Common frontend top

محمد صغیر قمر


خیبر خیبر یا یہود


یہ ایک پرانی یاد ہے،یہ پرانی بات ہے لیکن ایک دائمی زخم کی مانند ہے،جس کو میں کریدتا رہتا ہوں اور یہ زخم کبھی بھرتا نہیں،مندمل نہیں ہوتا۔ایک عشرے سے زائد کی بات ہوگی۔ میری نظریں حرم کعبہ پر جم کر رہ گئیں۔ہیبت اور جلال میرے رگ و ریشے میں اترنے لگا۔ صدیوں سے انسانوں کی توجہ کا مرکز مسجد الحرام‘ میری آنکھوں سے دل میں اتر رہی تھی ۔چند روز قبل میں یہاں آیا تھا ۔ اﷲ کی توفیق سے پہلے بھی کئی بار یہاں آ چکا ہوں ۔ جب بھی آتا ہوں‘ جانے کو جی نہیں کرتا ۔ اب
جمعرات 21 دسمبر 2023ء مزید پڑھیے

عبرت کا وقت باقی ہے

جمعه 15 دسمبر 2023ء
محمد صغیر قمر
انسانوں کی غلامی کا فیصلہ نہ ہی کوئی باڑ کر سکتی ہے,نہ کوئی دیوار,نہ ویٹو,نہ نیٹو,نہ کوئی عدالت نہ کوئی حکومت۔تاریخ بتاتی ہے جب بھی انسان اپنی آزادی کے لیے جان ہتھیلی پر رکھ نکلا یہ سب رکاوٹیں خس و خاشاک کی طرح بہہ گئیں۔ ہمت مرداں ،مدد خدا انسان مسلمان ہو یا عیسائی یا سکھ اس وقت غلام نہیں رکھا جاسکتا جب تک وہ خود غلامی پر راضی نہ ہو جائیں۔بھارتی سپریم کورٹ نے مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے مودی سرکار کے فیصلے کو برقرار رکھا۔ یہ فیصلہ مایوس کن ہونے کے باوجود حیران کن
مزید پڑھیے


اللہ کی لاٹھی

جمعه 08 دسمبر 2023ء
محمد صغیر قمر
فلسطینی لہو میں نہا گئے،ہزاروں بچے بلک بلک کر دم توڑ گئے اور ایک دنیا تماشہ دیکھتی رہ گئی۔ مسلم دنیا کے حکمران اپنے رب سے بے نیاز ہوئے تو کیا وہ نہیں جانتے کہ اللہ سب سے بے نیاز ہے۔جب آفت گرنے کا وقت آیا تو ان کے ہاتھ کچھ نہیں ہو گا۔ جہاں رب کا حکم چلتا ہے وہاں امریکا اور اسرائیل کا بس نہیں چل پائے گا ،بخدا نہیں چلے گا۔ کوئی بتا سکتا ہے کہ غزہ کے بچے کس جرم میں مارے گئے؟ گاہے انسان کو مایوسیاں گھیر تی ہیں تو وہ
مزید پڑھیے


غم گسار

جمعرات 30 نومبر 2023ء
محمد صغیر قمر
میں نے انہیں بیٹی کی رخصتی کا کارڈ ویٹس ایپ کیا۔مجھے معلوم تھا کہ وہ تین چارروزتک کریکٹر ایجوکیشن کے سالانہ پروگرام میں بہت مصروف ہیں۔ویسے بھی دن میں دوچار بار بات کر لیتے تھے۔کارڈ ملتے ہی کال آگئی۔ ''سر ضرور حاضری ہوگی''گزشتہ دوماہ سے شوگر کنٹرول کرنے کے لیے پروٹین ڈائٹ پر تھے۔کہنے لگے ''مجھے کیا کھلائیں گے؟''میں نے بھی یکم نومبر سے ان کے ساتھ طے کیا تھا کہ دسمبر کے شروع تک پروٹین کھاؤں گا۔اس لیے جوابا''ان سے کہہ دیا کہ آپ روٹی چاول تو کھائیں گے نہیں البتہ پھر بھی ''رزق حلال''ہی ملے گا۔ ''ٹھیک ہوگیا'' یہ کہہ
مزید پڑھیے


وچ مرزا یار پھرے

جمعرات 23 نومبر 2023ء
محمد صغیر قمر
میں اس ملک کا ’’آزاد خیال‘‘ دانشور ہوں۔ میں جو سوچتا ہوں وہی کرتا ہوں کیونکہ میں ہی عقل کل ہوں۔میرا دل کرتا ہے کہ میں اس ملک کا ہر قانون‘ ہر اصول اور ہر ضابطہ بدل دوں۔ یہاں بہت کچھ ایسا ہے جو میری مرضی اور خواہش کے علی الرغم ہوا ہے۔یہ ملک میری منشا کے مطابق چلنا چاہیے اس لیے میں ہر روز سر شام مختلف چینلز پر آ بیٹھتا ہوں اور اپنا گلا پھاڑ پھاڑ کر اس قوم کو ’’اصل بات‘‘بتاتا ہوں لیکن کوئی بھی میری سننے کو تیار نہیں ہے۔ میں اس بات کو تسلیم ہی
مزید پڑھیے



