BN

افتخار گیلانی



شام میں ترکی کا فوجی آپریشن


پچھلے ہفتے بدھ کی رات کو ترکی کے دارالحکومت انقرہ کی فضائیں جنگی طیاروں کی گھن گرج سے گونج رہی تھی ۔ معلوم ہوا کہ ترک افواج نے دریائے فرات کے مشرق میں شام کے شمالی علاقوں میں کرد عسکری ٹھکانوں پر آپریشن شروع کر دیا ہے۔ امریکی نیشنل سیکورٹی انتظامیہ کے ایک خفیہ ڈاکومینٹ کے افشاء ہونے کے بعد یہ تقریباً طے تھا کہ ترکی اس علاقے کو محفوظ بنانے کیلئے کوئی سخت اور راست قدم اٹھانے والا ہے۔ عالم اسلام کے کئی مسائل میں کردوں کا المیہ بھی پچھلے سوبر سوں سے کسی تصفیہ کا منتظر ہے۔
پیر 14 اکتوبر 2019ء

کشمیر: سکھوں کا قتل عام اور موجودہ حکومتی مشیر

بدھ 09 اکتوبر 2019ء
افتخار گیلانی
ان تینوں واقعات کے تار کسی نہ کسی طور پر فاروق خان کی دہلیز پر آکر رکتے تھے۔ چھٹی سنگھ پورہ کے واقعہ کے اگلے دن ہی پولیس سربراہ اشوک بھان نے بتایا کہ فوج کی جموں و کشمیر لائٹ انفنٹری کے ایک سپاہی کے بھائی محمد یعقوب وگے کو حراست میں لیا گیا ہے۔ جس نے انکشاف کیا کہ حزب المجاہدین اور لشکر طیبہ کے ایک مشترکہ گروپ سے تعلق رکھنے والے 18بندوق برداروں نے رات کے اندھیرے میں گاوٗں پر دھاوا بول کر 31سکھ مردوں کو قطار میں کھڑا کرکے قتل کردیا اور صرف نانک سنگھ کو
مزید پڑھیے


کشمیر: سکھوں کا قتل عام اور موجودہ حکومتی مشیر

منگل 08 اکتوبر 2019ء
افتخار گیلانی
جموں وکشمیر کی تاریخ نہ صرف خونیں سانحوں سے بھری پڑی ہے، بلکہ باضابطہ ایک منصوبہ کے تحت ان میں ملوث افراد کو کیفر کردار تک پہنچانے میں لیت و لعل سے کام لیا گیا۔ بیشتر واقعات میں سرکاری مشنری نے ان کو بچانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ ایسا ہی ایک دلدوز سانحہ 21اور22مارچ 2000ء کی رات کو جنوبی کشمیر کے چھٹی سنگھ پورہ گاوٰں میںپیش آیا۔ امریکی صدر بل کلنٹن کی دہلی آمد کے چند گھنٹوں کے بعد ہی اس گاوٗں میں خون کی ہولی کھیلی گئی، جس میں 35نہتے اور معصوم سکھ افراد ہلاک کئے گئے۔ اسکے
مزید پڑھیے


اقوام متحدہ: تقاریر کے بعد اب سفارت کاروں کی معرکہ آرائی

بدھ 02 اکتوبر 2019ء
افتخار گیلانی
دلچسپ بات یہ ہے کہ چوتھی کمیٹی میں ہر سال اتفاق رائے سے حق خود ارادیت یعنی Right to Self Determination اور نوآدیاتی نظام کے خاتمہ پر بھی ایک قرار داد منظور ہوتی ہے۔ ابھی تک اس قرار داد کوبھارت کی حمایت حاصل رہی ہے، کیونکہ اس میں کسی خطہ کا نام درج نہیں ہوتا ہے۔ بلکہ یہ حق خود ارادیت کے پرنسپل اور اسکی افادیت کا اعادہ کرتی ہے۔ دیکھنا ہے کہ کیا پاکستان اس بار اس میں ترمیم پیش کرکے جموں و کشمیر کو شامل کرنے کی کوشش کریگا؟ اسکے لئے پاکستانی سفارت کاری کو اپنا جلوہ
مزید پڑھیے


اقوام متحدہ: تقاریر کے بعد اب سفارت کاروں کی معرکہ آرائی

منگل 01 اکتوبر 2019ء
افتخار گیلانی
پاکستانی وزیر اعظم عمران خان جب اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کر رہے تھے، تو میں اسوقت ترکی کے دارلحکومت انقرہ کی ایک سڑک سے گزر رہا تھا ۔میں نے دیکھا کہ چائے خانوں میں بڑی تعداد میں لوگ بغور ان کی تقریر سننے میں محو تھے۔ نہ جانے کیسے یہ بات زد و وعام تھی، وہ کوئی تاریخی تقریر کرنے والے ہیں۔ کئی ترک چینل نہ صرف تقریر براہ راست نشر کر رہے تھے، بلکہ اسکا ترک ترجمہ بھی ناظرین تک پہنچا رہے تھے۔ اسلاموفوبیا اور توہین رسالت پر جب عمران خان دلائل پیش کر رہے تھے،
مزید پڑھیے




