Common frontend top

محمد صغیر قمر


رواداری،عدم انتقام!!


نہ جانے کیا افتاد آن پڑی، کیا جادو چلا،ہم ایک ہجو م سے قوم تک کا سفر طے نہیںکر پائے۔ یہ دائروں میں سفر ،کوہلو کے بیل کی طرح۔منزل تو آغاز سفر میں واضح تھی۔سفر شروع ہوا تو ہر ایک راہرو رہبر نہ بن سکا۔ایک دوسرے کے گریبان ناپتا یہ ہجوم،یوں لگتا ہے یہاں کبھی قانون تھا نہ قانون کی حکمرانی۔اس افتاد میں ایک عام شہری یوں پھنسا ، نَہ پائے رَفتَن، نَہ جائے ماندَن۔دنیا کا ہر معاشرہ رواداری ، بھائی چارے اور عدم انتقام سے جڑا ہوا ہوتا ہے۔معاشروں کو جوڑ کر رکھنے کے لیے جہاں مقصد
جمعرات 10 نومبر 2022ء مزید پڑھیے

سراب ہے سراب!!

جمعرات 03 نومبر 2022ء
محمد صغیر قمر
پاکستان میں تبدیلی اورنظام کی باتین سن سن کر کان پل گئے۔۱۹۷۳ کادستور بن جانے کے بعد یہ بحث ختم ہو جانی چاہیے تھی لیکن اس دستور پر عمل کسی نے نہ کیا ۔یہی وجہ ہے کہ اب تک عوام کو دستور سے ہٹ کر مختلف بھول بلیوں میں اتارا جاتا رہا۔افسوس ناک بات یہ ہے کہ اس دستور کی موجودگی کے باوجودہمارے حکمران پہلو تہی کرتے رہے،ہماری عدالتیں اور اسمبلیاں دستور پر عملدرآمد یقینی بنا سکیں نہ ہی ہمارے حکمران۔تھوڑی دورہر راہرو کے ساتھ چلنے کے بعد ہمارے عوام اپنی منزل کھو دیتے ہیں اور ستم
مزید پڑھیے


قائد کا پاکستان

جمعرات 27 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
کیا پاکستان سیکولر ملک ہے کیا قائد اعظم سیکولر تھے ۔پون صدی بعد یہ بحث کیا معنی رکھتی ہے ؟ہمارے بعض اینکرز جان بوجھ کر ایک حقیقت کوجان بوجھ کر متنازعہ بناتے ہیں ۔ اب پون صدی بعد ایک نئی بحث سننے کو مل رہی ہے کہ قائد اعظم ؒ ایک سیکولر انسان تھے ۔قائد اعظم کی ساری زندگی شفاف اور قابل رشک ہے ۔ ایسے فرد کی زندگی اور کردار پر تنقید تو وہی کر سکتا ہے جس کا اپنا کردار اور عمل اس نابغہ روز گار سے بہتر ہو۔ یہ لوگ ان آقائوں کی زبان بولتے
مزید پڑھیے


دروبام کو تو سجا لیا!!

بدھ 19 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
وہ لمحے جب لالہ و گل کے لبوںپر مسکراہٹ بکھری تھی، وہ دن جب،صحرائوں میں شبنم کے موتی ڈھلکے تھے اور خوشبوئوں نے انگڑائی لی تھی۔ وہ دلنشیں ساعتیں جب اﷲ نے اس دنیا کے آتش کدے ٹھنڈے کرنے ‘ ظلم کی طویل رات کو نور سے بھر دینے اور سسکتی تڑپتی انسانیت کو سکینت عطا کرنے کا فیصلہ کیا ۔رسول اللہ ؐ کی آمد اس دنیا کا سب سے خوب صورت اور سب سے حسین لمحہ ہے ۔ راتوں میں اجالا پھیلنے لگا ‘حجاز کے باسی خواہش کرنے لگے تھے کاش! یہ رات ایسے ہی باقی رہے ۔خدا غریق
مزید پڑھیے


اسلامی دنیا کے حکمران!!

جمعرات 13 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
اسلام دنیا کا دوسرا سب سے بڑا مذہب ہے۔اسلام مشرق وسطی، شمالی افریقہ اور ایشیا کے بعض علاقوں میں غالب اکثریت کا دین ہے۔ جبکہ چین، بلقان، مشرقی یورپ اور روس میں مسلمان بڑی تعداد میںموجود ہیں۔مسلم مہاجرین کی کثیر تعداد دنیا کے دیگر حصوں مثلا مغربی یورپ میں آباد ہے۔ایک امریکی تھنک ٹینک پیو فورم آن رلیجن اینڈ پبلک لائف کی رپورٹ کے مطابق اس وقت دنیا میں مسلمانوں کی تعداد ایک ارب ستاون کروڑ ہے اور ان میں سے ساٹھ فیصد براعظم ایشیا میں رہتے ہیں۔ اس رپورٹ کی تیاری میں تین برس کا عرصہ لگا اور
مزید پڑھیے



فداک یارسول اللہ!

