BN

سعد الله شاہ



سیاست کے مزاحیہ کردار


درد کو اشک بنانے کی ضرورت کیا تھی تھا جو اس دل میں دکھانے کی ضرورت کیا تھی ایسے لگتا ہے کہ کمزور بہت ہے تو بھی جیت کر جشن منانے کی ضرورت کیا تھی میرا خیال ہے کہ آپ سمجھ گئے ہونگے کہ حکومت کی صورت حال کیسی ہے‘ شعروں کی وضاحت ضروری نہیں۔ میں کچھ اور کہنا چاہتا ہوں کہ تھوڑا سا مسکرا لیا جائے اور نوجوانوں کی تخلیقی صلاحیتوں سے محظوظ ہوا جائے۔ ویسے بھی نوجوان شرارتیں کرتے ہوئے بہت اچھے لگتے ہیں اور اگر شرارتوں میں دانش اور بزلہ سنجی بھی ہو تو سونے پرسہاگہ ہے۔ ان دنوں ان کا
هفته 11 مئی 2019ء

رمضان اور ہم

جمعه 10 مئی 2019ء
سعد الله شاہ
کس نے دل میں مرے قیام کیا آسماں نے مجھے سلام کیا کیا بتاؤں کہ بندگی کیا ہے میں نے خود اپنا احترام کیا سب سے پہلے تو مجھے ان لوگوں کا شکریہ ادا کرنا ہے جو میرے کالم کا انتظار کرتے ہیں اور پھر فون کرکے کہتے ہیں کہ ناغے زیادہ نہ کیا کریں۔ ہم انہیں کیا بتائیں کہ کالم لکھنا ایک اچھی خاصی مشقت سے کم نہیں۔ آپ کولکھنے سے زیادہ پڑھنا پڑتا ہے۔ اگر پڑھ کر نہیں لکھیں گے تو آپ کو بھی کوئی نہیں پڑھے گا۔ اب تو رمضان شریف ہے جس میں ہماری مصروفیت بڑھ گئی ہے۔ ہم
مزید پڑھیے


اس کی نہیں مثال کوئی

بدھ 08 مئی 2019ء
سعد الله شاہ
کیا بتائوں تجھے کیسا ہے بچھڑنے والا ایک جھونکا ہے جوخوشبو سی اڑا جاتا ہے میرے معزز قارئین! میرا آج کا کالم کسی مرقد پر رکھے ہوئے اس چراغ کی طرح ہے جس سے شعلہ بھی بنتا ہے اور دھواں بھی۔ عمر رواں کے ساتھ ایک احساس یہ بھی جاں گزیں رہتا ہے کہ ’’کچھ دیر تو اٹھتا ہے چراغوں سے دھواں بھی‘‘ بعض اوقات خیالوں کا شیرازہ بکھر بکھر جاتا ہے۔ اپنے کولیگ اور دوست کا مرثیہ لکھنا کچھ آسان نہیں ہوتا‘ ایسے میں آپ قسط وار معدوم ہوتا محسوس کرتے ہیں۔ خیر یہ فنا تو انسان کے ساتھ لگی ہوئی
مزید پڑھیے


200روپے لٹر پٹرول

اتوار 05 مئی 2019ء
سعد الله شاہ
تھوڑی سی وضعداری تو اس دل کے واسطے تونے تو اس میں وہم بھی پلنے نہیں دیا یہ تو ہم بعد میں بات کریں گے کہ ہمارے ساتھ یہ ہو کیا رہا ہے۔ کبھی ہماری چیخیں نکلوائی جا رہی ہیں اور کبھی سخت موسموں کو برداشت کرنے کے لئے تیار رہنے کا کہا جا رہا ہے۔ پہلے ذرا فیصل واوڈا کا بیان پڑھ لیں کہ قوم 200روپے لیٹر پٹرول بھی برداشت کرے گی۔ ایک تو یہ واڈا کس قدر غیر شاعرانہ نام ہے اور پھر ان کے بیانات عجیب و غریب بلکہ غریب و عجیب ہوتے ہیں۔ بعض اوقات سمجھ میں نہیں
مزید پڑھیے


تخلیق ہے کیا !

جمعه 03 مئی 2019ء
سعد الله شاہ
سب تعریفیں خالق حقیقی کی جس نے ارض و سماوات تخلیق کئے اور پھر اس تخلیق کا ہلکا سا پر تو اپنے شاہکار کے چنیدہ کو عطا کیا۔ ایسے ہی بیٹھے بیٹھے میرے دل میں سوال پیدا ہوا کہ آخر یہ تخلیق کیا۔ یہ ایک انوکھا سا خیال اور احساس ہے جیسے کہ کسی کمی اور خلا کے پر کرنے کا نام تخلیق ہے: جب تلک اک تشنگی باقی رہے گی تیرے اندر دل کشی باقی رہے گی ہوا گرمی کے باعث ہلکا ہو کر اوپر اٹھتی ہے تو وہاں پیدا ہونے والے خلا کو پر کرنے کے لئے اردگرد کی ہوائیں
مزید پڑھیے




