سعدیہ قریشی



شام صاحب


صحافت میں آنے سے بہت پہلے شام صاحب سے میرا پہلا تعارف ان کی ایک دل پذیر نظم’’بیٹیاں پھول ہیں‘‘ کے ذریعے ہوا۔ میں اس وقت کالج کی طالبہ تھی اور یہ نظم میں غالباً ایک ڈائجسٹ میں پڑھی تھی جو مجھے بہت اچھی لگی تو اپنی ڈائری میں نوٹ کر لی۔ پھر چند برسوں کے بعد میں ان سے ایک پینل انٹرویو میں ملی۔ میرا نوکری کے لئے زندگی کا پہلا انٹرویو تھا(الحمد اللہ یہی انٹرویو آخری بھی ثابت ہوا کہ اس کے بعد انٹرویو دینے کی ضرورت ہی نہیں پڑی) ایک بڑے اخبار کے ایڈیٹرز کا پینل تھااور محمود شام
اتوار 04  اگست 2019ء

سستی روٹی کا مذاق!

جمعه 02  اگست 2019ء
سعدیہ قریشی
پٹرول‘ ڈیزل‘ گیس‘ مٹی کے تیل کی قیمتوں پر قیمتیں بڑھا کر غریب کے لئے روٹی سستا کرنے کا اعلان کچھ اس قسم کی متضاد صورت حال سے مطابقت رکھتا ہے: شمار اس کی سخاوت کا کیا کریں کہ وہ شخص چراغ بانٹتا پھرتا ہے چھین کر آنکھیں اور کمال تو یہ ہوا ایک روز پہلے اخبارات کی ہیڈ لائن تھی کہ وزیر اعظم نے روٹی کی پرانی قیمتیں بحال کرنے کا حکم دے دیا۔ خوشی سے مر نہ جانے کی کیفیت تو یہ بھی کچھ ایسی نہیں تھی کہ غریب صرف روٹی ہی تو نہیں کھاتا۔ روٹی کے ساتھ اس نے کوئی
مزید پڑھیے


ذرا سی بات

بدھ 31 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
نقشِ خیال والے عرفان صدیقی، دل پذیر نثر لکھنے والے کالم نگار، عرفان صدیقی اپنے مداح قارئین کے لیے کئی زمانوں سے لاپتہ تھے کہ اچانک بروز ہفتہ 28جولائی ایک ناخوشگوار انتہائی افسوسناک واقعے نے انہیں ٹاک آف دی ٹائون بنا دیا۔ اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں بزرگ صحافی اور استاد…عرفان صدیقی کو ہتھکڑی لگا کر پیش کیا گیا۔ اس واقعے کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ وہ بھی ان کے حق میں بولے جنہیں ان سے نظریاتی اختلاف تھا اور ہے۔ 27جولائی جمعہ رات گیارہ بجے انہیں اُس جرم میں گرفتار کیا گیا جس سے ان کا
مزید پڑھیے


خسارے کا سفر

اتوار 28 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
دولت کی ہولناک ہوس کا انجام سب کے لئے بھیانک تھا۔ کوئی قتل ہوا‘ کسی نے خودکشی کر لی‘ کوئی موت مانگ رہا ہے۔کوئی بدنامی سے منہ چھپا رہا ہے۔ تو کوئی اپنے کروڑوں ڈوب جانے کے غم میں ادھ موا ہو چکا ہے۔ اس کہانی کا ایک اور کردار جو قتل کے واقعے کا عینی شاہد تھا‘ موت اور حیات کی کش مکش میں رہنے کے بعد چل بسا۔ خودکشی کرنے والا عاطف زمان کا ڈرائیور تھا اور اس کے کئی کاموں کا راز دار بھی تھا۔ حرص و ہوس کی اس ہوشربا داستان کا جو پہلا کردار ہمارے سامنے آیا
مزید پڑھیے


’’اک یہی بات ہے اچھی میرے ہر جائی کی‘‘

جمعه 26 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
ہمارے ہینڈسم سیلبرٹی وزیر اعظم انکل سام کے دیس میں اپنی کرز میٹک شخصیت کا جھنڈا گاڑ کر واپس وطن عزیز آ چکے ہیں۔ وطن عزیز وہی سدا کا مسائلستان ہے۔ مہنگائی‘ غربت‘ اور شدید قسم کی غربت۔بے روزگاری کے مسائل جوں کے توں ہیں لیکن چھوڑیے ان مسائل کو۔ اصل بات تو یہ ہے کہ ہم نے سپر پاور کے دیس میں جا کر بھی ہزاروں افراد سے کھچا کھچ بھرے ہال میں ایک کامیاب جلسہ کر لیا۔ یہ کارنامہ یقینا ہمارے کپتان ہی کا ہے کہ ایسا عوامی جلسہ واشنگٹن ڈی سی کے ایرینا ون ہال میں کیا کہ
مزید پڑھیے




