BN

سعدیہ قریشی


’’مجسمہ ساز مالیوں‘‘سے تازہ ترین گفتگو!


شاعر مشرق علامہ اقبال کے جس مضحکہ خیز مجسمے نے سوشل میڈیا پر ایک ہنگامہ بپا کیا اسے بالآخر ہٹا دیا گیا ہے۔ پارک کے جس پھولوں بھرے قطعے میں یہ دیو ہیکل مجسمہ بنایا گیا تھا۔ وہاں پی ایچ نے پارک کے چند مالیوں کی ڈیوٹی لگا رکھی ہے کہ ہر سوال کرنے والے کو اس پیرائے میں جواب دینا ہے۔آج صبح واک کرتے ہوئے اس قطعے کی جانب گئے تو دیکھا وہاں کچھ مالی موجود ہیں‘ ایک کے ہاتھ میں گھاس سے خشک پتے صاف کرنے والا لمبا سا جھاڑو ہے۔ دو تین مالی پھولوں کی کیاری کی
جمعه 05 فروری 2021ء

عوام صبر کریں!!

بدھ 03 فروری 2021ء
سعدیہ قریشی
خلق خدا مہنگائی کے ہاتھوں جاں بہ لب اور وزیراعظم انہیں صبر کی تلقین کر رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اتنی سیاست تو سیکھ ہی لی ہے کہ حالات کا رخ خواہ کتنی ہی بدحالی کی طرف مڑ جائے بس سیاسی بیان دیتے رہو۔ ایک بار پھر پٹرول‘ ڈیزل‘ گیس‘ مٹی کے تیل اور گیس کی قیمتیں بڑھا کر عوام کی چیخیں نکلوا دی ہیں کہ ہر طرح کی اشیائے ضروریہ کی قیمتیں پٹرول ڈیزل کی قیمتیں بڑھنے کے ساتھ خودبخود بڑھ جاتی ہیں۔ کل کا اخبار اٹھائیں تو حالات کی دومتضاد تصویریںہمارے سامنے آتی ہیں۔ ایک طرف مہنگائی کا
مزید پڑھیے


پیٹ بھر روٹی سالن کا خواب اور مصباح

اتوار 31 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
ایک تھی مصباح۔ معصوم سے خدوخال والی، پیاری سی مصباح‘ جس کا واحد جرم یہ تھا کہ وہ غربت کے مکان میں پیدا ہوئی ،غربت کے جھولے میں پروان چڑھی۔ گھر کی ٹوٹی ہوئی دہلیز سے لے کر زنگ آلود بکسوں اور خالی برتنوں میں ہر طرف غربت بھوک اور ننگ ناچتی پھرتی تھی۔ غربت سہتے سہتے۔ مصباح کی ماں بھی مر گئی، تو ابا اسے لاہور شہر کے ایک امیر کبیر گھر میں چھوڑ آیا۔ گھر میں تو پیٹ بھر کر کھانا بھی نہیں ملتا۔ سوچا ہو گا کسی امیر کے گھر گندے برتن دھولے گی۔ جھاڑو پوچا کرے گی
مزید پڑھیے


ماواں اپنیاں جنہاں ریجھاں لائیاں نیں

جمعه 29 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
ملک کے حکمران رہنے والے سیاستدانوں اور ان کے خاندان کی زندگیوں کو سیاست کے تعصب سے ہٹ کر دیکھنا ہم کالم نگاروں کے لئے ذرا مشکل ہوتا ہے۔ اس کی ایک وجہ تو یہ ہے کہ ہم ان کی کارگزاریوں سے واقف ہوتے ہیں اور اسی پر لکھتے رہتے ہیں پھر ہمارے سامنے ان کی عیش اور آسودگی سے بھری ذاتی زندگیوں کے مقابل ملک کے غریب خاک بسر لوگوں کی ادھڑی ہوئی زندگیوں کا احوال ہوتا ہے۔ لیکن کبھی کبھی کچھ معاملے ایسے بھی ہو جاتے ہیں جو سیاست کی تمام تر الائشوں سے اوپر اٹھ کر بالکل
مزید پڑھیے


"We the wounded Healers"

جمعرات 28 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
ملتان سے آنے والی خبر نے بجا طور پر سب کو چونکا کر رکھ دیا۔ ابتدائی خبر یہ تھی کہ نامور سائیکاٹرسٹ ڈاکٹر اظہر حسن نے اپنی اکلوتی بیٹی ڈاکٹر علیزے کو گولی مار کر خودکشی کرلی ہے۔ مرنے والوں کی موت پر افسوس سے زیادہ جس بات پر حیرت میں لپٹا ہوا افسوس کیا جارہا تھا وہ یہ تھا کہ یہ کیسے اور کیونکر ہوا کہ ذہنی امراض کے ماہر معالج نے خود وہ جان لیوا حرکت کر ڈالی جس کا علاج وہ ساری زندگی اپنے مریضوں میں کرتے رہے۔ ذہنی مرض میں مبتلا مریضوں میں شدت پسندی اور بیماری
مزید پڑھیے