کشمیرپر ایک اور یلغار کی تیاری

منگل 24  ستمبر 2019ء
افتخار گیلانی
ریاست جموں و کشمیر کو تحلیل کرنے کے بعد اب کشمیری عوام کی غالب اکثریت کے تشخص ،تہذیب و کلچر پر کاری ضرب لگانے کی تیاریاں ہو رہی ہیں۔ جہاں ابھی حال ہی میں بھارتی وزیر داخلہ امیت شاہ نے ہندی کو قومی زبان قرار دینے کا عندیہ دیا، وہیں دوسری طرف حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی کے چند عہدیداروں نے ایک عرضداشت میں مطالبہ کیا ہے کہ علاقائی زبانوں کا اسکرپٹ یعنی رسم الخط دیوناگری یعنی ہندی میں تبدیل کرکے ملک کو جوڑا جائے۔ اس کی زد میں براہ راست کشمیری (کاشئر) اور اردو زبانیں آتی ہیں، جو فارسی۔عربی
مزید پڑھیے


بھارتی مسلم لیڈران، علماء و کشمیر

جمعه 20  ستمبر 2019ء
افتخار گیلانی
ابھی حال ہی میں دہلی کے جنتر منتر چوراہے پر بائیں بازو کی طلبہ تنظیموں نے کشمیر پر ہوئی یلغار پر مظاہرہ کا اہتمام کیا تھا۔ مگر کسی مسلم تنظیم کو وہاں آنا گوارا بھی نہیں ہوا۔ کشمیر نے بھی گجرات سے کچھ کم نہیں دیکھا۔ پچھلے 26برسوں کے دوران کشمیر میں سیکورٹی ایجنسیوں اور اس کے حاشیہ برداروں کے ہاتھوں معصوم بچیو ں ‘ لڑکیوں اور عورتوں کی عصمتیں پامال کی گئی ہیں اس کا ہلکا سا اشارہ اینڈرن لیوی اور کیتھی اسکاٹ نے اپنی معرکتہ الآرا تصنیف The Meadows میں کیا ہے۔ ا ن برطانوی مصنفین نے
مزید پڑھیے


بھارتی مسلم لیڈران، علماء و کشمیر

جمعرات 19  ستمبر 2019ء
افتخار گیلانی
ہندو قوم پرستوں کو بھی اس مسلم ووٹ کو بے وزن کروانے میں دانتوں پسینہ آجا تا تھا۔ مسلمان بالعموم انتخابات میں اپنی قوت‘ پسندیدگی یا ناراضگی کا مظاہرہ بھی کرتے رہے ہیں۔ شمالی بھارت میںسیاسی لحاظ سے کانگریس کی کمزوری کی ایک بڑی وجہ مسلمانوں کی ناراضگی تھی۔1989 ء کے بھاگلپور فسادات کے بعد بہار میں اور 1992 ء میں بابری مسجد کے انہدام کے بعد ملک کی سب سے بڑی ریاست اترپردیش میں مسلم ووٹرجو کانگریس سے ناراض ہوگئے ، اس کی مار سے وہ ابھی تک ابھر نہیں پائی ہے۔ اسی طرح 2002 ء کے گجرات فسادات
مزید پڑھیے


بھارتی مسلم لیڈران، علماء و کشمیر

بدھ 18  ستمبر 2019ء
افتخار گیلانی
شیخ عبداللہ کی موت کے ایک سال بعد 1983ء کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی، نیشنل کانفرنس کے خلاف خم ٹھوک کر میدان میں اتری تھی۔ وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا اپوزیشن لیڈروں این ٹی راما رائو، جیوتی باسو ، جارج فرنانڈیز کے ساتھ اتحاد و قربت سے وزیراعظم اندرا گاندھی سخت ناراض تھی۔ جموں خطے میں وزیر اعظم گاندھی نے خود ہی نو دن قیام کرکے بی جے پی کے موجود ہ صدر امیت شاہ کی طرز پر انتخابی مہم کو خوب فرقہ وارانہ رنگت دی۔ کشمیر میں ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور میرواعظ مولوی محمد فاروق کے اتحاد
مزید پڑھیے


بھارتی مسلم لیڈران، علماء و کشمیر

منگل 17  ستمبر 2019ء
افتخار گیلانی
ریاست جموں و کشمیر کو تحلیل و تقسیم کرنے جیسے غیر آئینی یکطرفہ اقدامات کے بعد مواصلاتی ناکہ بندی اور ملٹری آپریشنز کے ذریعے مقامی آبادی کو ہراساں کرنے پر جہاں دنیا بھر میں وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) حکومت پر لعن و طعن ہو رہی تھی، کہ بھارتی مسلمانوں کی قدیمی تنظیم جمعیت علماء ہند کے دونوں دھڑوں نے سادگی میں یا دانستہ ایسے قدم اٹھائے اور بیانات داغے کہ حکومت کی باچھیں کھل گئیں۔ غالباً پہلی بار یورپ و امریکہ میں سول سوسائٹی و میڈیاکو بھارت میں ابھرتے ہوئے فاشزم
مزید پڑھیے