BN

ہارون الرشید



جنہیں راستے میں خبر ہوئی


لیڈر وہ ہوتاہے جو قوم کو متحد کرے نہ کہ منقسم اور منتشر ۔عدل کرنے والا مگر صبر، معاف اور ایثار کرنے والابھی ۔ انتقام کی خوذوالفقار علی بھٹو جیسے جینئس کو لے ڈوبی تو کوئی دوسرا کیا بچے گا؟ معلوم تھا کہ راولپنڈی سے راولا کوٹ کی مسافت طویل ہے ۔ اندازہ یہ نہ تھا کہ راستے اس قدر شکستہ اور دشوار ہیں ۔ کہیں کہیں تو پہاڑوں سے گرنے والی مٹی کی بدولت بند پڑے ۔ پہاڑی سفر یوں بھی دشوار گزار ہوتاہے ۔ تنگ سڑکیں ، گہری کھائیاں اور پھسل جانے کا خوف۔ اللہ کا شکر ہے
پیر 06 مئی 2019ء

آواز ِ دوست

جمعه 03 مئی 2019ء
ہارون الرشید
چیخ چیخ کر ایک ایک چیز ایک عظیم اور بے کراں خالق کے وجود کا احساس دلاتی ہے ۔ گونگوں ، بہروں اور اندھوں کو مگر کون سمجھائے ؟الّا یہ کہ وہ خود کرم فرمائے۔ الّا یہ کہ کوئی حادثہ ہو ۔اس منفرد شاعر احسان دانش نے کہا تھا آجائو گے حالات کی زد پر جو کسی دن ہو جائے گا معلوم خدا ہے کہ نہیں ہے کھڑکی سے جھانک کر دیکھا اور ہکّا بکّا رہ گیا ۔ یہ اوائل اپریل کی ایک سحر تھی ۔ چھوٹے سے مکان سے متصل وسیع و عریض لان میں کچنار کے دو پودے
مزید پڑھیے


گلستان

جمعرات 02 مئی 2019ء
ہارون الرشید
کوئی پتھر اور پہاڑ نہیں ، شریعت ایک گلستان ہے ۔ گلستاں کے مگر آداب، قرینے، اہتمام اور اصول ہوتے ہیں ۔ جدید پڑھے لکھے تو کیا ، افسوس کہ بعض جیّد علما بھی ایک نکتے پر غور نہیں فرماتے ۔ مذہب بجائے خود ایک سائنس ہے ، سب سے بڑی سائنس۔ اس پہ پھر کبھی! شیری رحمن کو کیا سوجھی کہ بیٹھے بٹھائے ہنگامہ اٹھا دیا۔ معیشت کی بربادی ، عالمی دبائو اور بے یقینی کے ہنگام ،کیا یہ کوئی اہم مسئلہ تھا ؟ ایک ہنگامہ پہ موقوف ہے گھر کی رونق نوحہ ء غم ہی سہی ، نغمہ ء
مزید پڑھیے


اصل الاصول

بدھ 01 مئی 2019ء
ہارون الرشید
کوئی سننا چاہے تو سنے اور نہ سننا چاہے تو نہ سنے۔ پروردگار کا فرمان یہ ہے ’’ ولکم فی القصاص حیاۃ یا اولی الالباب‘‘زندگی میںحسن و خوبی کا تمام انحصار قصاص پر ہے ۔ جتنا جرم اتنی سزا ۔۔۔اور یہ فیصلہ حاکم نہیں ، قانون کرتاہے ، صرف عدالت! احتساب اور استحکام کا حصول ۔ دو چیزیں ہیں ، جن کے درمیان ہم معلق ہیں ۔ لکھنے اور سوچنے والے حیران کہ محاسبہ جاری رکھتے ہوئے ، قرار اور ٹھہرائو کیسے حاصل کیا جائے۔ تباہ کن معاشی صورتِ حال اور بڑھتی ہوئی ابتری سے جو بچا لے ۔ بھارتی یلغار
مزید پڑھیے