BN

محمد حسین ہنزل


غنی خان کی دنیا


غنی خان کی شاعری کے بارے میں کچھ کہنا یا لکھنا ایک مشکل کام ہے ۔ کئی دفعہ اس مشکل کام کو کرنے کا ارادہ کرلیتاہوں لیکن پھر ہچکچاجاتاہوں کہ ایک ایسے شاعر کے بارے میں آخر کیا لکھوں جوکسی کے ہاں فلسفی اورکسی کے نزدیک وہ ایک فلسفی شاعرتھے جبکہ خود انہوں نے اپنے آپ کوہمیشہ لیونے فلسفی کہاتھا۔جہاں تک میں نے ان کو پڑھا یا سنا ہے تو میں سمجھتا ہوں کہ مرحوم غنی خان مذکورہ تینوں صفات کے حامل شاعر تھے۔ان کی لازوال شاعری میں تصوف کے جلوے بھی ملتے ہیں اور فلسفیانہ پیچیدگیاں بھی ۔
اتوار 21 اپریل 2019ء

’’تکبر اور فساد یا ام الخبائث‘‘

اتوار 14 اپریل 2019ء
محمد حسین ہنز ل
کیا ہم نے کبھی غور کیا ہے کہ " تکبر " کیا ہوتا ہے ۔ اسی طرح ہم میں سے بے شمار لوگ " لفظ فساد " کا استعمال تو کرتے ہیں لیکن اکثریت کو اس لفظ کا مفہوم یا تو سرے سے معلوم نہیں ہے یا پھر اس کو روایتی انداز میں لیتے ہیں ۔ مثال کے طور پر ہمارے معاشرے میں بہت سے لوگ کسی کی پرآئش زندگی، خوش پوشی اور نظافت کو بھی تکبر کے کھاتے میں ڈال دیتے ہیں ۔ اس بارے میں راقم نے بذات خود بے شمار لوگوں کو یہ کہتے سنا
مزید پڑھیے


دینی مدرسوں میں کیا پڑھایا جاتاہے ؟ گزشتہ سے پیوستہ

بدھ 10 اپریل 2019ء
محمد حسین ہنز ل
اسی طرح معقولات میںقطب الدین رازی ؒکی قطبی ،قاضی محب اللہ بہاری(1707ء ) کا سلم العلوم، میرسیدشریف جرجانیؒ کی کتابیںمیر قطبی اور صغریٰ کبریٰ جبکہ اثیرالدین ابہریؒ( 1344ء )کی ایساغوجی ،علامہ تفتازانی ہی کی تہذیب اور عبداللہ یزدیؒ(1575 ء )کی شرح تہذیب جیسی کتابیں درس نظامی کے تحت پڑھانے کا معمول تھا۔ درس نظامی کا دوسرا دور1866میںدارالعلوم دیوبند کے قیام کے بعد شروع ہوتاہے۔ دارالعلوم دیوبند میں بھی مولانا نظام الدین سہالویؒکے مذکورہ نصاب درس نظامی کو اپنایاگیاتاہم اس میں کچھ ترمیمات کی گئیں ۔مثلاً تفسیر میں دارالعلوم دیوبند والوں نے دور اول کے درس نظامی کی نہج پرطلباء کو
مزید پڑھیے


دینی مدارس میں کیا پڑھایا جاتاہے ؟

بدھ 03 اپریل 2019ء
محمد حسین ہنز ل
اہل مدارس کے حوالے سے بات کرنا ہمارے ہاں ہرکوئی اپنا استحقاق سمجھتاہے لیکن اس طبقے کے حق میںکلمہ ِ خیر نہ کہنے پرگویاسب نے اجماع کیاہے۔ باالخصوص نائن الیون ڈرامے کے بعدنہ صرف یہ طبقہ ہرطرف سے زیادہ زیرعتاب رہا بلکہ ان اداروں کے تعلیمی نصاب میں بھی کیڑے نکالنے کی رَیت چل پڑی ۔ سب سے بڑھ کر ستم ظریفی یہ ہے کہ مدارس کے نصاب سے ہر وہ شخص زیادہ الرجک نظرآتاہے جن کومذکورہ نصاب کے بارے میں کچھ بھی پتہ نہیں۔ موجودہ حکومت میں ایک اہم عہدے پر براجمان وزیرصاحب نے تو گزشتہ دنوںیہ دعویٰ کرلیاکہ
مزید پڑھیے


کچھ تقاضے

هفته 30 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل
یہ دوسری صدی ہجری کا ابتدائی زمانہ تھااور عرب معاشرے میںمسلمانوں کے بیچ مسلکی مناظرے ایک عام روایت تھی۔ ایک دن خارجیوں کی ایک جماعت امام ابوحنیفہ ؒ کے پاس آئی اور کہاکہ ’’ مسجد کے دروزے پر دو جنازے ہیں،پہلا جنازہ ایک ایسی عورت کاہے جو زنا سے حاملہ ہوئی تھی اور بالآخرشرم کے مارے خودکُشی کرکے مرگئی ۔جبکہ دوسرا جنازہ ایک مرد کا ہے ،جو شراب کا پکا عادی تھا اور شراب پیتے پیتے اس کی موت واقع ہوئی‘‘۔امام ؒ نے پوچھا کہ ان دونوں کا مذہب کیا تھا؟ کیا یہودی تھے یاعیسائی تھے ؟ خارجیوں کا جواب
مزید پڑھیے