پہاڑ اور گلہری

بدھ 24 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا دورہ امریکہ خبروں میں ہے۔ ویسے تو ہمارے ہاں بائی ڈیفالٹ ہی ہر حکمران کا دورۂ امریکہ انتہائی کامیاب ہوتا ہے جس میں باہمی دلچسپی کے امور پر دونوں طرف کے حکمران انتہائی دوستانہ ماحول میں گفتگو فرماتے ہیں۔ سو بائی ڈیفالٹ عمران خان کا دورہ امریکہ بھی کامیاب رہا ہے کیونکہ ہمارے حکمرانوں نے کبھی کوئی ناکام دورہ کیا نہیں۔ پاکستان میں جب بھی کوئی نیا سربراہِ حکومت آتا ہے تو اس کے جن تین چار ممالک کے سرکاری دورے کرنا اہم ہوتا ہے ان میں چین، روس، ایران اور امریکہ شامل ہیں اور
مزید پڑھیے


یہ صورت گر کچھ خوابوں کے

اتوار 21 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
اس کتاب کو پہلی بار میں نے چیدہ چیدہ پڑھا تو بھی لطف اٹھایا۔ مگر جب دوسری بار اس کو پڑھا تو گویا اس کے ساتھ اپنے اوقات بسر کئے۔ کبھی چائے کا گھونٹ گھونٹ پیتے ہوئے۔ ممتاز مفتی سے مکالمہ کیا۔ کبھی عصمت چغتائی کی بے لاگ‘ کھلی ڈلی اور بے باک پٹاخہ دار باتیں سنی اور لطف اندوز ہوئی۔ کبھی خالدہ حسین سے ملنے ان کے کالج چلی گئی۔ ان کی سلجھی اور قدرے الجھی ہوئی شخصیت سے ملاقات کی اور ان کی ادبی زندگی میں آنے والی تیرہ برس کی طویل خاموشی کے راز کو جاننے کی
مزید پڑھیے


صرف نمبروں کے حصول کی ہیجان خیز دوڑ

جمعه 19 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
15جولائی کو میٹرک کا نتیجہ آیا۔ ہمارے طالب علموں نے تھوک کے حساب سے نمبر لئے کل گیارہ سو نمبروں میں سے اول پوزیشن حاصل کرنے والے طالب علم نے 1092نمبر لئے یعنی کل نمبروں میں سے صرف آٹھ نمبر کم تھے۔ اتفاق ہے کہ اس بار ہمارے تین قریبی عزیز بچوں نے لاہور بورڈ سے میٹرک کیا دو بچیاں تو ان میں سے پوزیشن حاصل کرنے کی امیدوار تھیں۔ ایک پر توقعات کا بوجھ اس لئے زیادہ تھا کہ گزشتہ برس نویں جماعت میں اس بچی نے لاہور بورڈ میں ٹاپ کیا تھا۔ جس تعلیمی ادارے کی وہ طالبہ
مزید پڑھیے


پردہ نشینوں کے نام اور کھڑکی توڑ ویڈیوز کا دور

بدھ 17 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
ستیاناس ہو ان موٹے کیمرے والے موبائل فونوں کا، کہ اب کچھ بھی نجی، خلوت زدہ اور آپس کا معاملہ نہیں رہا۔ اسی لیے، اب بڑی سہولت سے پردہ نشینوں کے نام منظر عام پر آ جاتے ہیں اور صرف نام ہی نہیں بلکہ ان کے کام بھی اپنی پوری حسن کارکردگی کے ساتھ یوں جلوہ گر ہوتے ہیں کہ عوام الناس بے چارے سوچتے رہے جاتے ہیں تو وہی ہے یا کوئی اور ہے…!! قاسمی صاحب نے کیا اچھا کہا تھا کہ ندیم جو بھی ملاقات تھی ادھوری تھی کہ ایک چہرے کے پیچھے ہزار چہرے تھے سو، اپنے معزز پردہ نشین کا
مزید پڑھیے


مثبت سوچ۔حیران کن طاقت

اتوار 14 جولائی 2019ء
سعدیہ قریشی
انسان کی سوچ اس کی زندگی پر حکمرانی کرتی ہے۔ اس ایک خیال پر مائنڈ پاور کی ساری سائنس کی بنیاد ہے۔ مائنڈ پاور کے ماہرین کا کہنا ہے کہ انسانی ذہن جو کچھ سوچتا ہے یا پھر جو مسلسل سوچ اس کے ذہن میں پیدا ہوتی ہے وہی تصویر اس کی زندگی میں بنتی چلی جاتی ہے۔ اگر ہم اپنی زندگی میں خوب صورتی اور میسر نعمتوں کو سوچتے ہیں تو اس عینک سے ہم اپنی زندگی کو خوب صورت دیکھنے لگتے ہیں۔ ہمیں قدرت کی طرف سے عنایت کردہ نعمتوں کا بھر پور ادراک ہونے لگتاہے۔ ایسے میں ہمارے
مزید پڑھیے