مولا! ان کو گن لے

جمعرات 16 نومبر 2023ء
محمد صغیر قمر
حشر کامیدان ہوگا،غزہ کے ننھے بچوں کے ہاتھ ہوں گے اور ہمارے گریبان ہوں گے۔کیا اس آسمان تلے کوئی ایک بھی ایسا حکمران نہیں بچا جو اس ظلم کو روکنے کے لیے میدان میں نکلے۔سب کو سانپ سونگھ گیا۔ مصر، اردن، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین، سوڈان، مراکش،موریطانیہ اور جبوتی نے اوآئی سی اجلاس میں غزہ کے مسلمانوں کے قتل عام کے خلاف کوئی فیصلہ لینے سے انکار کر دیا۔ وجہ ایک ہی ہے کہ عالمی مشٹنڈے امریکا اور اسرائیل ناراض ہوجائیں گے مگر اللہ بے شک ناراض ہو جائے۔ میرے مولا! ان سے خود نمٹ لے,ان کو گن لے مولا! اب کے
مزید پڑھیے


کیا مر گئے اہل جنوں

جمعرات 09 نومبر 2023ء
محمد صغیر قمر
اکثر نوحے ہی لکھتا ہوں اورآج پھر نوحہ لکھ رہا ہوں۔یہ نوحہ ہے ضمیر کی، یقین کی موت کا۔ یہ نوحہ ہے ڈیڑھ ارب سے زیادہ بے وزن، بے وقعت، ماضی و حال و مستقبل سے بے گانہ ہجوم مومناں کا۔یہ اس ہجوم مومناں پر گناہوں کی سزاکی طرح مسلط ان کے بزدل، پست ہمت اور غلام در غلام حکمرانوں کا سوگ ہے۔ یہ دنیا بھر میں ان مسلمان علمائ، مفکرین ا ور دانشوروں کا نوحہ ہے کہ جن کے علم و دانش سے اپنے محروم اور اغیاز فیض پاتے ہیں۔ یہ ان مسلم سرمایہ داروں اور جاگیر داروں کا سوگ
مزید پڑھیے


اسرائیل ایک ناجائز ریاست

جمعه 03 نومبر 2023ء
محمد صغیر قمر
نہیں معلوم کہ ہٹلر کے بارے میں یہ روایت درست ہے یا نہیں۔اس سے پوچھا گیا کہ تم نے لاکھوں یہودی مار دیے لیکن چند کیوں چھوڑ دیے تو اس کا جواب تھا’تاکہ دنیا کو معلوم ہو سکے کہ میں نے انہیں کیوں مارا۔آنے والے والا وقت جب ہٹلر کو مطعون کرے گا تو یہودیوں کے کرتوت دیکھ کرجان جائیں گے۔رسول اللہﷺ نے جب مکہ سے مدینہ منورہ ہجرت فرمائی توجن لوگوں کی عہد شکنیوں اور سازشوں سے کا مقابلہ کیا وہ یہود ہی تھے۔یہ اپنی دولت کے ساتھ قلعہ بند رہتے تھے اور مشرکین کوآپ ﷺکے خلاف
مزید پڑھیے


ضمیر فروش دانشور

جمعرات 26 اکتوبر 2023ء
محمد صغیر قمر
چند دانشور کہتے ہیں کہ حماس کو کیا ضرورت تھی کہ اسرائیل پر چڑھائی کر دی؟اسرائیل کے پیچھے امریکا ہے اور اس کے ساتھ یورپ کھڑا ہے۔حماس بظاہر ایسی قوت تو ہے نہیں کہ اس قدر بڑی طاقتوں کا مقابلہ کرسکے۔حماس کے پاس نہ جدید اسلحہ ہے نہ فوجی طاقت۔چالیس کلو میٹرلمبی اور دس کلو میٹر چوڑی پٹی پر بسنے والے فلسطینیوں نے سات اکتوبر کو ایک دم اسرائیل کو جا لیا۔ حقیقت یہ ہے کہ یہودیوں کو ایک منصوبہ بندی کے ساتھ عرب نام نہاد اسلامی ملکوں کے بیچوں بیچ لا بسایا گیا تھا۔یہ بات اس وقت بھی دیکھی
مزید پڑھیے


امریکا، خدا نہیں، بخدا نہیں……(2)

جمعرات 19 اکتوبر 2023ء
محمد صغیر قمر
اسرائیل نے ۲۰۰۲ء کے بعد الفتح رہنما مروان بار گھوتی کو جیل بھیجتے ہوئے الزام لگایا تھا کہ ’’وہ دوسری انتفاضہ میں اسرائیل کے خلاف دہشت گردانہ کارروائیوں کی رہنمائی کرتا تھا‘‘۔ اپنے خلاف مقدمے کی کارروائی میں واضح طورپر جانب داری نظر آنے پر مروان گھوتی نے اپنے دفاع سے انکار کر دیا تھا لیکن اس کے باوجود اسے پانچ بار عمر قید کی سزا سنائی گئی۔ یہ سزائیں دینے والے ججوں نے ان عدالتی فیصلوں کو بھی کوئی اہمیت نہیں دی، جن میں کئی جرائم میں عدم ثبوت کے باعث مروان گھوتی کو بری کر دیا گیا
مزید پڑھیے








اہم خبریں