجام دینے والے نڈر پولیس آفیسر محمدطاہر داوڑ کے اغواء اور شہادت سے پیداہونے والے سوالات کو دوٹوک اور تسلی بخش جواب کہنے سے حکومت تاحال کتراتی نظر آتی ہے۔ ایس پی محمد طاہر داوڑ چھبیس اکتوبر کو اس وقت سیف
مزید پڑھیے


مولانا سمیع الحق شہید

جمعرات 08 نومبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
ایک پہچان اُن کی جامعہ دارالعلوم حقانیہ تھی اور دوسری افغان جہاد اور افغان طالبان۔ دنیا مولانا سمیع الحق کو انہی دو حیثیتوں سے جانتی تھی ۔ جامعہ حقانیہ اکوڑہ میں ہزاروں کی تعداد میں طالبعلموں کی کفالت اور انہیں دینی علوم سے آراستہ کرنا مولانا سمیع الحق کی وہ بیش بہا خدمات تھیں جن کی ایک دنیا معترف رہی ہے ۔ جو لوگ مولانا کی اِن خدمات سے صرف نظر کرتے ہیں ، وہ گویا سورج کو ایک انگلی سے چھپانے کی ناکام کوشش کرتے ہیں۔نوشہرہ کے قصبے اکوڑہ خٹک میںدارالعلوم ثانی کے نام سے شہرت رکھنے والاتاریخ علمی
مزید پڑھیے


مولانا فضل الرحمن اور عمران خان ۔ مسئلہ کیاہے ؟

جمعرات 01 نومبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
سیاستدانوں کے درمیان سیاسی اختلافات کوئی اچھنبے کی بات نہیں۔ ایسے اختلافات ہر وقت سیاستدانوں کے بیچ ہوتے رہتے ہیں اور شاید یہی سیاست کا حسن بھی ہے۔سیاسی منظرنامے کا رنگ اس وقت بدصورتی اور بدمزگی کا روپ دھار لیتاہے جب یہ حضرات ایک دوسرے سے سیاسی اختلاف کرنے کی بجائے ذاتی انتقام پر اتر آتے ہیں ۔اس انتقام کا بالآخر نتیجہ یہ نکلتاہے کہ یہ حضرات ایک دوسرے پر کیچڑ اچھالنے اورایک دوسرے کو ننگی گالیوں سے نوازنے سے بھی احتراز نہیں کرتے۔ مولانا فضل الرحمن اور وزیراعظم عمران خان کی سیاست بھی آج کل اس مرحلے میں داخل
مزید پڑھیے


افغانستان اور وار آن ٹیرر

جمعه 19 اکتوبر 2018ء
محمد حسین ہنز ل
امریکہ میں نائن الیون کا واقعہ اٹھارہ برس پہلے رونما ہوا ۔اس واقعے کے بعد امریکہ نے دہشتگردی کے خلاف ایک جنگ شروع کرنے کی ٹھان لی جس کانام وار آن ٹیرررکھا گیا۔ وار آن ٹیرر کے تحت امریکہ نے ان لوگوں سے نمٹنا تھا جو القاعدہ کی طرح ورلڈ ٹریڈ سنٹرپر حملوں میں براہ راست ملوث تھے یا پھر افغان طالبان کی شکل میں اس تنظیم کے سہولت کار تھے۔ وار آن ٹیرر کے آغاز میں اس وقت کے امریکی صدر جارج بش نے اعلان کیا تھا کہ امریکی حکومت صرف چند ہفتوں میں دہشتگردوں سے نمٹے گی۔ نائن
مزید پڑھیے