BN

محمد عامر خاکوانی


تین اصول


شوگر سکینڈل کی فرانزک آڈٹ کی رپورٹ سامنے آ چکی ہے۔ جب یہ سطریں لکھی جا رہی تھیں، تب ٹی وی سکرین پر محترم شہزاد اکبر کے بیان کردہ حیران کن انکشافات جھلملا رہے تھے۔ اس رپورٹ میں بہت کچھ ایسا ہے جو جہانگیر ترین، مخدوم خسرو بختیار اور اس معاملے سے جڑے دیگر اہم شخصیات کے امیج کو سخت نقصان پہنچائے گا۔ وزیراعظم عمران خان کو یہ کریڈٹ تو دینا پڑے گا کہ انہوں نے چینی سکینڈل کو سابقہ حکومتوں کی طرح چھپانے کے بجائے اسے گہرائی سے کھوجنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے یہ رپورٹ پبلک کرنے کا
جمعه 22 مئی 2020ء

چھوٹے بڑے اعمال

بدھ 20 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
رمضان کے آخری عشرے کے بابرکت دن ہیں،روحانیت کی ایک خاص کیفیت ہے جو آج کل چاروں طرف محسوس ہوتی ہے۔ ایسے میں سیاست یا کسی دوسرے موضوع پر لکھنے کا جی نہیں چاہتا۔ سوچا کہ آج کے کالم میں قارئین کے لئے چند ایک مختلف نوعیت کے ٹکڑے شامل کئے جائیں۔ کارِخیر، نیک اعمال کے مشورے ، ایقان افروز نصیحت اور ٹِپس۔ میرے جیسے دنیا دار توصرف داد اور تحسین کے جملوں پر ہی اکتفا کر لیں، مگر جو عمل کے دھنی ہیں، وہ انہیں اپنی زندگی کا حصہ بنا کر مثبت،شاندار تبدیلی لاسکتے ہیں۔
مزید پڑھیے


میچ فکسنگ، وسیم اکرم اورسلیم ملک کا متنازع کردار

اتوار 17 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
1999ء انگلینڈ میں ورلڈ کپ فائنل تھا۔ پاکستان فیورٹ تھا،سیمی فائنل پاکستان نے بڑے اچھے طریقے سے جیتا۔ شعیب اختر نے اپنی سپیڈ سے تہلکہ مچا رکھا تھا، پاکستانی ٹیم کا کمبی نیشن بہت عمدہ تھا، بلے باز رنز کر رہے تھے، اظہر محمود، عبدالرزاق دو اعلیٰ آل رائونڈر پرفارم کر رہے تھے، وسیم کپتان تھے۔ فائنل میں وسیم نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کو کھلانے کے بجائے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔ آسٹریلوی کپتان نے حیران ہو کر کمنٹیٹر کو بتایا کہ ہم نے بھی یہی سوچا تھا۔ اس روزپچ گیلی تھی، اس پر پہلے بیٹنگ کرنا غلط تھا۔
مزید پڑھیے


کرکٹ : گڑھے مردے کیوں اکھاڑے جا رہے ؟

هفته 16 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
آج کل کرونا کی وجہ سے ہر کوئی گھر پر ہے، کرکٹر حضرات بھی اپنے گھرو ں میں رہ کر ان ڈور ورزش وغیرہ کر رہے ہیں، جم بھی بند ہونے کے باعث بیرونی مصروفیت بہت کم ۔ لاک ڈائون چاہے جزوی ہے یا ہفتے میں تین دن، بہرحال اس کی وجہ سے پاکستان اور بیرونی دنیا میں لوگوں کی بہت بڑی تعداد گھروں میں وقت گزار رہی ہے۔ اس کا ایک نتیجہ یہ نکلا ہے کہ بڑی تعداد میں یوٹیوب ویڈیوز بننا شروع ہوگئی ہیں۔ سابق کھلاڑی بھی آج کل پنجابی محاورے کے مطابق ’’ویلے ‘‘پھر رہے ہیں،
مزید پڑھیے


مقامی ، غیر ملکی ہیرو بحث، چند مزیدپہلو

بدھ 13 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
پیپلزپارٹی سندھ کی رہنما نفیسہ شاہ نے ڈرامہ ارطغرل کے بارے میں بیان دیا کہ اسے پی ٹی وی سے نشر نہیں ہونا چاہیے، اس کے بجائے مقامی ہیروز پرڈرامے دکھانے چاہئیں۔ اس پرگزشتہ روز کالم لکھا کہ ہیروز مقامی یا غیر ملکی نہیں ہوتے ، ہیرو تو وہ ہوتے ہیں جو چپکے سے دل میں بسیرا کر لیں ، رنگ نسل قومیت کا تعصب اس میں آڑے نہیں آتا۔ اسی کالم میں عرض کیا کہ پاکستان جیسے سماج کابنیادی فیبرک مذہب اور نظریے سے بُناہے۔یہاں وہی ہیرو مقبول ہوں گے جن کا اللہ اور اس کے آخری رسول ﷺ
مزید پڑھیے



