BN

افتخار گیلانی



وسط ایشیا اور کشمیر : تاریخی روابط کو بحال کرنے کی اشد ضرورت


مئی 2014ء کو جب پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف نئی دہلی کے راشٹرپتی بھون یا صدارتی محل میں بھارت کے نو منتخب وزیر اعظم نریندر مودی کی حلف بررادی کی تقریب میں شرکت کرنے کے بعد ہوٹل پہنچے، تو لابی میں چند لمحوں کی ملاقات کے دوران میں نے ا ن سے گزارش کی تھی کہ چونکہ تاجکستان، اقوام متحدہ کے ادارہ یونیسکوکے تعاون سے معروف صوفی بزرگ میر سید علی ہمدانی کی 700 سالہ تقریبات کا انعقاد کر رہا ہے ، کیا ہی اچھا ہوتا کہ دونوں بھارت اور پاکستان بھی اسکا حصہ بن جائیں۔ اگلے دن دونوں وزراء
منگل 09 جولائی 2019ء

شاہراہ ریشم کے مرکز ازبکستان میں چند روز

بدھ 03 جولائی 2019ء
افتخار گیلانی
تاشقند کا ازبکستان ہوٹل اور اسکے مقابل کانفرنس ہال اور شہر میں لال بہادر شاستری کا مجسمہ ، 1965ء کی جنگ کی یاد دلاتا ہے۔ تاشقند معاہدہ پر دستخط ہونے کے چند گھنٹوں کے بعد ہی بھارت کے وزیر اعظم لال بہادر شاستری کا انتقال ہوگیا ۔ یہی پر صدر پاکستان ایوب خان اور انکے وزیر خارجہ ذولفقارعلی بھٹوکے درمیان اختلافات کھل کر سامنے آگئے۔ واپسی پر بھٹو نے حکومت سے علیحدگی اختیار کرکے پاکستان پیپلز پارٹی کی بنیاد ڈالی، اور چند برسوں میں ہی وزیر اعظم کے عہدے پرفائز ہوگئے۔ بھار ت میں بھی شاستری کی موت کے بعد
مزید پڑھیے


شاہراہ ریشم کے مرکز ازبکستان میں چند روز

منگل 02 جولائی 2019ء
افتخار گیلانی
اگر آپ کو صبح دیر سے جاگنے کی عادت ہے، تو ازبکستان کے دارالحکومت تاشقند کی صبح آپ کو گراں گزرے گی۔ گرمیوں میںسویرے ساڑھے چار بجے ہی سورج کی تیز کرنیںکھڑکیوں پر دستک دیکر جاگنے اور بستر چھوڑنے پر مجبور کردیتی ہیں۔ شاید یہ کہنے کی کوشش کر تی ہیں، کہ اٹھ غافل، صبح کی تازہ ہوا اور آلودگی سے پاک فضالئے سرسبز و شاداب شہر، اسرار کھولنے کیلئے انتظار کر رہا ہے۔ تاشقند، سمر قند، بخارا اور فرغانہ وادی کی فرحت بخش فضا کو محسوس کرکے یہی لگتا ہے کہ تین کروڑ کی آبادی والا وسط ایشیا کا
مزید پڑھیے


کرپشن سے نجات کیسے ہو؟

بدھ 26 جون 2019ء
افتخار گیلانی
اسی دوران ایک ایسا واقعہ پیش آیا، جن سے مجھے اس سوال کا تشفی بخش جواب مل گیا۔ دس دن کے دورے کا آخری ڈنر ڈینش انسٹی ٹیوٹ آف ہیومن رائیٹس میں طے تھا۔ اس ادارے کے ایک سرکردہ رکن ایک پاکستانی نژاد پروفیسر بھی اس ڈنر میں شامل تھے جو کوپن ہیگن یونیورسٹی سے درس و تدریس کی ڈیوٹی سے ریٹائرڈ ہوچکے تھے۔ میں نے جب ان سے یہ سوال کیا تو کچھ دیر غور و فکر کرنے کے بعد انہوں نے کہا کہ حتمی جواب شاید وہ بھی نہیں دے پائیں گے، مگر بتایا کہ وہ
مزید پڑھیے


کرپشن سے نجات کیسے ہو؟

منگل 25 جون 2019ء
افتخار گیلانی
بھارت اور پاکستان میں تقریباً ہر انتخاب میں بدعنوانی ایک اہم موضوع ہوتی ہے۔ انتخابی مہم کے دوران تقریروں اور اپنے منشوروں میں سیاسی پارٹیاں بد عنوانی سے پاک وصاف انتظامیہ فراہم کرنے کے وعدے کرتی ہیں۔ مگر اقتدار میں آکر جلد ہی ان کو احساس ہوتا ہے کہ دریا میں تیرتے ہوئے مگرمچھ سے بیر نہیں رکھا جاسکتا ہے۔ سیاستدانوں کو علم ہے کہ انتخابات کے دوران قوم پرست جذبات کو ابھارنا اور کرپشن سے چھٹکارا دینے کے نعرے سے مڈل کلاس کو اچھی طرح سے رجھایا جا سکتا ہے۔ یہ اب ایک آزمودہ ہتھیار بن چکا
مزید پڑھیے