اتوار 09 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
یہ عشق ہے،سمجھنے کا نہیں۔۔!!سمجھ آتا ہی نہیں جن کو سمجھ آ جائے انکے دل کٹ جاتے ہیں یہ نکلتا نہیں۔ غزوہ خندق کے موقع پر جب ،عشق والے جھوم جھوم کر کہتے تھے: ’’ہم وہ ہیں جنہوں نے محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے ہاتھ پر اس وقت تک جہاد کرنے کی بیعت کی جب تک ہماری جان میں جان ہے ‘‘ اللہ کے رسول ﷺسے ہر دور کے انسانوں کا والہانہ عشق انسانیت کی تاریخ کا ایک انوکھا باب ہے۔ دنیا کی ہر قوم میں عشق اور محبت کی لاتعداد کہانیاں ملتی ہیں جن میں ہیرو سے بے پناہ
مزید پڑھیے


حصارِ ذات

جمعرات 06 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
جب قومیں صرف امیدوں پر جیتی ہیں‘عبرت حاصل نہیں کرتیں اور رب کاخوف ترک کر دیتی ہیں تو تباہیاں آتی ہیں ۔جب اقتدار کے ایوانوں میں جھوٹ اور افتراء کی فیکٹریاں لگ جائیں،جب عدالتیںانصاف نہ دے سکیں اور عام شہری کی وقعت نہ رہے۔جب جھوٹ اتنا بولا جائے کہ سچ کا گماں ہو اورخلق خدا سچ تلاشنے کی بجائے جھوٹ کے پیچھے کھڑی ہو جائے۔اللہ کی زمیں ظلم سے بھرنے لگتی ہے،تب جہانوں کا مالک فیصلہ سنا دیتا ہے۔ انسان کبھی تو ذات کے حصار سے باہر نکلے،کبھی سیاست کاری ترک کرے، کبھی نام نہاد اشرافیہ کے مراکز کو چھوڑے
مزید پڑھیے


تبدیلی یا انقلاب؟

هفته 01 اکتوبر 2022ء
محمد صغیر قمر
زندگی تو انقلاب کے نعرے لگاتے اور تبدیلی کا خواب دیکھتے گزر گئی۔انقلاب آ یا نہ تبدیلی!! ہر دور میں نیا لیڈر سامنے آتا رہا اور ہر نیا آنے والا سہانے سپنے دکھا کرخود کسی نئی دنیا میںکھوجاتا ہے۔کچھ نہیں بدلا،نہ ہم ،نہ لیڈر نہ خواب۔ انقلاب تو خواب تھا ہی نہیں۔یہ خواب کیسے بن گیا؟یہ ایک حقیقت تھی جسے دنیا نے کھلی آنکھوں سے دیکھا۔اس دنیا میں پائیدار انقلاب ایک ہی تھا،رسول اللہﷺکا انقلاب۔محض 23 برس میں اس انقلاب نے معلوم دنیا کا نقشہ بدل دیا۔آپﷺ نے صفا سے جب اہل قریش کو پکارا تھا اور وہ اپنے مصنوعی خدائوں
مزید پڑھیے


شقاوت‘ حقارت‘ ہلاکت

منگل 27  ستمبر 2022ء
محمد صغیر قمر
برداشت‘ وضع داری اور در گزر اس قدر ارزاں کیوں ہے؟ہم اپنا ماضی دور ،بہت دور چھوڑآئے؟ اضطراب کے عالم میں سو چ رہا ہوں۔ انتقام انتقام پکارتی خلق خداکا انجام کیا ہوگا۔کیسے وہ لمحے تھے، وحشت کی آگ میں تپتی سر زمین مکہ کے سر پر جس روز رحمت للعالمین ؐ دس ہزار کا لشکر لے کر کھڑے تھے۔ ابو سفیان کی آنکھوں میں خون اتر آیا تھا وہ فراز کوہ سے اس لشکر کو دیکھ کر آنے والے دور کو چشم تصور سے دیکھ رہے تھے۔ یہی مکہ المکرمہ جس میں ابو سفیان اور کفر و شرک کے پشتیبانوں
مزید پڑھیے


یہ خون خاک نشیناں تھا ؟

پیر 19  ستمبر 2022ء
محمد صغیر قمر
پھر ستمبرآیا،میں نے ۶۵ء کے شہیدوں کو جھک کر سلام کیا ،کشمیر اورکارگل کے شہیدوں کو شدت غم سے یاد کیا۔ کئی روز گزرے ایک عجیب سوال ہے جو ہر صبح مشرق سے طلوع ہونے والے آفتاب کے ساتھ ابھرتا ہے۔ راستے کے درو دیوار اور درختوں پر دن بھر سورج کی روشنی کے ساتھ چمکتا ہے اور شام پڑتی ہے تو دھوپ کے ساتھ تحلیل نہیں ہوتا۔مغربی افق پر شفق پھوٹتی ہے تو یہ سوال کچھ اور اجاگر ہوجاتا ہے، جیسے کوئی دلدوز نغمہ جو ہوا میں ہر طرف سے امنڈتا اور قلب و روح کی گہرائیوں سے پھوٹتا
مزید پڑھیے








اہم خبریں