ہیرو مقامی یا غیر ملکی نہیں ہوتے

منگل 12 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
پیپلزپارٹی سندھ کی رہنما نفیسہ شاہ نے اگلے روز یہ بیان دیا کہ پی ٹی وی پر ڈرامہ ارطغرل نشر نہیں ہونا چاہیے تھا۔ انہوں نے فرمایا کہ مقامی ہیروز پر ڈرامے دکھانے چاہئیں۔ ہارون الرشید صاحب نے گزشتہ روز اس پر کالم لکھا ،عمدگی سے انہوں نے بات کی۔مقامی اور غیر مقامی ہیرو کے حوالے سے بات آگے بڑھانا چاہتا ہوں۔ ایک بات سمجھ لیں کہ ہیرو مقامی یا غیر ملکی نہیں ہوتا۔ ہیرو وہ ہے جو دل میں اترجائے۔، کسی رنگ ، قوم، نسل کی عصبیت سے بے نیاز۔ جان بوجھ کر، سوچ سمجھ کر، حساب کتاب سے
مزید پڑھیے


وظیفہ

اتوار 10 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
آج کل پی ٹی وی پر ڈرامہ غازی ارطغرل دکھایا جا رہا ہے۔ اس کا پہلا سیزن اردو ڈبنگ کے ساتھ ایک انٹرٹینمنٹ چینل سے دکھایا جا چکا ہے، اس ڈبنگ میں نام کو ارتغل کہا گیا تو یہی نام مشہور ہوگیا۔ ترک لب ولہجہ میں البتہ کردار اس نام کو’’ ارطرل‘‘ کہتے ہیں بلکہ بعض اوقات تو اس انداز سے کہ’’ ارطورو‘‘سنائی دیتا ہے، آخر میں ہلکا سا ’’ل‘‘ کا اشارہ ۔پچھلی والی اردوڈبنگ میںکرداروں کے ناموں کو خود ساختہ ایڈیٹنگ کے تحت بدل دیا گیاتھا۔ ارطغرل کو ارتغل، بامسے کو بابر، سیلجان کو شہناز، گوکچے کو روشنی اور
مزید پڑھیے


وہ جو منتظر ہیں

جمعه 08 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا وبا کے اثرات ملک کے ہر شعبے پر پڑے ہیں اور اس قدر گہرے کہ ان کا حقیقی اندازہ اگلے چند ماہ میں ہوگا۔ پاکستان میں بہت سی اچھی تنظیمیں سماجی خدمت کا کام کر رہی ہیں۔لاکھوں لوگوں کی زندگیوں میں انہوں نے آسانی پیدا کی۔ کورونا وبا کے باعث ان تنظیموں پر دبائو بڑھا ہے اور ان کے کارکنوںنے خود کو خطرے میں ڈال کر بے شمار متاثرین کی مدد کی۔ مسئلہ یہ ہے کہ پورا ملک متاثر ہوا بلکہ اوورسیز پاکستانی جو ہمیشہ سماجی خدمت کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں، وہ بھی کورونا
مزید پڑھیے


18ویں ترمیم پر بات کیوں نہیں ہوسکتی؟

منگل 05 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا کے باعث ہر قسم کی سرگرمیاںجمود کا شکار ہیں، سیاست پر بھی اس کے اثرات نظر آ رہے ہیں ۔ اٹھارویں ترمیم کی بحث نے البتہ کچھ ہل چل پیدا کی ہے ۔اگرچہ مدلل بحث کے بجائے دونوں اطراف سے طعن وتشنیع کو ترجیح دی جا رہی ہے۔ اٹھارویں ترمیم کے معاملہ کو پیچیدہ بنانے کے بجائے سمجھنے اور سمجھانے کی ضرورت ہے۔ یہ آئین میں ہونے والی ایک ترمیم ہے، جسے مروجہ اصول وضوابط کے مطابق یعنی دو تہائی اکثریت کے ساتھ پارلیمنٹ نے منظور کیا۔ اس سے پہلے بھی آئین میں ترامیم ہوئیں۔ اٹھارویں ترمیم کے بعد
مزید پڑھیے


پیادہ

اتوار 03 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
میں نے سامنے رکھا کاغذ تیسری بار اٹھایا اور پہلے حرف سے آخر تک اسے ایک بار پھر پڑھ گیا۔روایتی انداز میں لکھی چند سطریں،’’دیرینہ سیاسی کارکن ڈاکٹر خان انتقال کرگئے ۔انہیں قریبی قبرستان میں دفن کر دیا گیا، ان کی جماعت کے تمام کارکن اس سانحہ پر ملول ہیں ۔‘‘کاغذ رکھ کر میں نے کرسی کی پشت سے سر ٹکایا اورآنکھیں موند لیں۔ ذہن میںخان صاحب کی تصویر لہرائی ۔وہی دودھیا سپید سادہ لباس،گرے کلر کی واسکٹ میں ملبوس،سر پر جناح کیپ،ہاتھ میں سیاہ چمڑے کا بیگ اور مسکراتا چہرا۔یہ بیگ مختلف اخبارات، کاغذات اور پریس ریلیزوں سے
مزید پڑھیے