کون ہیں بھارت کے نئے وزیر خارجہ جے شنکر

بدھ 12 جون 2019ء
افتخار گیلانی
ریٹائرمنٹ کے فوراً بعد ہی جے شنکر نے کارپوریٹ گروپ ٹاٹا کے بیرون ملک مفادات کے ڈویژن کے سرابراہ کا عہدہ سنبھالا۔ اس حوالے سے بھارتی فضائیہ کیلئے ایف ۔16طیاروں کی خریداری کیلئے امریکی فرم لاک ہیڈ مارٹن کیلئے وکالت کا کام کر رہے تھے۔ لاک ہیڈ مارٹن کو کنٹریکٹ ملنے سے ٹاٹا کو ان دیکھ ریکھ ،پرزے سپلائی کرنے اور بھارت میں ان طیاروں کو تیار کرنے کا کام مل جاتا۔ بتایا جاتا ہے کہ 1980ء میں واشنگٹن میں بھارتی سفارت خانہ میں پوسٹنگ کے دوران ہی امریکی انتظامیہ نے ان پر نظر کرم کی بارش شروع کر
مزید پڑھیے


کون ہیں بھارت کے نئے وزیر خارجہ جے شنکر

منگل 11 جون 2019ء
افتخار گیلانی
بھارت کے موجودہ وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر سابق وزیر اعظم من موہن سنگھ کے چہیتے آفیسر تھے۔ آخر کیوں نہ ہوتے۔ بھارتی فارن آفس میں امریکہ ڈیسک کے سربراہ کے ہوتے ہوئے انہوں نے بھارت ۔امریکہ جوہری معاہدہ کو حتمی شکل دینے اور اسکو امریکی کانگریس سے منظوری دلوانے میں کلیدی رول ادا کیا تھا۔ انعام کے طور پر 2013ء میں من موہن سنگھ نے ان کا نام خارجہ سیکرٹری کے لئے تجویز کیا، جس کی کانگریس پارٹی کے اندر سے سخت مخالفت ہوئی۔ وزیر اعظم کو بالآخر سرخم کرکے سجاتا سنگھ کو خارجہ سیکرٹری بنانا پڑا۔ ایک طرح
مزید پڑھیے


امیت شاہ : کشمیر کیلئے امتحان کی گھڑی

بدھ 05 جون 2019ء
افتخار گیلانی
بطور وزیر داخلہ کشمیر کی صورت حال تو امیت شاہ کیلئے چیلنج ہوگی، مگر کشمیریوں کیلئے بھی ان سے نمٹنا ایک بڑے امتحان سے کم نہیں ہوگا۔ پاکستانی حکمرانوں اور افسروں کی کشمیری راہنمائوںکے ساتھ ملاقاتوںپر پابندی لگانے کے بعد مودی حکومت کی اگلی کوشش مسئلہ کشمیر کو دوطرفہ مذاکرات کے عمل سے خارج کروانے کی ہوگی۔ افواہیں گشت کررہی ہیں کہ جس طرح 1973ء کے شملہ سمجھوتہ میں آنجہانی وزیراعظم اندراگاندھی نے اس مسئلے کی بین الا قوامی نوعیت کو بھارت اور پاکستان کے درمیان دوطرفہ معاملے میں تبدیل کرواکے تاریخ میں اپنا نام درج کروایا تھا، اسی طرح
مزید پڑھیے


امیت شاہ : کشمیر کیلئے امتحان کی گھڑی

منگل 04 جون 2019ء
افتخار گیلانی
دہشت گردی کے الزامات میں ملوث پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو جب حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بھوپال سے انتخابی میدان میں اتارا، تو ایک ساتھی نے ازراہ مذاق لقمہ دیا کہ بھارت کیلئے ایک نیا وزیر داخلہ تیار ہو رہا ہے۔ وہ ایسے بھارت کی منظر کشی کر رہے تھے، جس میں اتر پردیش کے حالیہ وزیر اعلیٰ اجے سنگھ بشٹ یعنی یوگی آدتیہ ناتھ وزیر اعظم اور پرگیہ سنگھ ٹھاکر وزارت داخلہ کے تخت پر برا جمان ہونگے۔ مجھے یاد آیا، کہ محض چند برس قبل ہم نیوز رومز میں اسی طرح تفریح کے طور پر
مزید پڑھیے


بھارت کے انتخابی نتا ئج: کیسے مار لی مودی نے بازی

بدھ 29 مئی 2019ء
افتخار گیلانی
معروف تجزیہ کار سعید نقوی کے مطابق موجودہ انتخابی نتائج نے بھارت کے چہرے سے نقلی سیکولرازم کا نقاب اتار دیا ہے ۔اس سیکولر ازم کی آڑ میں پچھلی سات دہائیوں سے مسلمانوں کے ساتھ جو کچھ کیا گیا، اس کی عکاسی 2005ء میں جسٹس راجندر سچر کمیٹی نے کی تھی۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک ڈیکلیرڈ اور دیانت دار ہندو اسٹیٹ ایک کھوکھلی سیکولر اسٹیٹ سے بدرجہا بہتر ہے۔ ان انتخابات میں تو سیکولر جماعتوں نے بھی مسلمانوں سے ووٹ مانگنے سے پرہیز کیا۔ اسکے باوجود ہندو ووٹروں نے ان کو کوئی پذیرائی نہیں بخشی۔اتر
مزید پڑھیے