BN

اوریا مقبول جان



غزوہ ہند کی روایات پر بحث کا مقصد کیا ہے؟


کیا آج بھی کشمیریوں کو انسانی تاریخ کے بدترین ظلم سے نجات دلانے کے لئے لوگوں کو رسول اکرم ﷺ کی زبان مبارک سے پیش گوئی کی صورت نکلے ہوئے الفاظ کی ضرورت ہے کہ '' میری امت میں سے دو گروہ ایسے ہیں جنہیں اللہ نے جہنم کی آگ سے محفوظ کر رکھا ہے۔ ایک وہ گروہ جو ہند پر حملہ کرے گا اور دوسرا گروہ جو حضرت عیسی ابن مریمؑ کے ساتھ ہوگا (السنن الکبری۔ نسائی)۔ کیا قرآن پاک جہاد فی سبیل اللہ اور قتال فی سبیل اللہ کے احکامات سے بھرا ہوا نہیں ہے۔ لیکن یار لوگ
منگل 15 اکتوبر 2019ء

جو اماں ملی تو کہاں ملی

پیر 14 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
تمغہ امتیاز ہے اس مغرب کے لئے جس نے بالآخر جاوید احمد غامدی کو پناہ دے دی اور ڈوب مرنے کا مقام ہے اس پاکستان کیلئے جہاں انسان اپنی مرضی سے بول بھی نہیں سکتا۔میرے ملک کو جس نے گالی دینا ہو، برا بھلا کہنا ہو، دنیا کے سامنے یہ بتانا ہو کہ یہ جائے امن نہیں ہے، اسے گلا پھاڑ کر یہ سب کچھ کہنے، لکھنے اور چھاپنے کی آزادی امریکہ پر یورپ میں فورا میسر آجاتی ہے۔ آپ دہائیوں وہاں بیٹھ کر نفرت کا پرچار کریں،آپ کے اشارے پر لوگ بندوق لے کر سڑکوں پر نکل آئیں،
مزید پڑھیے


دھواں

بدھ 09 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
پوری دنیا ایک ایسے دھوئیں سے خوفزدہ ہے جو زمین کو گھیر لے گا تو زندگی دن بہ دن معدوم ہوتی چلی جائے گی۔ کوئی ہے جو ان کو خوفزدہ انسانوں کو میرے اللہ کی طرف سے دی گئی چودہ سو سال پہلے کی وارننگ کی طرف متوجہ کرے،فرمایا ، " لہذا اس دن کا انتظار کرو جب آسمان ایک واضح دھواں لے کر نمودار ہوگا۔ جو لوگوں پر چھا جائے گا۔ یہ ایک دردناک سزا ہے" (الدخان 10،11)۔ یوں تو اس دھویں کے تذکرے اسی دن سے شروع ہوگئے تھے جب جدید دنیا کی سب سے بے رحم، ظالم
مزید پڑھیے


سونے کے پہاڑ پر جنگ

منگل 08 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
سید الانبیاء ﷺ نے جس تباہ کن جنگ کی پیشگوئی کی تھی اس کے آغاز کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا ''عنقریب دریائے فرات سے سونے کا پہاڑ نمودار ہوگا۔ جب لوگ اس کے بارے میں سنیں گے تو اس کی طرف چل پڑیں گے اور جو پہاڑ کے پاس ہوں گے وہ کہیں گے کہ اگر ہم نے اسے چھوڑ دیا تو دوسرے لوگ اسے لے آئیں گے۔ آپ ؐنے فرمایا پھر اس خزانے کو حاصل کرنے کے لیے لوگ لڑیں گے اور سو (100) میں سے ننانوے (99) قتل کر دیے جائیں گے (مسلم، کتاب الفتن)۔ اس مضمون
مزید پڑھیے


کشمیر: زمین نہیں نظریے کی جنگ

پیر 07 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
آج سے بہتر(72) سال پہلے ہندوستان تقسیم ہوا تو دنیا کے نقشے پر دو ملک وجود میں آئے۔ ایک خالصتاً مذہب کی بنیاد پر اور دوسرا خالصتاً سیکولر، لبرل قوم پرست نظریے کی بنیاد پر۔ دونوں کی تقسیم علاقائی بنیادوں پر ہوئی اور اصول یہ رکھا گیا کہ جن علاقوں میں مسلمان اکثریت میں رہائش پذیر ہیں انہیں بقیہ ہندوستان سے کاٹ کر ایک نیا ملک پاکستان تخلیق کر دیا جائے۔ دوسراملک، بھارت،مسلمہ سکہ رائج الوقت، یعنی جو جس جگہ پیدا ہوتا ہے، اس کا مذہب، رنگ، نسل اور زبان کوئی بھی ہو، وہ اس کا وطن ہے، کی
مزید پڑھیے




