BN

ارشاد احمد عارف



بندر کے ہاتھ میں ماچس


بالا کوٹ پر بھارتی فضائی حملے کا پول غیر ملکی میڈیا اور امریکی تھنک ٹینک نے کھول دیا‘ چند درخت گرے‘ ایک کوّا مرا اور ایک بوڑھا زخمی ہوا۔ بھارتی حکومت چاہتی تو فضائیہ کے سربراہ سمیت ان تمام لوگوں کا کورٹ مارشل کرتی جن کا فلاپ آپریشن نریندر مودی سرکار کے لئے جنگ ہنسائی کا موجب بنا ‘مگر خود فریبی کے مرض میں مبتلا حکومت نے پروپیگنڈے کے زور پر سیاہ کو سفید ثابت کرنا چاہا‘ ناکام رہی‘ البتہ پاکستان کی جوابی کارروائی اور دو طیاروں کی تباہی کا ذمہ دار قرار دے کر ایک ائر مارشل کو ریٹائرڈ
جمعرات 07 مارچ 2019ء

خطرہ ٹل گیا؟

منگل 05 مارچ 2019ء
ارشاد احمد عارف
خطرہ بس ٹلا ہے۔ بھارتی ایئرچیف بریندر سنگھ دھنوا‘بالا کوٹ حملے کو شروعات قرار دے رہے ہیں۔ کتنی دیر کے لئے ٹلا؟ یہ اہم سوال ہے‘ اسرائیل نے 1981ء میں سرجیکل سٹرائیک کے ذریعے عراق کا ایٹمی پروگرام تباہ کیا تو بھارت کو بھی یہ شوق چرایا۔ اسرائیل نے تعاون کی پیشکش کی اور یہ تیار ہو گیا۔ آئی ایس آئی نے جس پر ہمارے بعض سیاستدان اور ان کے نمکخوار دانشور‘ بھاڑے کے ٹٹو اہل قلم و کیمرہ صبح دوپہر شام تبرا کرتے ہیں بھارتی‘ اسرائیل منصوبے کا سراغ لگایا ہم نے امریکہ‘بھارت‘ اسرائیل کے مشترکہ سرپرستوں‘ دوستوں کے
مزید پڑھیے


دھیرج مہاراج!

جمعه 01 مارچ 2019ء
ارشاد احمد عارف
صدر ٹرمپ کو برصغیر میں کشیدگی پر تشویش ہے۔ پاکستان اور بھارت سے وہ محاذ آرائی کے خاتمے کی اپیل کر رہے ہیں اور انہیں مثبت خبریں مل رہی ہیں ان کے منہ میں گھی شکر‘امریکی صدر کو یہ خیال مگر بدھ سے پہلے کیوں نہ آیا؟ مشہور کہاوت ہے کہ کسی ملک اور قوم کی کمزوری جنگ کو دعوت دیتی ہے اور طاقتور فرد یا قوم کی طرف کوئی ٹیڑھی آنکھ سے نہیں دیکھتا۔1971ء کے بعد صرف دو بار بھارتی قیادت نے پاکستان کو مذاکرات اور اعتبار کے قابل سمجھا۔1987ء ‘1986ء میں براس ٹیکس فوجی مشقوں کے بعد یا پھر
مزید پڑھیے


ہن آرام اے

جمعرات 28 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
عمران خان کی حکومت اور پاک فوج کی قیادت نے نریندر مودی کے بھارت کی یہ خوش فہمی دور کر دی کہ پاکستان اس کی خالہ کا گھر ہے پنجابی زبان میں ماسی دا ویہڑا جہاں اس کے لیڈر‘ تجزیہ کار‘ دانشور ‘ تاجر ‘ مسلح فوجی اور بمبار طیارے جب چاہیں ٹہلتے ہوئے جائیں‘ دراندازی کریں یا زبان درازی ‘کوئی انہیں روکنے ٹوکنے والا ہے نہ عالمی برادری کے روبرو شور مچانے والا۔ دو طیارے مار اور ونگ کمانڈرابھے نندن کو گرفتار کر کے پاکستان نے مگر بتایا کہ وہ دن گئے جب خلیل خان فاختہ اڑایا کرتے
مزید پڑھیے


خدا بنے تھے یگانہ مگر بنا نہ گیا

منگل 26 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
پلوامہ حملے کے بہانے نریندر مودی اور اس کے ساتھیوں نے پاکستان کے خلاف جنگی جنون کو فروغ دیا۔ عوامی جذبات بھڑکائے اور بھارت کے طول و عرض میں موجود کشمیریوں پر پاکستانی ایجنٹ کا لیبل لگا دیا مگر بات نہیں بنی۔ محبوبہ مفتی سے لے کرراج ٹھاکرے اور ڈاکٹر فاروق عبداللہ سے جسٹس مرکنڈے کاٹجو تک سب نریندر مودی کو جھٹلا رہے اور پلوامہ حملے کو انتخاب جیتنے کی بھونڈی حرکت قرار دیا جا رہاہے۔ مستقبل کا حال اللہ جانتا ہے بظاہر مگر یہ لگ رہا ہے کہ مودی سرکار اپنے ہی جال میں پھنس گئی ہے۔ وہ پاکستان
مزید پڑھیے