مفتی محمد تقی عثمانی سے بھی عداوت ؟

اتوار 24 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل
کراچی کو جس طرح پورے ملک کا معاشی مرکز سمجھاجاتاہے اسی طرح اس کے دینی اور علمی مرکز ہونے میں بھی دورائے نہیں۔ سہارنپور (ہندوستان) کی سرزمیں کو ایک زمانے میں دارالعلوم دیوبندجیسے دینی ادارے کاشرف حاصل تھا‘ الحمدللہ یہی شرف آج کل کراچی کو دارالعلوم کورنگی‘ جامعہ بنوری ٹاون اور جامعہ فاروقیہ جیسے مدارس کے قیام کے بعدحاصل ہوگئی ہے۔اسی لئے ہرسال ہزاروں کی تعداد میں نہ صرف ملک کے کونے کونے سے طلباء اس شہر کارخ کرتے ہیں بلکہ ہمسایہ ملکوں بنگلہ دیش ، برما ،افغانستان اور ایران کے علاوہ بے شمارافریقی اور عرب ملکوں کے طلباء
مزید پڑھیے


ختم بخاری کی روح پروَر تقریب میں شرکت

جمعرات 21 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل

ماہ رجب میں جب بھی دینی مدارس کی دستار بندیوں کاسلسلہ چل پڑتا ہے تومجھے ایک مشہور کتاب اور ایک کُندذہن طالبعلم کثرت سے یادآتے ہیں۔کتاب کانام صحیح بخاری ہے جبکہ طالبعلم سے میری مراد ملا زرغون اخوند ہے جوپندر ہ برس پہلے ژوب کے ایک مدرسے میں دورہ حدیث کے طالبعلم رہے تھے ۔ملازرغون اخوند کی کندذہنی کایہ عالم تھا کہ وہ مولوی توبن گئے لیکن حدیث کی مشہورکتاب(صحیح بخاری )کانام تک سیکھ نہیں پائے۔مذکورہ کتاب کی جلدکارنگ چونکہ پیلاتھا یوںملا زرغون اخوند بوقت ضرورت اسے’’پیلی کتاب‘‘ کہہ کر جان چھڑالیتے۔ گزشتہ اتوارکو ہمیں  بھی ’’پیلے رنگ کی مبارک
مزید پڑھیے


نیوزی لینڈ حملہ : شُوٹنگ یا کھلی دہشتگردی

پیر 18 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل
نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجدوںمیں جمعہ کو ہونے والا فائرنگ حملہ اس ملک کی تاریخ کاسب سے بڑا سفاکانہ حملہ تھا۔اس حملے میںپچاس بے گناہ نمازی پل بھرمیں شہید اور اتنی ہی تعداد میں لوگ زخمی ہوئے ۔خون کی یہ ہولی اس وقت کھیلی گئی جب ڈینز ایونیو کی ’’النور‘‘ اور لن ووڈ مسجدمیں سینکڑوں مسلمان جمعہ کی نمازکیلئے جمع تھے۔دونوں ہاتھوں سے کلاشنکوف تھامے اورنمازیوںپراندھا دھند فائرنگ کرنے والے اس سفاک انسان کا نام’’ برینٹن ٹیرنٹ ‘‘ تھا جبکہ اس کا تعلق آسٹریلیا سے بتایا جاتا ہے۔ برینٹن ٹیرنٹ کی سفاکیت کا اندازہ اس
مزید پڑھیے


فلسطینی پھولوں کی تمنائیں

اتوار 17 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل
دانشوروںکے سنہرے اقوال کی مانند بعض تصویروں میںبھی اتنی گہرائی ہوتی ہے کہ دیکھنے والے کو بہت دیر تک سوچنے پر مجبور کردیتی ہے۔ایسی تصویروںپر اگر غور کیا جائے تویہ ایک طویل پس منظر کی حامل ہوتی ہیں ۔ اس وقت میری نظریںبھی ایک قابل غور تصویرپرجمی ہوئی ہے ۔یہ تصویر ایک چودہ سالہ فلسطینی محمدتمیمی بچے کی ہے جو اس وقت راملہ کے ہسپتال میں کومہ کی حالت میں محوِ خواب ہے۔ محمدتمیمی کو وقت کے غاصب اسرائیل سے نفرت کی اس سُلگتی چنگاری نے موت کی سرحد تک لایاہے جس نے اس کا نازک سینہ بے قرار کیاہواتھا۔
مزید پڑھیے


ژوب: ادب اور نئی لائبریری کاقیام

جمعه 15 مارچ 2019ء
محمد حسین ہنز ل
ژوب کی زرخیزمٹی نے ہر دور میں رجالِ کارپیداکیے ہیں ۔انگریزی استعمار کے خلاف جدوجہدکی بات چھڑ جائے تو بھی آپ کو اس خطے ہی کے سپوتوں کی مزاحمتی داستانیں زیادہ سننے کوملیں گی ۔اہل نظراورسیاسی بصیرت رکھنے والوں کا تذکرہ ہوجائے توبھی ژوب ہرزمانے میں عبقری شخصیات کا نمائندہ علاقہ رہاہے۔ چونکہ یہاں با ت ادب کی کرنی ہے یوں اس مختصر مضمون میں صرف یہاں کے ادب اور مجاورانِ ادب ہی کو موضوع بناتے ہیںاورسچی بات یہ ہے کہ ژوب اور ادب کابھی ہرزمانے میں چھولی دامن کا ساتھ رہاہے ۔پشتو زبان کے مشہور تذکرے ’’تذکرۃ الاولیاء ‘‘
مزید پڑھیے