یورپ میں اسلامو فوبیا کا گزشتہ سال

بدھ 02 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
دنیا بھر کا میڈیا پندرہ مارچ 2019 ء کو اس وقت چونک اٹھا تھا جب نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں ایک اٹھائیس سالہ متشدد، جنونی عیسائی برینٹن ٹیرنٹ النور مسجد میں ایک بج کر پچیس منٹ پر گولیاں چلاتا داخل ہوا، اکیاون مسلمانوں کو شہید کیا اور چالیس کو زخمی۔ اس واقع کا اہم ترین پہلو یہ تھا کہ اس شخص نے اپنے اس جنون کی تشہیر کے لیے کسی میڈیا چینل کا سہارا نہ لیا بلکہ اپنی بندوق پر کیمرہ نصب کر کے پوری دنیا کو اس ہولناک منظر کا براہ راست نظارہ کروایا۔ عین ممکن
مزید پڑھیے


حکومتی اعلان جہاد اور فرضیت

منگل 01 اکتوبر 2019ء
اوریا مقبول جان
زبانیں گنگ ہیں اورچہرے سیاہ۔۔۔عمران خان نے یہ کیا کہہ دیا ''کشمیریوں کا ساتھ دینا جہاد ہے''۔ اس لفظ ''جہاد'' کو گالی بنانے میں تو ہمیں نصف صدی لگی تھی۔ یہ لفظ ایک بار پھر کسی مسلمان حکمران کی زبان پر کیسے آگیا۔ کہاں ہیں ''نظم اجتماعی ''کے جدید غامدی فلسفہ اسلام کے امین اور شارع جو گزشتہ دو دہائیاں قلم کی روشنائی، عقل و خِرد کی منطق اور زبان و بیان کی مہارت اس بات پر خرچ کرتے رہے کہ جب مسلمانوں کا ایک نظم اجتماعی قائم ہو جائے تو پھر جہاد صرف ریاست کا حق ہے اور اسی
مزید پڑھیے


ترکھانوں کا بیٹا بازی لے گیا

پیر 30  ستمبر 2019ء
اوریا مقبول جان
31 اکتوبر1929ء کو غازی علم الدین شہید کو اس میانوالی کے علاقے کی جیل میں تختہ دار پر لٹکایا گیا جہاں سے عمران خان کے ددھیال کا بھی تعلق ہے، لیکن کس قدر حیرت کی بات ہے کہ اس عاشق رسول کے آباء واجداد میں سے بابا لہنا نے جب اسلام قبول کیا تو اس نے لاہور کے سرحدی علاقے برکی ہڈیارہ میں آکر اپنا ٹھکانہ بنایا ، یہ وہی برکی ہے جو عمران خان کا ننھیال ہے۔ مجھے کوئی مماثلت نہیں ڈھونڈنی۔ میں تو حیرت میں گم آج سے نوّے سال قبل آنکھوں میں آنسو لیے علامہ اقبال کے
مزید پڑھیے


اہل ایمان کا خیمہ

بدھ 25  ستمبر 2019ء
اوریا مقبول جان
سب کچھ تیزی سے ہو رہا ہے اور اس میں مزید تیزی آ جائے گی اور اب کھل کر سامنے آنا پڑے گا۔ چمگادڑ کی طرح دونوں جانب کھیلنے کے دن ختم ہو جائیں گے۔ یہ زمانہ اب بہت جلد گزر جائے گا، جس میں ہیوسٹن کے بڑے ہال میں ڈونلڈ ٹرمپ ہندوستان نہیں بلکہ ہندوؤں کو اپنا محبوب قرار دے رہا ہو اور ان کے ساتھ مل کر شدت پسند اسلام کے خلاف جنگ کا اعلان کر رہا ہو۔ اسی دوران روس کے شہر ''اورن برگ'' (Orenburg) میں شنگھائی کارپوریشن آرگنائزیشن کے جھنڈے تلے بھارت اور پاکستان کی افواج
مزید پڑھیے


رول ماڈل کی جنگ

منگل 24  ستمبر 2019ء
اوریا مقبول جان
گڈریا جیسا افسانہ، من چلے کا سودا جیسا ڈرامہ سیریل اور تلقین شاہ جیسا کردار، مدتوں لکھنے کے ساتھ ساتھ اسے لا سلکی ریڈیائی لہروں پر زندہ رکھنے والے اشفاق احمد کہا کرتے تھے کہ ''جو لوگ اللہ، پیغمبرِ خدا اور اسلام کو برا کہنا چاہتے ہیں، لیکن جرأت نہیں رکھتے تو وہ مولوی کو برا کہہ کر اپنی خواہش پوری کرتے ہیں''۔ ایسے کردار آپ کو سیکولر، لبرل دانشوروں میں ملیں گے، ملحد اساتذہ کرام میں نظر آئیں گے یا پھراگر آپ شرابیوں کی کسی محفل میں جا نکلیں، ہیروئن، چرس، بھنگ اور گانجا استعمال کرنے والوں
مزید پڑھیے