ہمیں یقین ہوا‘ ہم کو اعتبار آیا

اتوار 24 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی گرفتاری سے اس جھوٹ کا پردہ فاش ہوا کہ مرد حر آصف علی زرداری نے اسٹیبلشمنٹ کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر دیا ‘ نیب نے احتساب کی تلوار نیام میں ڈال لی اور قومی ڈاکوئوں اور لٹیروں کو کیفر کردار تک پہنچانے کا حکومتی عزم کمزور پڑ گیا ہے۔ گرفتار پیپلز پارٹی کا رہنما ہوا‘ شور سب سے زیادہ مسلم لیگ (ن) اور اس کے ہمنوا میڈیا نے مچایا۔ میاں شہباز شریف کی گرفتاری پرایسی ہی تکلیف پیپلز پارٹی کو ہوئی تھی۔ پاکستان میں جمہوریت کا ایک نیا اور منفرد ماڈل متعارف کرانے
مزید پڑھیے


ظلم کی بات ہی کیا‘ ظلم کی اوقات ہی کیا

جمعرات 21 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
پلوامہ حملہ کے بعد بھارتی حکومت‘ میڈیا اور عوام ذہنی توازن کھو بیٹھے‘ سیکولرازم‘ لبرلزم اور جمہوریت کا سارا میک اپ ایک فرضی یا حقیقی کردار عادل ڈار نے اتار دیا ؎ کاغذ کے پھول سر پہ سجا کے چلی حیات نکلی برون شہر تو بارش نے آ لیا بھارت تو خیر بھارت ہے‘ چانکیہ کوتلیہ کا پیروکار اور جھوٹ کا بیوپاری‘ پاکستان میں بھی برسوں سے یہ سن سن کر کان پک گئے کہ وہاں بنیاد پرستی ہے نہ تنگ نظری‘ جمہوریت اور سیکولرازم نے ایک ایسی قوم کو جنم دیا جہاں ہر مذہب
مزید پڑھیے


شاہوں کی مجلس میں مزدوروں کا ذکر

منگل 19 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
تبدیلی اور کس چڑیا کا نام ہے۔ عشائیہ میں وزیر اعظم عمران خان اچانک اُٹھے‘ ولی عہد سے فرمائش کی کہ سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں کو اپنا سمجھیں کہ یہ میرے دل کے قریب ہیں‘ جیلوں میں بند تین ہزار پاکستانیوں کی حالت زار پر رحم کریں اور عازمین حج کو جدہ کے بجائے پاکستان کے ایئر پورٹس پر امیگریشن کی سہولت فراہم کریں اور ان کی دعائیں لیں‘ ولی عہد نے یہ کہہ کر میزبان کی عزت بڑھائی کہ میں آپ کو انکار نہیں کر سکتا‘ مجھے آپ سعودی عرب میں پاکستان کا سفیر سمجھیں‘ عازمین حج کی امیگریشن
مزید پڑھیے


اب لکیر پیٹا کر

جمعه 15 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
شریف خاندان کے لیے یہ دوسرا ریلیف ہے۔ رمضان شوگر ملز نالہ، آشیانہ کیس میں میاں شہبازشریف اور فواد حسن فواد، صاف پانی کیس میں انجینئر قمرالاسلام اور بیوروکریٹ وسیم اجمل کی ضمانت پر رہائی کا مطلب کسی ملزم کی مکمل بریت ہے نہ استغاثے پر ناکامی کا فتویٰ صادر کرنا قرین انصاف، تاہم ماننا پڑے گا کہ نیب کی پراسیکیوشن برانچ میاں شہبازشریف، فواد حسن فواد، قمرالاسلام اور وسیم اجمل کو کئی ماہ اپنی تحویل میں رکھ کر بھی ملزمان کے خلاف اس قدر شواہد جمع نہیں کر سکی کہ عدالت عالیہ درخواست ضمانت کو یکسر مسترد کر پاتی۔اسلام آباد
مزید پڑھیے


نانی نے خصم کیتا

منگل 12 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
پنجابی کی کہاوت ہے’’نانی نے خصم کیتا بُرا کیتا‘ کر کے چھڈ دتا ہور وی بُرا کیتا‘‘ موجودہ حکومت کی ناتجربہ کاری اندرونی اختلافات ‘ جلد بازی اور غیر مستقل مزاجی سے اس کے نظریاتی کارکن‘ خیر خواہ اور پاکستان میں سیاسی استحکام کے خواہش مند حلقے دل شکستہ ہیں۔ عمران خان میاں شہباز شریف کو پارلیمنٹ کی پبلک اکائونٹس کمیٹی کا چیئرمین بنانے کے حق میں نہ تھے‘ وفاقی وزیر اطلاعات فواد حسین چودھری اور وزیر ریلوے شیخ رشید احمد قوم کو یہی تاثر دیتے رہے ‘مگر ایک دن میاں شہباز شریف چیئرمین بن گئے‘ کیسے بنے؟ تحریک انصاف
مزید پڑھیے