حکمران اور عوام۔پروفیسر خیال کی نظر سے

اتوار 24 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
ڈاکٹر اے ایچ خیال‘ انگریزی لسانیات کے استاد تھے گورنمنٹ کالج میں پڑھاتے رہے۔ سنا ہے کہ سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کے بھی استاد رہے۔ اپنے شاگردوں کے بہت محبوب اور محترم استاد تھے۔80کی دہائی کے وسط میں نواز شریف پنجاب کے چیف منسٹر بنے ،تو انہوں نے اپنے استاد ڈاکٹر اے ایچ خیال کو وزیر اعلیٰ ہائوس کھانے پر کئی بار مدعو کیا ،ہر دفعہ ڈاکٹر خیال کی طرف سے انکار ہوتا۔ان کے چیف منسٹر شاگرد نے پوچھا کہ آپ دعوت قبول کر کے ہماری عزت افزائی کیوں نہیں کرتے ،تو پروفیسر خیال نے کہا جو میں
مزید پڑھیے


منو بھائی کو یاد کرنا…!!

جمعه 22 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
منو بھائی کو یاد رکھنا ایک عہد کو یاد رکھنا ہے اور منو بھائی کو بھلا دینا ایک عہد کو بھلا دینا ہے۔منو بھائی کو یاد رکھنا‘ انسان کے انسان کے ساتھ تعلق کو یاد رکھنا ہے اور منو بھائی کو بھلا دینا اس تعلق کی خوبصورتی کو بھلا دینا ہے۔ منوّ بھائی کو یاد رکھنا‘ ڈرامہ ادب اور صحافت کی تاریخ کو یاد رکھنا ہے اور منوّ بھائی کو بھلا دینا ڈرامہ ادب اور صحافت کی تاریخ کو فراموش کر دینا ہے۔منوّ بھائی کو یاد رکھنا قناعت اور درویشی میں گندھی ہوئی پروفیشنل کمٹمنٹ کو یاد رکھنا ہے اور
مزید پڑھیے


لاہور کی سڑکوں پر کوڑے کے ڈھیر کیوں لگے ہیں؟

جمعرات 21 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
لاہور کی سڑکوں پر کوڑے کے ڈھیر دراصل تحریک انصاف کی انتظامی ناکامی کے تعفن کی علامت ہے۔ گزشتہ بیس برسوں کی تو میں خود بھی گواہ ہوں کہ لاہور کی سڑکوں پر کچرے کے ایسے ڈھیر جابجا کبھی دکھائی نہیں دیئے۔لاہور میں صفائی کے لیے ترک کمپنیاں تو ابھی دس برس پہلے آئیں تھیں جب شہباز شریف دو ترکی کمپنوں کو لاہور لائے اور شہرکا کچرا اٹھانے کا کام ان کے سپرد کیا۔اس سے پہلے بھی یہاں صفائی کا نظام ایسا برا نہیں تھا۔ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ اور کارپوریشن کے اہلکار بروقت کچرا اٹھاتے اور ٹھکانے لگاتے تھے۔شہر میں
مزید پڑھیے


امیداور امکانات کی روشنی

اتوار 17 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
آپ اس کالم کو پڑھیں گے تو میری طرح ضرور سوچنے لگیں گے کہ آپ کو ثاقب اظہر کے بارے میں پہلے کیوں خبر نہ ہوئی۔ میں اس کی کامیابیوں کی وسعت اور خوابوں کی اڑان سے شدید متاثر‘ اس وقت یہی سوچ رہی ہوں۔ وہ خواب سے تعبیر کے سفر کا ایک روشن جگمگاتا ہوا نام ہے لیکن کبھی وہ بھی ایک ایسا دیا تھا جو اپنی لو کو برقرار رکھنے کی تگ و دو میں مصروف رہتا مگر آج وہ امکانات اور امید کی روشنی بانٹ رہا ہے۔ اس کے کارناموں کی فہرست طویل ہے۔ کالم کی تنگ دامانی کے
مزید پڑھیے


امریکیو!دیکھ لو ہمارے حوصلے

جمعه 15 جنوری 2021ء
سعدیہ قریشی
6جنوری 2021ء کی سہ پہر‘ امریکہ کے پرامن دارالحکومت ‘ واشنگٹن ڈی سی میں ٹرمپ کے بپھرے ہوئے حامیوں نے کیپیٹل ہل پر دھاوا بول کر جو ہنگامہ برپا کیا‘ اس سے امریکی ابھی تک شاک کی کیفیت میں ہیں۔ کیونکہ انہیں سیاسی احتجاج کے ایسے پرتشدد منظر دیکھنے کی قطعی عادت نہیں تھی۔ دوسری بات یہ کہ امریکیوں کے لاشعور میں یہ بات پختہ تھی کہ جو ہنگامہ آرائیاں‘ تشدد اور بدامنی کے منظر وہ آس پاس کے ملکوں میں دیکھتے ہیں وہ امریکہ میں کبھی نہیں ہو سکتے۔ ٹرمپ اور ٹرمپ کے حامیوں کے علاوہ سرکاری انتظامی اہلکاروں سے لے
مزید پڑھیے








اہم خبریں