دل کی زمین اور چین

منگل 30 اپریل 2019ء
سعد الله شاہ
مجھ سا کوئی جہاں میں نادان بھی نہ ہو کر کے جو عشق کہتا ہے نقصان بھی نہ ہو خوابوں سی دلنواز حقیقت نہیں کوئی یہ بھی نہ ہو تو درد کا درمان بھی نہ ہو یہ سارا نفسیات کا کھیل ہے۔ اسی نفسیات کی بدولت حکمران عوام کے جذبات سے کھیلتے ہیں۔ انہیں ایسے خواب دکھاتے ہیں جو انہیں سونے نہیں دیتے وہ خوابوں کی تعبیر چاہتے ہیں مگر وائے تقدیر کہ ان کے خواب تشنہ تعبیر رہتے ہیں۔ صرف سیاستدان ہی نہیں طالع آزما بھی اسی قسم کا وعدہ کر کے آتے ہیں اور پھر ان کے چند روز کئی سالوں پر
مزید پڑھیے


طوطا کہانی اور حکومتی طوطے

اتوار 28 اپریل 2019ء
سعد الله شاہ
کار فرہاد سے یہ کم تو نہیں جو ہم نے آنکھ سے دل کی طرف موڑ دیا پانی کو تو رکے یا نہ رکے فیصلہ تجھ پر چھوڑا دل نے در کھول دیے ہیں تری آسانی کو صاحبو بات یہ ہے کہ ہمارا کالم پڑھنے والوں نے ہمارا رخ کسی اور جانب موڑ دیا ہے۔ میرا اندازہ صدفی صد درست تھا کہ لوگ سیاسی کالم پڑھ پڑھ کر اکتا چکے ہیں۔ اس لئے میں نے گدھے پر کالم باندھ دیا جسے اتنی پذیرائی ملی کہ میں حیران رہ گیا اور تو اور سندھ سے دعا علی نے میرے کالم پر ذکر کرتے ہوئے
مزید پڑھیے


گدھا چنگ چی اور نیا منظر نامہ

هفته 27 اپریل 2019ء
سعد الله شاہ
خواب ہو گا یا کوئی خواب کے جیساہو گا جو بھی ہو گا وہ مری آنکھ کا دھوکا ہو گا اتنا لکھوں گا ترے بعد ترے بارے میں آنے والوں نے تجھے پہلے ہی دیکھا ہو گا ان اشعار کے نزول کی کوئی خاص وجہ نہیں۔ یونہی بیٹھے بیٹھے موڈ رومانٹک سا ہو گیا۔ ابھی ایک ذرائع آمدو رفت میں سے ایک شے نظر پڑی جس پر خوش شکل لوگ بیٹھے تھے اور کمینٹری جاری تھی کہ لاہور کی شاہراہوں پر اب گدھا چنگ جی چلنے لگی۔ صرف پھلوں اور سبزیوں ہی کی پیوندکاری نہیں ہو رہی۔ گاڑیوں کو بھی اس عمل سے گزارہ
مزید پڑھیے


عثمان بزدار کا چڑیا گھر میں خطاب

جمعه 26 اپریل 2019ء
سعد الله شاہ
مجھ پہ طاری ہے خیالِ لب جاناں ایسے ایک چڑیا بھی جو بولے تو برا لگتا ہے نہ جانے یہ شعر کس کمزور لہجے میں کہہ دیا وگرنہ چڑیا جیسا پیارا اور معصوم پرندا ہمیں بچپن ہی سے پسند ہے بلکہ ہم نے چوں چاں اور چیں چیں کرنا اکٹھے ہی سیکھا تھا۔ میرا خیال ہے کہ ہمارا پہلا خارجی تعارف ہی چڑیا کے ساتھ ہوا۔ یہ گھر کے آنگن کی رونق اور زینت ہے۔ آج مجھے مگر اس چڑیا کا خیال اس لیے آیا کہ میں نے 92نیوز کے صفحہ اول پر ایک تصویر دیکھی جس میں ہمارے وسیم اکرم پلس
مزید پڑھیے


ٹینڈے گوشت اور ہم

منگل 23 اپریل 2019ء
سعد الله شاہ
پھر چشم نیم وا سے ترا خواب دیکھنا پھر اس کے بعد خود کو تہہ آب دیکھنا ٹوٹا ہے دل کا آئینہ اپنی نگاہ سے اب کیا شکست ذات کے اسباب دیکھنا جناب ہم ہی عمران خان کے حامی تھے اور اب تک ہیں۔ مقصد یہ کہ ہم اس کے ناقد ضرور ہیں مگر اس کی شخصیت میں جو دیانت اور کچھ کر گزرنے کی امنگ اور ترنگ‘ اس کے ہم قائل ہیں۔ مایوسی تو ویسے ہی کفر ہے۔ اس وقت میں عمران خان کو ڈفنڈ کرنے نہیں بیٹھا۔ بس یونہی بیٹھے بٹھائے ایک دلچسپ صورت حال کا ذکر کرنے کو جی چاہا‘ ہوا
مزید پڑھیے